مقبول خبریں
یوم عاشور کے حوالہ سے نگینہ جامع مسجد اولڈہم میں روح پرور،ایمان افروز محفل کا اہتمام
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
کشمیری و پاکستانی کمیونٹی کو اپنے حلقوں کے ممبران پارلیمنٹ پر اثر و رسوخ استعمال کرنا ہو گا: انتھیا میکنٹائر
برمنگھم:ممبر یورپین پارلیمنٹ اینتھیا میکن ٹائر اور پارلیمانی امیدوار پالمین قریشی نے کہا ہے کہ پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی اپنے ووٹوں کو سوچ سمجھ کر استعمال کر کے مسئلہ کشمیر کے علاوہ مستقبل میں آنے والے چیلنجز پر حمایت کرنے کا وعدہ کرنے والوں کو ہی ووٹ دیں، مسلمان کمیونٹی کا ووٹ فیصلہ کن ہے اس لئے اپنے مفاد کو ترجیحات میں شامل کروانے کیلئے ٹوری اور لیبر پارٹی میں اثر و رسوخ استعمال کریں،ان خیالات کا اظہار انہوں نے عمران ریسٹورنٹ برمنگھم میں الحاج محمد افضل بٹ کب جانب سے دیئے گئے استقبالیے کے موقع پر کیا،اس موقع پر راجہ نجابت حسین،صاحبزادہ محمد رفیق چشتی،عمران چوہدری،محمد اعظم،محمد سلیم، شمیم محمود،اطہر صدیقی،غزالہ احمد اور دیگر بھی موجود تھے،ٹوری کی یورپین ممبر آف پارلیمنٹ اینتھیا میکن ٹائر نے کہا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کے چارٹر پر نا مکمل ایجنڈا ہے جو سب سے پرانے اور انتہائی اہمیت کا حامل ہے،برطانیہ میں جاری الیکشن مہم کے دوران کشمیری و پاکستانی کمیونٹی کو اپنے اپنے حلقوں کے ممبران پارلیمنٹ پر اثر و رسوخ استعمال کرنا ہو گا اور ان سے مسئلہ کشمیر پر حمایت کرنے کا وعدہ لینا ہو گا تاکہ جو امیدوار بھی الیکشن جیت کر پارلیمنٹ میں جائے وہ ان کی بھرپور آواز بن سکے،یاسمین قریشی نے کہا کہ اس بار الیکشن کی صورتحال انتہائی مشکل اور کسی بھی جماعت کی کامیابی کی پیشن گوئی ممکن نہیں کیونکہ برطانیہ میں کثیر تعداد میں ووٹرز اپنے ووٹ کا فیصلہ نہیں کر سکے، اس موقع پر پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی کا رول انتہائی اہم اور فیصلہ کن ہو سکتا ہے،محمد افضل بٹ نے کہا کہ برطانیہ میں آنے والا دور مسلمان کمیونٹی کیلئے چیلنجز سے بھرپور ہے اس لئے کمیونٹی اپنا فیصلہ سوچ سمجھ کر کرے،صاحبزادہ محمد رفیق چشتی نے کہا کہ تحفظ ناموس رسالت کا قانون اور اس سلسلے میں ممبران پارلیمنٹ کی حمایت حاصل کرنے کا صحیح اور درست وقت ہے،عمران چوہدری نے کہا کہ مسلمان کمیونٹی دیگر کمیونٹیز کی طرح متحرک ہو کر الکیشن میں اپنا رول واضح طور پر سامنے لائے تاکہ سیاسی جماعتیں مستقبل میں حمایت کریں۔