مقبول خبریں
کشمیر سالیڈیرٹی کیلئے یکم فروری سے 11فروری تک تقریبات منعقد کرائی جائیں گی
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
ہر سطح پر برما کے مظلوم مسلمانوں کے لئے آواز بلند کریں گے: ممبر آف پارلیمنٹ بیرسٹر عمران حسین
بریڈفورڈ: بریڈفورڈایسٹ کے ممبر آف پارلیمنٹ بیرسٹر عمران حسین روہنگیا مسلمانوں پر ہونے والے بدترین اور انسانیت سوز مظالم کے خلاف جدوجہد کرنے کا اعلان کردیا ہے اور اس سلسلے میں انہوں نے گزشتہ روزہائوس آف کامنز میں ارلی ڈی موشن بھی جمع کرادی ہے جس پر ان کے دیگر ساتھیوں کے دستخط بھی موجود ہیں۔ قبل ازیں روہننگیا کمیونٹی کے وفد نے عمران حسین سے ان کے دفتر میں ملاقات کی اور ارلی ڈے موشن جمع کرانے کے اعلان پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ اس موقع پر عمران حسین کا کہنا تھا کہ برطانوی حکومت برما کو سالانہ ساٹھ ملین پونڈ کی امداد فراہم کرتی ہے اور وہ اس ضمن میں یوکے سرکار سے پوچھنا چاہتے ہیں کہ برما میں ہونے والے مردم شماری میں روہنگیا مسلمانوں کا ذکر کیوں نہیں ہے۔ روہنگیا کے مسلمانوں کو تاریخ کے بدترین مظالم قرار دیتے ہوئے عمران حسین کا کہنا تھا کہ معصوم انسانوں پر ہونے والے ظلم و ستم اور نسل کشی کی داستان سن کر روح کانپ اٹھتی ہے۔ روہنگیا کے وفد کے و اپنے بھر پر تعاون کا یقین دلاتے ہوئے عمران حسین نے کہا کہ وہ ہر سطح پر برما کے مظلوم مسلمانوں کے لئے آواز بلند کریں گے۔ روہنگیا سروائیول ایسوسی ایشن یوکے کے رہنما نظام الدین محمد نے ممبر آف پارلیمنٹ کو سلائڈ شو کے ذریعے برمی مسلمانوں پر ہونے والے مظالم کی تاریخ بتاتے ہوئے کہا کہ اراکان کی ریاست میں ہماری اکثریت کو نسل کشی کے ذریعے اقلیت میں بدلا گیا۔ روہنگیا کے نوجوان سرکار کی اجازت کے بغیر شادی نہیں کرسکتے، شادی کے بعد صرف دو بچے پیدا کرنے کی اجازت ہے۔ اسکولوں میں ہمارے بچوں کا داخلہ منع ہے اور ہسپتالوں میں ہمیں علاج کی اجازت نہیں ہے وہاں اگر انتظامیہ معلوم ہوجائے کہ مریض روہنگیا ہے تو اسے وہاں علاج کے بجائے موت ملتی ہے۔ ہم نہ صرف شہروں میں محصور ہیں بلکہ ہمارے جانوروں کی موت کی صورت میں بھی جرمانہ ادا کرنا پڑتا ہے۔ وفد نے مظلوم اور دکھی انسانیت کے لئے آواز اٹھانے پر عمران حسین کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے ثابت کردیا ہے کہ وہ صحیح معنوں میں بریڈفورڈ اور مظلوم انسانوں کے ترجمان ہیں۔