مقبول خبریں
مسرت چوہدری اور اختر چوہدری کا لارڈ مئیر عابد چوہان کے اعزاز میں ظہرانہ
پاکستان پریس کلب یوکے کے سالانہ انتخابات اور تقریب حلف برداری
چیئرمین پی آئی ایچ آرچوہدری عبدالعزیز کوسوک ایوارڈ فار کمیونٹی سروسز سے نواز گیا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
اسرار احمد راجہ کی کتاب کی تقریب رونمائی ،مئیر آف لوٹن کونسلر طاہر ملک ودیگرافراد کی شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
ہر انسان کو اس کے مذہب کے مطابق تدفین کی اجازت ملنی چاہئے: سعیدہ وارثی و دیگر
Corona virus
پکچرگیلری
Advertisement
چوگام میں امام مسجد پر کالاقانون پبلک سیفٹی ایکٹ لاگو کرنے پر احتجاجی مظاہرے
سرینگر...مقبوضہ کشمیر میں قاضی گنڈ کے علاقے چوگام میں ایک امام مسجد پر کالاقانون پبلک سیفٹی ایکٹ لاگو کرنے کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرے کئے گئے..پولیس کی فائرنگ,آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہوگئے اطلاعات کے مطابق امام مسجدحافظ سید کفایت کو بھارتی پولیس نے کچھ عرصہ پہلے گرفتارکیا تھا۔ علاقے کے لوگوں کا کہنا ہے کہ امام مسجد بے گنا ہ ہیں اور انہیں بھارتی انتظامیہ کے آلہ کارسیاسی پارٹیوں سے منسلک کارکنوں کی ایما پرنشانہ بنایا گیا ہے۔مظاہرین انکی فوری رہائی کا مطالبہ کررہے تھے۔ دارالعلوم سید المرسلین سے منسلک حافظ عبدالرحمان اشرفی کا کہنا تھاکہ جس روزچوگام میں کشتواڑکے مسلم کش فسادات کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے گئے اس دن امام مسجدحافظ کفایت ڈورہ میں اپنے آبائی گاﺅںگئے ہوئے تھے اوران کا مظاہروں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ پولیس کے ترجمان نے میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے حافظ کفایت پر کشتواڑ میں فرقہ وارانہ فسادات کے بعد لوگو ں کو اکسانے کا الزام لگایا اورکہا کہ انہیں جموں کی کٹھوعہ جیل منتقل کیا گیا ہے۔ چوگام کے لوگوں نے خبردار کیا کہ اگر انتظامیہ نے امام کو فوری طور پر رہا نہ کیا تو وہ مزید مظاہرے کریں گے۔