مقبول خبریں
بیرسٹر عابد ، چوہدری رفعت اور چوہدری منور کاچوہدری علی شان سونی کے اعزاز میں عشائیہ
صادق خان رسوائی کا باعث اور برطانیہ کے دارالحکومت لندن کو تباہ کررہے ہیں: ڈونلڈ ٹرمپ
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
سابق صدر پی ٹی آئی یارکشائر اینڈ ہمبر ریجن طاہر ایوب خواجہ کا اپنی رہائش گاہ پر محفل کا انعقاد
رنگ خوشبو سے جو ٹکرائیں تو منظر مہکے!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
لیبیا انٹیلی جنس کے سابق سربراہ کی بیٹی طرابلس میں سزا پوری کر کےجیل سے نکلتے ہی اغوا
لیبیا کی انٹیلی جنس کے سابق سربراہ محمد عبداللہ السینوسی کی بیٹی کو طرابلس میں جیل سے نکلتے ہی اغوا کر لیا گیا۔ وزیرِانصاف صالح المرغانین نے بتایا ہے کہ پیر کی صبح الریومی جیل سے پولیس انود السینوسی کو لیکر جا رہی تھی کہ اچانک کچھ مسلح افراد نے پولیس پر حملہ کیا۔ انہوں نے بتایا کہ مس السینوسی کولے جانے سے پہلے حملہ آوروں نے پولیس پر فائرنگ کی تھی۔ مس السینوسی کی سزا ختم ہو چکی تھی اور جس وقت یہ حملہ ہوا اس وقت انہیں پولیس کی حفاظت میں طرابلس ہوائی اڈے پہنچایا جا رھا تھا۔ وزیرِ انصاف نے مزید بتایا کہ چار گاڑیوں نے پولیس پر گھات لگا کر حملہ کیا اور زبردست فائرنگ شروع کر دی لیکن جلدی ہی یہ واضح ہو گیا کہ وہ مس السینوسی کو لیجانا چاہتے تھے۔ اس حملے میں کوئی زخمی نہیں ہوا۔ وزیرِ انصاف نے لوگوں سے مدد کی اپیل کی ہے اور خاص طور پر باغیوں سے اپیل کی ہے کہ وہ انہیں تلاش کرنے میں مدد کریں۔ مس السینوسی کو اکتوبر 2012 میں جعلی پاسپورٹ کے ساتھ لیبیا میں داخل ہونے کے جرم میں سزا سنائی گئی تھی۔ انہیں اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب وہ جیل میں اپنے والد عبداللہ السینوسی سے ملاقات کرنے آئی تھیں۔ ان کے والد معمر قذافی کے دور حکومت کے دوران ہونے والے جرائم کا حصہ بننے کے الزام میں قید ہیں۔