مقبول خبریں
چوہدری مطلوب کی رہائشگاہ پر جشن عیدمیلادالنبیؐ کی محفل ،نوجوانوں کی بڑی تعداد میں شرکت
پاکستان اور بھارت کے درمیان سب سے بڑا مسئلہ کشمیر کا حل ہے: چوہدری فواد حسین
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
نواز علی کی رہائش گاہ پرحضرت غوث اعظم شیخ عبد القادر جیلانیؒ کے سالانہ عرس پرمحفل کا انعقاد
مرغی آنڈے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
تحریک حق خود ارادیت یورپ شعبہ خواتین اور مقامی چیرٹی کے زیر اہتمام تقریب کا اہتمام
بریڈ فورڈ:بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کے دورہ برطانیہ کے دوران پر زوراحتجاج کیلئے برطانیہ بھر کے کشمیری و پاکستانی سیاسی،سماجی اور مذہبی تنظیموں کی طرح خواتین کی تنظیمیں اپنی سر گرمیوں کے ساتھ ساتھ13نومبر کے تاریخی مظاہرے کیلئے بھی سرگرم عمل ہیں جبکہ برٹش کشمیری تنظیموں کے عہدیداران شہر شہر جا کر اپنی کمیونٹی کے علاوہ برطانوی سیاستدانوں اور یورپی سیاستدانوں کو مسئلہ کشمیر حل نہ ہونے کی صورت میں برطانیہ اور برصغیر کے دونوں ایٹمی ملکوں کے عوام پر کیا اثرات مرتب ہونگے بلکہ مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیوں اور عورتوں و نوجوانوں پر زیادتیوں پر مغربی ممالک کی خاموشی پر بھی احتجاج کر رہے ہیں،سیاسی قیادت لندن ویمبلے سٹیڈیم میں زیادہ سے زیادہ عوام کو جمع کر کے بھارتی وزیر اعظم کو باور کرانا چاہتی ہے کہ وہ نہ صرف مقبوضہ کشمیر میں نا پسندیدہ شخصیت ہیں بلکہ انکے دورہ پر بھی برطانوی عوام کو سخت اعتراض ہے،اسی سلسلے میں یارکشائر کے سیاسی مرکز بریڈ فورڈ میں برٹش کشمیری وومن فورم،تحریک حق خود ارادیت یورپ شعبہ خواتین اور مقامی چیرٹی I-Rahکے زیر اہتمام یوم شہدائے جموں کے موقع پر ایک خصوصی تقریب کا اہتمام کیا گیا جس میں جہاں آزاد کشمیر،پاکستان اور مقبوضہ کشمیر میں بچوں کی فلاح و بہبود کیلئے ایک ہی چیرٹی کا آغاز کیا گیا وہاں برطانوی پارلیمنٹ کے ارکان بیرسٹر عمران حسین،ناز شاہ،پھرلا شیرف،وزیر اعظم آزاد کشمیر کے مشیر سردار عبدالرحمان خان،تحریک حق خود ارادیت یورپ کے چیئرمین راجہ نجابت حسین،سابق پارلیمانی امیدواران عطرت علی،محمد بوٹا،سابق لارڈ میئر بریڈ فورڈ کونسلر خادم حسین،سابق لارڈ میئر غضنفر خالق،ڈپٹی لارڈ میئر کونسلر عابد حسین،سابق کونسل لیڈر ایشن گرین وڈ،کیبنٹ ممبر کونسلر رالف بیری،کونسلر محمد شفیق،کونسلر کنیز اختر،کونسلر نصرت محمد،کونسلر رضوانہ جمیل،میئر آف کیتھلے،کونسلر جاوید اختر،کونسلر ناظم اعظم،بیرسٹر ابرار حسین،مانچسٹر سے سابق کنزرویٹو پارلیمانی امیدوار محمد افضل کے علاوہ دو سو سے زائد سیاسی سماجی اور تحریکی رہنمائوں نے شرکت کی جبکہ آرگنائزر میں صبیحہ خان،پیپلز پارٹی کے سابق صدر آصف راٹھور،حاجی ظفر اقبال جماعتی ،نویدہ خان،یاسمین خان،عمران صفدر اور تحریک انصاف کے رہنمائوں شرجیل ملک،آصف خان،ڈاکٹر عامر سہیل،عائشہ خان،جبین طاہر،فرزانہ افضل،چوہدری عبدالغفار،اشتیاق احمد،زرقا احمد،اشتیاق راجہ،ابرار احمد،الماس گوہر سمیت چوہدری خالد محمود اور محمد اعظم کوٹھی نے بھی نریندر مودی کے دورے پر ہر طرح کے احتجاج میں معاونت کی یقین دہانی کراتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کے عوام کے ساتھ مکمل یکجہتی کا اعلان کیا اور شہدائے جموں کو بھی شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا گیا اسی سلسلے میں جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کا ایک خصوصی اجلاس مقامی ریسٹورنٹ میں بھی ہوا جس میں ممبریورپی پارلیمنٹ امجد بشیر نے خصوصی طور پر شرکت کی جو حال ہی میں اقوام متحدہ کا دورہ کر کے واپس لوٹے ہیں اور انہوں نے اقرام متحدہ کے سیکرٹری جنرل بانکی مون سے بھی مسئلہ کے حل اور اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عملدرآمد کروانے کا مطالبہ کیا ہے،اس اجلاس کی صدارت تحریک کے مرکزی چیئرمین راجہ نجابت حسین نے کی جبکہ بریڈ فورڈ ایسٹ کے ممبر پارلیمنٹ بیرسٹر عمران حسین،وزیر اعظم آزاد کشمیر کے مشیر سردار عبدالرحمان خان،سابق پارلیمانی امیدوار محمد بوٹا،سابق لارڈ میئر محمد عجیبCBEبرٹش مسلم وومن فورم کی چیئر پرسن صبیحہ خان،تحریک کی خاتون رہنما کونسلر کنیز اختر،تحریک کشمیر برطانیہ کے نائب صدر حافظ محمد آزاد،تحریک ناموس رسالتؐ کے رہنمائوں ملک رحمت اعوان،حاجی محبوب حسین کے علاوہ دیگر رہنمائوں نے شہدائے جموں کو خراج عقیدت پیش کیا اور بھارتی مظالم کی پر زور الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے برطانوی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی سے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کروائیں جبکہ مسئلہ کشمیر کو وہاں کے عوام کی مرضی اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کریں،کشمیری رہنمائوں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ مقبوضہ کشمیر کی لیڈر شپ کی مسلسل گرفتاریوں اور نظر بندیوں کے خلاف بھارتی وزیر اعظم کے دورہ برطانیہ پر13نومبر کو ویمبلے میں ہزاروں کی تعداد میں اکٹھے ہو کر بھرپور احتجاج کریں اور بھارتی وزیر اعظم کے دورہ برطانیہ پر پر زور احتجاج کریں گے،اس موقع پر برطانوی پارلیمنٹ میں آل پارٹیز کشمیرگروپ کے وائس چیئرمین اور انٹر نیشنل ڈویلپمنٹ کے شیڈو پارلیمانی سیکرٹری بیرسٹر عمران حسین نے اپنے تفصیلی خطاب میں کیا کہ وہ جب سے پارلیمنٹ میں گئے ہیں انہوں نے جہاں کشمیر گروپ کو مزید متحرک کرنے میں خصوصی کردار ادا کیا ہے اور اب کشمیر گروپ اگلے پیریڈ کیلئے ایک واضع لائحہ عمل کے تحت کام کر رہا ہے،ہم نے جہاں برطانوی حکومت سے کشمیر کے حوالے سے سوالات اور خط و خطابت کا سلسلہ شروع کیا ہے وہاں پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں کے ارکان مفصل بحث کے علاوہ پارلیمنٹ میںEDMبھی باٹلے اور سپین کی ممبر پارلیمنٹ جو کاکس نے پیش کی ہے اب کشمیری عوام اور کشمیری تنظیموں پر منحصر ہے کہ وہ اپنے اپنے ممبران سے پارلیمنٹ میں رابطے کر کے انہیں کشمیری سوالات اور قراردادوں پر دستخط کیلئے رابطہ کریں اور اپنے اندر بھی اتحاد و یکجہتی کا مظاہرہ کریں،انہوں نے اس موقع پر کہا کہ بریڈ فورڈ سے جس انداز میں لوگ13نومبر کے مظاہرے میں جائیں گے وہ انہیں ویمبلے سٹیڈیم میں استقبال کریں گے،اس موقع پر انہوں نے مقبوضہ کشمیر کے عوام اور لیڈر شپ کو یقین دلایا کہ وہ برطانوی پارلیمنٹ میں انکا کیس ہر وقت پیش کرتے رہیں گے،یورپی پارلیمنٹ میں کنزر ویٹو پارٹی کے یارکشائر سے ممبر اور فارن و انسانی حقوق کمیٹی کے ممبر امجد بشیر نے کہا کہ وہ عرصہ دراز سے کشمیری عوام کے ساتھ مل کر مسئلہ کشمیر اور کشمیریوں کے حق خود ارادیت کے حامی ہیں اور آج وہ یورپی یونین کے ایک اہم ممبر پارلیمنٹ کی حیثیت سے جہاں بھی جاتے ہیں ہر حوالے سے کشمیریوں کا کیس پیش کرتے ہیں اور انہوں نے اقوام متحدہ کے دورے میں واحد برٹش ممبر پارلیمنٹ کی حیثیت سے نہ صرف کشمیریوں کی نمائندگی کی بلکہ پورے برطانیہ کے نمائندے کی حیثیت سے ہر اجلاس میں بھرپور نمائندگی کی،انہوں نے برٹش کشمیریوں سے اپیل کی کہ وہ نریندر مودی کے خلاف مظاہرے میں شامل ہو کر اپنا جمہوری حق استعمال کریں جبکہ وہ برطانوی حکومت سے ملاقتوں میں بھی کشمیریوں کا مقدمہ پیش کرتے رہیں گے اور تحریکی رہنمائوں راجہ نجابت حسین اور انکی پوری ٹیم سے ہر سطح پر تعاون جاری رکھیں گے۔بیورو رپورٹ :فیاض بشیر