مقبول خبریں
پاکستان کا دورہ انتہائی کامیاب رہا ،ممبر برطانوی پارلیمنٹ ٹونی لائیڈ و دیگر کی پریس کانفرنس
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
امت مسلمہ کےتمام مسائل کاحل شریعت محمدی کی اطاعت میں ہے:مقررین مقام مصطفی کانفرنس
برمنگھم... امت مسلمہ کو باہمی نفاق بالائے طاق رکھ کر اتحاد اوربھائی چارے کی راہ فوری طور پر اپنانی ہو گی ورنہ ایک ایک کر کے اندرونی و بیرونی سا ز شوں کا شکار ہوتے اور صفحہ ہستی سے مٹتے رہیں گے انہوں نے کہا مسلمانوں کے مسلکی و فرقہ وارانہ اختلافات کے خاتمہ کا واحد راستہ ایک نقطہ پراجتماع ہے اور وہ نقطہ ارتکاز مقام محمّد مصطفے ہے ان خیالات کا اظہارشیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری مرکزی جماعت اہل سنت برطانیہ و یورپ کے زیر اہتمام مرکزی جامع مسجد بلگریو روڈ میں ہونے والی عالمی تاجدار ختم نبوت و تحفظ مقام مصطفی کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کیا تین گھنٹے سے زائد طویل عالمانہ اور فاضلانہ خطاب کو پورےمجمعے نے بڑے انہماک سے سنا انہوں نے مقام محمدی پر قران و حدیث کی روشنی میں مدلل گفتگو کرتے ہووے کہا کہ مقام مصطفے کا انکاری صاف صاف دائرۂ اسلام سے خارج ہے اور قبر میں بھی یہی سوال سب سے اہم ہو گا کہ اے بندے تم نے حضور اقدس کی ذات بارے کیا نظریہ اور رویہ اپنایا انہوں نے کہا کہ امت مسلمہ کو درپیش تمام تر مسائل کا واحد حل شریعت محمدی کی اطاعت میں ہی ہے ...کانفرنس سے مرکزی جماعت اہلسنت یوکے و یورپ کے سرپرست پیر عبدالقادر شاہ جیلانی نے پاکستان سے آن لائن خطاب کیا دیگر مقررین میں پر نقیب الرحمان، پیرعتیق الرحمان فیض پوری، علامہ احمد نثار بیگ قادری، قاضی عبدلعزیز چشتی، پروفیسر احمد حسن ترمزی، الشیخ محمّد افضل سعیدی، ابو احمد الشیرازی، صاحبزادہ احمد حسان نقیبی، ڈاکٹر نسیم احمد، پیر سید مظہر شاہ جللانی، مولانا بوستان القادری، صاحبزادہ ظہیر احمد نقشبندی، علامہ عبدل الطیف قادری، مولانا محمّد یعقوب چشتی، میئر والتھم فاریسٹ کونسلر ندیم علی شامل تھے مقررین نے ہاؤس آف کامنز لندن میں شام پر حملے کی قرارداد مسترد کرنے پر اراکین پارلیمنٹ کو سراہا ہے اور شام کے خلاف امریکی عزائم کی پر زور مذمت کی ہے۔ مرکزی جماعت کے رہنما علامہ احمد نثار بیگ نے کہا کہ امریکہ اس طرح پہلے عراق اور لیبیا پر جھوٹے اور غلط الزامات عائد کرکے دونوں ملکوں کو تباہ برباد کرچکا ہے اور عالمی برادری کو ملوث کرکے اپنے مذموم مقاصد پورے کرچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اب یہ ثابت ہوچکا ہے کہ عراق میں نہ تو کہیں ”ویپن آف ماس ڈسٹرکشن“ موجود تھے اور نہ ہی وہ استعمال ہوئے، اس کے باوجود امریکہ نے اتحادی فوجوں کو ساتھ لے کر عراق پر چڑھائی کردی اور آج دنیا کا تیل پیدا کرنے والا بڑا ملک بدترین اور تباہ کن حالات سے دوچار ہے۔ مرکزی جماعت کے سابق صدر علامہ سید احمد حسن ترمذی نے کہا کہ ہم سنی کانفرنس کے بڑے اجتماع میں مطالبہ کرتے ہیں کہ افغانستان عراق، لیبیا اور دیگر تمام عرب ممالک میں امریکی مداخلت بند کی جائے اور تمام اسلامی ملکوں میں دہشت گردی انتہا پسندی اور بے گناہ مسلمانوں کا قتل عام بند کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان ایک پرامن اور مل جل کر رہنے والی کمیونٹی ہے جو جیو اور جینے دو پر یقین رکھتی ہے۔ اس لئے مسلمانوں کے خلاف تمام منفی اور انتقامی کارروائیاں بند ہونی چاہئیں۔ مرکزی جماعت اہل سنت برطانیہ و یورپ کے صدر علامہ قاضی عبدالطیف قادری نے کانفرنس میں برطانیہ کی حکومت پر زور دیا کہ برطانوی حکومت ”احمدیوں“ کو مسلم کمیونٹی کا حصہ نہ سمجھے، بلکہ ”احمدیوں“ کو دیگر غیر مسلموں کے درجے میں رکھے۔ انہوں نے کہا کہ مملکت برطانیہ چونکہ مذہبی رواداری اور باہمی احترام پر یقین رکھنے والی ریاست ہے اس لئے ہماری مملکت برطانیہ کے ارباب اقتدار سے درخواست ہے کہ وہ منکرین ختم نبوت کو مسلمانوں سے الگ شناخت کرے اور انہیں مسلمانوں کے زمرے میں شریک نہ کریں۔ کانفرنس کے پہلے حصے میں برطانوی نوجوانوں کے لئے انگریزی میں تقاریر کی گئیں اور برطانوی مسلمانوں کو درپیش مسائل اور مشکلات پر روشنی ڈالی گئی اس موقع پر زاہد نواز راجہ نے تقریر کرتے ہوئے کہا کہ اتحاد امت آج مسلم امت کی سب سے بڑی ضرورت ہے اور خاص طور پر برطانیہ اور یورپ میں جہاں مسلمانوں کو بے شمار چیلنج اور مسائل درپیش ہیں یہاں مسلمانوں میں اتحاد اور یکجہتی بے حد ضروری ہے۔ کانفرنس کے پہلے اجلاس کی نظامت کے فرائض صاحبزادہ محمد رضا قادری نے انجام دیے۔