مقبول خبریں
یوم عاشور کے حوالہ سے نگینہ جامع مسجد اولڈہم میں روح پرور،ایمان افروز محفل کا اہتمام
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
یورپ کے گھر گھر میں نبی کریم سےعشق ومحبت کے پیغام کو عام کریں گے: قاضی عبدالعزیز چشتی
لوٹن ... عالمی تاجدار ختم نبوت فاؤنڈیشن برطانیہ ویورپ کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ قاضی عبدالعزیز چشتی نے کہا کہ 7ستمبر پاکستان کی تاریخ کا ایک روشن اور تاریخ ساز دن ہے، اس دن اسلامی جمہوریہ پاکستان کی پارلیمنٹ نے ایک تاریخ ساز فیصلہ کرتے ہوئے عقیدہ ختم نبوت پر مکمل ایمان اور اس سے انکار کرنے والوں کا خارج از اسلام قرار دیکر قرآن وسنت کی بالا دستی کو برقرار رکھا، آج کا دن تحریک ختم نبوت میں بے مثال قربانیاں دینے والوں اور جام شہادت نوش کرنے والوں کی ارواح کوسلام عقیدت پیش کرنے کا دن ہے۔ قائد ملت اسلامیہ علامہ شاہ احمد نورانی صدیقی کی پیش کردہ قرار داد پر جن علمائے کرام اور اراکین پارلیمنٹ نے تائید وحمایت کی اور اس دور کے وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو شہید کے عظیم کارنامے جو ان کی بخشش ونجات ومغفرت کا یقیناً سبب بنے گا کو خراج تحسین پیش کرنے کا دن ہے، انہوں نے کہا کہ آج ہمیں تجدید عہد کرنا ہوگا کہ پوری ملت اسلامیہ کے اجتماعی عقیدہ ختم نبوت جو دین اسلام کی بنیادی اساس کے تحفظ اور تحفظ ناموس رسالت کے لئے اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرتے ہوئے یورپ کے گھر گھر میں نبی کریم سر کار مدینہﷺ سے عشق ومحبت کے پیغام کو عام کرتے ہوئے پہنچائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح مرکزی جماعت اہلسنت برطانیہ ویورپ گزشتہ 30تیس سالوں سے عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کے لئے سالانہ کانفرنسوں کے ذریعہ اس اہم مشن میں مصروف عمل ہے اسی طرح برطانیہ ویورپ میں کام کرنے والی تمام مذہبی ودینی جماعتوں علمائے کرام اور مشائخ کو بھی اجتماعی اور انفرادی طورپر اس راسخ عقیدہ کے لئے دنیامیں پھر کام کرنے کے لئے تجدید عہد کرتے ہوئے ایک منظم تحریک کے طور پر کام کرنا چاہیے وہ جامعہ اسلامیہ غوثیہ لوٹن میں 7ستمبر کے حوالے سے منعقد ہونے والے خصوصی سیمینار سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حضرت سید پیر مہر علی شاہ گولڑوی نے مجددانہ کردار ادا کرتے ہوئے 1900ء میں سینکڑوں علماء ومشائخ کی قیادت کرتے ہوئے ختم نبوت کے حوالے سے تحریک چلائی۔ دارالعلوم قادریہ جیلانیہ لندن میں پیر سید صابر حسین گیلانی اور علامہ پیر سید مظہر حسین گیلانی نے اپنے خطاب میں کہا کہ آج ہمیں عہد کرنا چاہئے کہ ہم زندگی بھر محبت رسول کی شمع کو جلائے رکھیں گے، علامہ پروفیسر سید احمد حسین ترمذی نے جامعة الزہراء میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حضرت امیر ملت پیر سید جماعت علی شاہ محدث علی پوری کی کرامت اور پیشگوئی سچ ثابت ہوئی اور منکرین ختم نبوت کے داعی اور اس کے کذب کا خاتمہ ہوا۔ ترجمان اہلسنت علامہ مولانا احمد نثار بیگ قادری نے کہا کہ حق کی اس صدا کو بلند کرنے میں علمائے کرام ، مشائخ عظام اور عاشقان رسول کیساتھ ساتھ ہمارے پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کا بھی ایک موثر کردار ہے۔ محقق اسلام استاد العلماء علامہ سید زاہد حسین رضوی نے مانچسٹر میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خداوند تعالیٰ کی پوری مخلوق میں کوئی بھی سید الانبیاء رحمت للعلمین خاتم النبیّن کی نظیر نہیں ہے، علامہ مولانا حافظ فضل احمد قادری خطیب اعظم ڈربی نے اپنے خطاب میں کہا کہ اس پرفتن دور میں کانفرنسوں، سیمینارز، مذاکروں کے ذریعے عقیدہ ختم نبوت اور تحفظ ناموس رسالت کے لئے نوجوان نسل کی رہنمائی کرنا ہوگی۔ ختم نبوت کی عالم گیر تحریک کو دنیا بھر میں پھیلانا وقت کی اہم ضرورت ہے علامہ سید صاحبزادہ انور حسین کاظمی نے بیڈ فورڈ میں کہا کہ جھوئے نبی حضور نبی کریم کے عہد مبارک کے آخری حصے میں ظاہر ہونے شروع ہوگئے تھے آقا کریم نے ان کی سخت مذمت کی اور خلیفہ اول حضرت ابو بکر صدیق نے صحابہ کرام کی مشاورت سے جہاد کے ذریعہ قلع قمع کیا۔ اس موقع پر علامہ محمدارشد جمیل ، علامہ مفتی علی اختر قادری، صاحبزادہ سید نور احمد شاہ، علامہ قاری محمد خان قادری، علامہ عبدالرحمن نقشبندی، مولانا قاضی عبدالرشید چشتی، علامہ حافظ خداداد قادری، علامہ قاضی عبدالرشید چشتی، مولانا قاری محمد سعید نقشبندی ،علامہ قاضی ظفر اقبال، مفتی مصطفی بیگ قادری،صاحبزادہ قاضی ضیاء المصطفی چشتی، صاحبزادہ علامہ فضل محمد ودیگر نے بھی خطاب کیا۔