مقبول خبریں
عبدالباسط ملک کے والدحاجی محمد بشیر مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے دعائیہ تقریب
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
مودی جیسے انسانیت دشمن کے دورے سے انتہا پسندوں کی حوصلہ افزائی ہوگی: محمد غالب
برمنگھم: تحریک کشمیر یورپ کے صدر محمد غالب نے کہ بھارتی وزیراعظم کے دورہ برطانیہ کے موقع پرپر امن احتجاج میں بھر پور شرکت کر کے برطانوی حکومت کو بھی یہ پیغام دینا ہے کہ نریندر مودی جیسے انسانیت دشمن کو دعوت دے کر انتہا پسندوں کی حوصلہ افزائی کی جا رہی ہے اس سے ایسے عناصر کو تقویت ملے گی جو قانون کی پاسداری نہیں کرتے حکومت کے لیے اب بھی وقت ہے کہ مودی کے دورے پر نظر ثانی کرے اس سے بھارت میں آباد اقلیتوں اور نیچلی ذات کے ہندوں کا قتل عام بند کرانے میں مدد ملے گی۔ اینٹی مودی کمپین کے حوالے سے منعقدہ ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوے انہوں نے کہا کہ مودی کی آمد کے خلاف جس طرح پورے ملک میں مہم شروع ہے ہر طبقہ فکر انسانی حقوق اور آزادی پسند عوام احتجاج میں شرکت کا اعلان کر رہے ہیں اس سے حکومت کو مجبور کیا جا سکتا ہے وہ کمیونٹی کے جذبات کو مد نظر رکھتے ہوئے عوامی وسائل کو مودی کے دورے پرضائح نہ کرے۔ محمد غالب نے کہ مودی کے دورے سے پہلے ہی اس دوران بھارت میں جس طرح کے قتل عام کے واقعات رونما ہو رہے ہیں سکھوں کی کتاب کی بے حرمتیی کرکٹ بورڈ کے آفس پر انتہا پسند ہندووں کا حملے دومسلمانوں کا قتل اور ہریانہ میں نیچلی ذات کے دو ہندوں کو قتل کرنا یہ مودی حکومت کے انسانیت سوز مظالم دنیا کے لیے لمعہ فکریہ ہیں کہ مودی کو کس بھی ملک میں آنے کی اجازت نہ دی جائے۔ انہوں نے کہا کہ نریندر مودی کے پس منظر سے دنیا اچھی طرح واقف ہے ان پر یورپ اور امریکہ میں داخلے پر پابندیاں عائد تھی اب ان کا استقبال کرنا اور گلے لگانا ان کے ماضی کی حمائت کرنے کے مترادف ہے اور اس سے ان کے عزائم کو مزید تقویت ملے گی۔