مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
چوگام میں امام مسجد پر کالاقانون پبلک سیفٹی ایکٹ لاگو کرنے پر احتجاجی مظاہرے
سرینگر...مقبوضہ کشمیر میں قاضی گنڈ کے علاقے چوگام میں ایک امام مسجد پر کالاقانون پبلک سیفٹی ایکٹ لاگو کرنے کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرے کئے گئے..پولیس کی فائرنگ,آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج کے نتیجے میں متعدد افراد زخمی ہوگئے اطلاعات کے مطابق امام مسجدحافظ سید کفایت کو بھارتی پولیس نے کچھ عرصہ پہلے گرفتارکیا تھا۔ علاقے کے لوگوں کا کہنا ہے کہ امام مسجد بے گنا ہ ہیں اور انہیں بھارتی انتظامیہ کے آلہ کارسیاسی پارٹیوں سے منسلک کارکنوں کی ایما پرنشانہ بنایا گیا ہے۔مظاہرین انکی فوری رہائی کا مطالبہ کررہے تھے۔ دارالعلوم سید المرسلین سے منسلک حافظ عبدالرحمان اشرفی کا کہنا تھاکہ جس روزچوگام میں کشتواڑکے مسلم کش فسادات کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے گئے اس دن امام مسجدحافظ کفایت ڈورہ میں اپنے آبائی گاﺅںگئے ہوئے تھے اوران کا مظاہروں سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ پولیس کے ترجمان نے میڈیا سے باتیں کرتے ہوئے حافظ کفایت پر کشتواڑ میں فرقہ وارانہ فسادات کے بعد لوگو ں کو اکسانے کا الزام لگایا اورکہا کہ انہیں جموں کی کٹھوعہ جیل منتقل کیا گیا ہے۔ چوگام کے لوگوں نے خبردار کیا کہ اگر انتظامیہ نے امام کو فوری طور پر رہا نہ کیا تو وہ مزید مظاہرے کریں گے۔