مقبول خبریں
پاکستان پریس کلب برطانیہ یارکشائیر ریجن کا سہیل وڑائچ کے اعزاز میں استقبالیہ
پاکستان اور بھارت میں واقعی برابری کہاں ؟ ایک طرف محبت دوسری طرف نفرت
پاکستانی نژاد پیشہ ورانہ ماہرین اور طلبہ جہاں بھی ہوں اقدار کی پاسداری کریں: نفیس زکریا
برطانوی شاہی جوڑے کی پاکستان میں زبردست پذیرائی، وزیر اعظم اور صدر مملکت سے ملاقاتیں
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
حلقہ ِ ارباب ِ ذوق کے ادبی پروگرام میں پاکستانیوں اور کشمیری کونسلرز کی بڑی تعداد میں شرکت
پارک ویو کمیونٹی سنٹر شہیر واٹر میں ہمنوا یو کے کے زیرِ اہتمام یوم آزادی پاکستان تقریب کا انعقاد
قومی برطانوی انتخابات میں کشمیر دوست امیدواران کو ووٹ دینے بارے آگاہی میٹنگ
سہمے ہوئے لوگوںسے بھی خائف ہے زمانہ
پکچرگیلری
Advertisement
کشمیریوں کو آزادی حاصل کرنے میں کوئی رکاوٹ روک نہیں سکتی،چوہدری محمد افسرشاہد ایڈووکیٹ
برمنگھم:حکومت آزاد کشمیر کے وزیر اوقاف و مذہی امور چوہدری محمد افسرشاہد ایڈووکیٹ نے کہا کہ مسئلہ کشمیر آج پوری دنیا میں فلیش پوائنٹ بن چکا ہے اور طویل سفر کرنے کے بعد ہماری منزل بہت قریب ہے اور مقبوضہ کشمیر میں جس جرات اور بہادری کے ساتھ کشمیریوں نے سبز ہلالی پرچم کی توقیر کو سمجھتے ہوئے بلند کیا ہے دنیا میں ایک کلید اور واضع پہنچ چکا ہے کہ غلامی کی زنجیریں کٹ چکی ہیں اور کشمیریوں کو آزادی حاصل کرنے میں کوئی بھی رکاوٹ روک نہیں سکتی ان خیالات کا اظہار انہوں نے برمنگھم میں تحریک کشمیر برطانیہ کے صدر راجہ فہیم کیانی اور انکے ساتھیوں کی دعوت استقبالیہ سے مہمان خصوصی کی حیثیت سے کیا،وزیر حکومت آزاد کشمیر چوہدری محمد افسر شاہد ایڈووکیٹ نے کہا میری جوانی بچپن تحریک آزادی کشمیر میں گزرا ہمارے آبائو اجداد نے ایک نسل آزادی کی راہ میں قربان کر دی آج اس سفر میں ہمارے حوصلے اور ارادے بلند و بالا ہیں اور اس تحریک کو کامیاب ہونا ہے،انہوں نے کہا کہ آج مقبوضہ کشمیر میں ایک بڑے پیمانے پر اپ رائزنگ ہے اور اس موومنٹ کو بھارت کسی بھی طرح سے ختم نہیں کر سکتا ہے اور تحریک آزادی کشمیر اپنے آزادی حصول کیلئے ہر اس ایوان کو دستک دے گی جہاں سے انصاف ملے گا،انہوں نے کہا کہ آج امت اسلامیہ کو بھی ہمارا درد محسوس کرنا ہو گا اور مسلمانوں کو ایک دوسرے کے قریب آنے کی ضرورت ہے اور وقت کا تقاضا بھی یہی ہے کہ مسلم امہ کو اپنے مسائل ایک ہی ٹیبل پر حل کرنے ہوں گے،انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی بنیاد مسئلہ کشمیر پر رکھی گئی،انہوں نے کہا کہ جن ایوانوں میں مقبول بٹ اور دیگر آزادی پسند لوگوں کو دہشت گرد قرار دیا آج افضل گرو کی شہادت کو ہیرو قرار دیا،انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے ہم تمام متحد ہیں اور اس میں ہمیں کوئی کمزوری نہیں دکھانی،یوکے اسلامک مشن برطانیہ کے سینئر نائب صدر ضیاء الحق نے صدارتی خطبہ سے کہا کہ ہمیں مسئلہ کشمیر پر نوجوان نسل ایجوکیٹ کرنے کی ضرورت ہے کہ وہ حقائق سے روشناس ہو سکیں،میزبان یوکے اور اسلامک مشن برطانیہ کے صدر راجہ فہیم کیانی نے کہا کہ میڈیا مسئلہ کشمیر پر زیادہ سے زیادہ کوریج دے تاکہ مسئلہ کشمیر کی تحریک کو تقویت ملے،انہوں نے کہا کہ ملین مارچ لندن کی کامیابی کی ایک بڑی وجہ میڈیا بھی ہے جنہوں نے ملین مارچ کو بہترین طریقہ سے ہائی لائٹ کیا،انہوں نے کہا کہ پاکستان کے حکمرانوں کو ایک بات سمجھنی چاہئے کہ تکمیل پاکستان اور مضبوط پاکستان سے کشمیر کی آزادی وابسطہ ہے انہوں نے کہا کہ ٹماٹر ،گاجر اور مولی کی تجارت کرنے سے پاکستان مضبوط اور مستحکم نہیں ہو گا جب تک ایک واضع اور صحیح پالیسیاں مرتب نہ ہونگی ،انہوں نے کہا برطانیہ میں لیبر پارٹی کے منشور میں مسئلہ کشمیر موجود نہیں آج جس طرح سے کشمیری عوام نے کشمیر دوست ممبر پارلیمنٹ کو کامیاب کرنے میں مدد کی اور کامیابی سے ہمکنار کیا مسئلہ کشمیر اور کشمیری قوم کی آزادی کیلئے لیبر پارٹی اپنے منشور میں مسئلہ کشمیر کو اولین درجہ دے،کونسلر عنصر علی خان نے کہا ہم دنیا کہ اس خطے میں موجود ہیں جہاں سے بین الاقوامی مسئلے کو حل کرنا آسان ہے،انہوں نے کہا ہمارے پاکستان اور کشمیری ممبر آف پارلیمنٹ کو کشمیر کے دونوں اطراف ایک وفد کے ساتھ جانے کی کوششیں کرنی ہونگی اور اگر بھارت برطانوی ممبر آف پارلیمنٹ کو ویزہ سے انکاری کرے گا تو مسئلہ کشمیر میڈیا پر توجہ کا مرکز بنے گا،مولانا سرفراز مدنی نے کہا ہمارے کونسلرز اور ممبر آف پارلیمنٹ مسئلہ کشمیر پر زیادہ سے زیادہ آواز اپنے اپنے فورم پر اٹھائیں،ساجد یوسف نے کہا ہمیں دوسروں کی خامیوں کی بجائے اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرنا ہو گا،پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما وقار اسلم کیانی نے کہا کہ ہمیں فوٹو سیشن کے چکروں سے باہر نکلنے کی ضرورت ہے اور کسی بھی کاز کیلئے سنجیدہ ہونے کی ضرورت ہے،انہوں نے کہا حکومت پاکستان کی خاموشی مسئلہ کشمیر اور تحریک آزادی کیلئے بڑا نقصان ہے انہو ںنے کہا کہ آج میڈیا پر ڈنڈھورا پیٹا جا رہا ہے کہ پاکستان میں دہشت گردی کے پیچھے بھارتی ایجنسیاں ملوث ہیں لیکن پاکستان کی خاموشی ایک لمحہ فکریہ ہے ، انہوں نے کہا حکومت پاکستان کو اس پر کھل کر بات کرنی ہو گی اور واضع پالیسی مرتب کرنے کی ضرورت ہے،یوکے اسلامک مشن کے دیگر مقررین سے کشمیر رابطہ کمیٹی کے سابق صدر راجہ امجد خان،مڈ لینڈ کے صدر محمود حسین،انوار ایوب،کونسلر چوہدری اخلاق،مفتی عبدالمجید دیگر بھی شامل تھے۔