مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
آل کشمیر اولڈ سٹوڈینٹس کا سالانہ فنکشن، برطانیہ کے ہر شہر اور تمام شعبہ ہائے زندگی سے شرکت
سرے... دو دہایوں کی روایت کو قائم رکھتے ہوئے آل کشمیر اولڈ سٹوڈینٹس کا سالانہ فنکشن پاکستان سنٹر نوٹنگھم میں ہوا۔ جس میں ناٹنگھم، ڈربی، ہیلی فیکس، لیڈز، برمنگھم، ووکنگ برے اور برطانیہ کے دیگر شہروں سے ہر مکتبہ فکر جن میں ادیب، شعراء، دانشور سابق لارڈ میرز کونسلرز ڈاکٹر وکلاء بزنس کمیونٹی سے تعلق رکھنے والے لوگ پاکستان سے تشریف لائے ہوئے چوہدری محمد سلیمان ایڈووکیٹ سابق ممبر کشمیر کونسل اور چوہری محمد افضل سابق چیرٹی سماہنی نے بطور خاص شرکت کی اس پروگرام کی خاص بات یہ تھی کہ کمیونٹی کی خواتین کی بھی بھر پور نمائندگی تھی۔ تقریب کا باقاعدہ آغاز چوہدری مقصود کی تلاوت قرآن مجید سے ہونے کے بعد سٹیج سیکرٹری کے فرائض چوہدری مسعود نے ادا کئے تنظیم کے کنوینر راجہ محمد الیاس ایڈووکیٹ نے ایسوسی ایشن کے اغرا ض و مقاصد بیان کئے اور کہا کہ مقاصد کا تعلق بیرون ممالک بسنے والے لوگوں کے ایک ایسے سماجی مسلئے سے ہے جس کیلئے خواتین کا آپس میں مل بیٹھا انتہائی ضروری ہے اور وہ یہاں پروان چڑھنے والے بچوں کے لئے مناسب رشتوں کا معاملہ ہے اور اگر کمیونٹی کی پڑھی لکھی خواتین کیلئے آپس میں مل بیٹھنے کے مواقع نہ مہیا گئے تو یہ مسائل دن بدن گمبھیر صورت حال اختیار کرتے چلے جائیں گے۔ مہمان خصوصی چوہدری محمد سلیمان نے کہا کہ تعلیم کے میدان میں آپ لوگوں کے تعاون سے دس اضلاح کے مستحق بچوں کو وظائف دےئے جارہے ہیں۔ اس کے بعد محفل مشاعرہ کا آغاز ہوا جس میں راجہ ایوب، چوہدری مقصود، چوہدری محمد اشرف،عبدالخاق نو شاہی، چوہدری محمد اصغر علی اور اسلم چغتائی کے علاوہ خواتین کی نمائندگی رضیہ مقبول نے اپنے اشعار سے کی محفل مشاعرہ کی نشست اپنے اختیام کو پہنچی تو پھر محفل موسیقی کا دور شروع ہوا گلوکار اسلم چغتائی کا محفل کو مخلوظ کیا لوٹن سے تشریف لائے یو خالد مرزا نے اپنے ہی ایوارڈ یافتہ گانے سامعین کو سناکر داد وصول کی۔ لالہ قدیر نے صوفیاء کے عارفانہ کلام سے محفل کو آخر میں استاد نعیم سلبریا نے حضور نبی پاک کی شان میں ولی محمد ولی کے کہے ہوئے اشعار سے وجدانی کیفیت طاری کردی۔رات گئے یہ خوبصورت تقریب اپنے اختتام کو پہنچی۔