مقبول خبریں
راچڈیل کیسلمئیرسنٹر میں کمیونٹی کو صحت مند رہنے،حفاظتی تدابیر بارے آگاہی ورکشاپ کا انعقاد
یورپی پارلیمنٹ میں قائم ’’فرینڈز آف کشمیر گروپ‘‘ کی تنظیم سازی کردی گئی
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پاکستان کے جوہری ہتھیارمحفوظ، سکیورٹی انتظامات پراعتماد ہیں: وزیر اعظم کو بریفنگ
اسلام آباد... جوہری ہتھیاروں کی حفاظت کی ذمہ دار نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول اتھارٹی نے وزیراعظم نواز شریف نے کی زیر صدارت اجلاس میں ایٹمی اثاثوں کی سکیورٹی کے انتظامات پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ اجلاس کا مقصد دنیا کو یہ باور کرانا تھا کہ پاکستان کے جوہری ہتھیار محفوظ ہیں اور اسلام آباد ایٹمی ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ کے اپنے مقصد کے حصول کے لیے کوشاں ہے۔ ملک کے جوہری ہتھیاروں کی کمان اور کنٹرول کی بنیادی ذمہ داری این سی اے کی ہے۔ پاکستانی جوہری تنصیبات کی سکیورٹی کے معاملات کی نگرانی بھی یہی اتھارٹی کرتی ہے۔ اجلاس کے بعد فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کی جانب سے جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا گیا کہ این سی اے کے اجلاس میں علاقائی سطح پر ہونے والی پیش رفت کا جائزہ لینے کے بعد اس موقف کا اعادہ کیا گیا کہ پاکستان ایک ذمہ دار جوہری طاقت کی حیثیت سے کسی دوسرے ملک کے ساتھ اسلحے کی دوڑ میں شامل ہونے کے بجائے اپنی کم سے کم دفاعی صلاحیت برقرار رکھنے کی پالیسی پر گامزن رہے گا۔ بیان کے مطابق پاکستان جنوبی ایشیا میں سلامتی کی بدلتی ہوئی صورتحال سے غافل نہیں رہ سکتا اور کسی بھی قسم کی بیرونی جارحیت سے نمٹنے کے لیے اپنی بھر پور دفاعی صلاحیت قائم رکھے گا۔ اس بیان کے مطابق این سی اے کے اجلاس میں بین الاقوامی سطح پر ہونے والی پیش رفت کو سامنے رکھتے ہوئے ان امتیازی رجحانات اور پالیسیوں کا بھی نوٹس لیا گیا، جن کے پاکستان کی قومی سلامتی اور جوہری عدم پھیلاؤ کی بین الاقوامی کوششوں پر سنجیدہ اثرات مرتب ہو سکتے ہیں۔ نیشنل کنٹرول اتھارٹی کا یہ اجلاس ذرائع ابلاغ میں سامنے آنے والے ان انکشافات کے پس منظر میں ہوا جن کے مطابق امریکا نے پاکستان کے جوہری پروگرام کی نگرانی مزید سخت کر دی ہے۔ یہ انکشافات امریکی ایجنسی این ایس اے کے سابق اہلکار ایڈورڈ سنوڈن کی جانب سے جاری کردہ دستاویزات کے ذریعے سامنے آئے تھے۔ امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ میں شائع ہونے والی ایک خبر میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ امریکی نیشنل انٹیلی جنس کے ڈائریکٹر جیمز کلیپر نے اس بات کی تصدیق سے انکار کیا ہے کہ پاکستان کے جوہری اثاثوں کی نگرانی کے لیے اقدامات کافی ہیں اور کہا ہے کہ یہ معاملہ عوام کے سامنے زیر بحث نہیں لایا جا سکتا۔