مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
درجن سےزائد کشمیری پارٹیوں ،ایسوسی ایشنزاور این جی اوز کا اختلافات ختم کرنے کافیصلہ
اولڈہم... ایک درجن سے زیادہ کشمیری پارٹیوں ،ایسوسی ایشنزاور این جی اوز نے کشمیر کی آزادی کیلئے مشترکہ کوششیں کرنے اوراپنے قول وعمل میں یکسانیت پیدا کرنے کیلئے فروعی اختلافات ختم کرنے کافیصلہ کیا ہے ،اس فیصلے کا اعلا ن جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ یوکے اور یورپ چیپٹر کے زیرا ہتمام آل پارٹی مشاورتی کانفرنس کے بعد کیاگیا،اپنی نوعیت کی یہ پہلی کانفرنس اولڈہم میں منعقد ہوئی جس میں صرف پارٹی کے سربراہان کو کشمیریوں کے اتحاد کیلئے تجاویز پیش کرنے کیلئے مدعو کیاگیاتھا، کشمیر کی آزادی کیلئے برطانیہ میں برسرعمل آزادی اور پاکستان کی حامی 26 پارٹیوں کے سربراہوں نے کانفرنس کے 5 گھنٹے جاری رہنے والے اجلاس میں شرکت کی سوائے ان پارٹی سربراہوں کے جن کے سربراہ کشمیری ہیں مختلف اہم کشمیر شخصیات اور مبصرین کانفرنس میں شریک تھے لیکن کسی عام آدمی یا صحافی کو کانفرنس میں مدعو نہیں کیاگیاتھا۔کانفرنس کے اختتام پر ایک 3 نکاتی ایجنڈے کی منظوری دی گئی جس میں اس بات پر اتفاق کیاگیا کہ تمام کشمیری تنظیمیں ایک سٹریٹجک اتحاد قائم کرنے کیلئے آئندہ بھی ملاقاتیں کرتی رہیں گی جس سے بھارت اور پاکستان پر مسئلہ کشمیر کے دیرپا اور پائیدار امن کیلئے کشمیری عوام کوحق خوداختیاری دینے کاوعدہ پورا کرنے بین الاقوامی سیاسی اور سفارتی دباؤ بڑھے گا۔ اعلامیئے کے پہلے نکتے میں کہاگیا ہے کہ ہم تمام تنظیمیں یہ تسلیم کرتے ہیں کہ برطانیہ میں کشمیریوں کا تحریک آزادی میں اہم کردار ہے اور ہم زیادہ موثر انداز میں بامعنی کردار ادا کرنے کے عزم کااظہار کرتے ہیں، اس مقصد کی تکمیل اور کشمیر کیلئے مہم کیلئے بامعنی سٹریٹجی وضح کرنے کیلئے تمام پارٹیاں اس بات پر اتفاق کرتی ہیں کہ جے کے ایل ایف اس طرح کا ایک اور اجلاس بلائے جس میں موجودہ دواتحادوں رابطہ کمیٹی اورانڈیپنڈنس الائنس کی رکن پارٹیوں اور 4 بڑی پارٹیوں جو فی الوقت کسی اتحاد کاحصہ نہیں ہیں، کو بھی مدعو کیاجائے تاکہ ایک یونائیٹڈ فورم کے قیام کے طریقہ کار پر مشترکہ طورپر کام کیاجاسکے اور اس سے قبل جے کے ایل ایف ان دونوں اتحادوں س ے ممکنہ مشاورت شروع کرسکے۔ اعلامیئے کے تیسرے نکتے میں کہاگیا ہے کہ کانفرنس کشمیریوں کے حقیقی نمائندوں کو حق خود اختیاری کے مساوی حیثیت کے فریق کی حیثیت شامل کئے بغیرکے بغیر پاکستان اور بھارت کے دوطرفہ مذاکرات کو مسترد کرتی ہے۔ کانفرنس میں جے کے ایل ایف کے علاوہ جموں وکشمیر پیپلز نیشنل پارٹی کے چیئرمین پروفیسر نذیر نازش، جموں وکشمیر لبریشن کانفرنس کے صدر محمود کشمیری، آزاد جموں وکشمیر مسلم کانفرنس کے صدر بشیر رٹوی، کشمیر فریڈم موومنٹ کے صدر غلام حسین، کشمیر سیلف ڈیٹرمینیشن موومنٹ کے صدر راجہ نجابت حسین، کشمیر لبریشن آرگنائزیشن کے صدر نجیب افسر، جموں وکشمیر نیشنل عوامی پارٹی کے صدر زاہد لون، یوکے پی این پی کے صدر عثمان کیانی، تحریک کشمیر کے صدر محمد غالب اورکشمیر یونائیٹڈ فرنٹ کے چیئرمین افضل طاہر شامل تھے دیگر تنظیموں کے سربراہوں میں اقوام متحدہ کے ساتھ مشاورتی حیثیت کی حامل معروف کشمیری این جی او جموں وکشمیر کونسل برائے حقوق انسانی، کے جنرل سیکریٹری ڈاکٹر نذیر گیلانی ، نیشنل آئیڈنٹیٹی کمپین کے سربراہ دلت علی، برٹش کشمیری فاؤنڈیشن کے صدر شہزاد اقبال ،کشمیری رائٹرز فورم کے سربراہ شفقت راجہ،کانفرنس میں مبصر کی حیثیت سے شرکت کرنیوالے دیگر کشمیری ادیبوں، دانشوروں اور سکالرز میں طاہر بوستان ایڈووکیٹ، پروفیسر نذیر تبسم، شمس رحمن، ڈاکٹر آفتاب حسین، ظفر تنویر، جبار بٹ، پروفیسر لیاقت علی خاں، نائب حسین مغل، سردار عبدالرحمن،اسلم مرزا، عبدالخالق ،حاجی عبدالحمید، پارلیمانی کشمیری گروپ کے سابق چیئرمین غلام نبی اورلارڈ نذیر احمد بھی کانفرنس میں شریک تھے ۔کانفرنس کی صدارت جے کے ایل ایف کے معروف رہنما پروفیسر ظفر خاں آف لوٹن جے کے ایل ایف یوکے اور یورپ کے جنرل سیکریٹری تحسین گیلانی نے مندوبین کاخیرمقدم کیا کانفرنس سے خطاب کرنے والے جے کے ایل ایف کے دیگر رہنماؤں میں اس کے نیشنل آرگنائزر صابر گل، صغیر احمد ،لائق علی ،جئے اقبال، اشفاق احمد امانت نذیر اور شبیر کشمیری شامل تھے کانفرنس کے انتظامات جے کے ایل ایف اولڈہیم ،مانچسٹر اور بریڈ فورڈ برانچز نے کئے تھے ۔کانفرنس کے اختتام پر ایک بیان میں جے کے ایل ایف کے صدر عظمت اے خاں نے کہا کہ بہت سے کشمیری رہنماؤں کی جانب سے ظاہر کئے جانے والے عزم اور حمایت سے ان کی حوصلہ افزائی ہوئی ہے اوروہ آزادی کشمیر کیلئے بین الاقوامی تحریک کو مستحکم کرنے اورتقویت پہنچانے کیلئے مختلف تنظیموں کے ساتھ مختلف آئیڈیاز پر کام کرنے کامنصوبہ بنارہے ہیں۔