مقبول خبریں
سیرت النبیؐ کے پیغام کو دنیا بھر میں پہنچانے کے لئے میڈیا کا کردار اہم ہے:پیر ابو احمد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
گلگت بلتستا ن ریاست جموں و کشمیر کا حصہ ہے اسے صوبہ بنانا بھارت کو خوش کرنے کی بات ہو گی: سردار عتیق
لوٹن ... آل جموں کشمیر مسلم کانفرنس کے صدر و سابق وزیراعظم آزاد کشمیر سردار عتیق احمد خان نے کہا ہے کہ گلگت بلتستا ن ریاست جموں و کشمیر کا حصہ ہے اسے صوبہ بنایا تو یہ بھارت کو خوش کرنے کی بات ہو گی آئینی طور پر گلگت بلتستان کو صوبہ نہیں بنایا جا سکتا۔ممبر کشمیر کونسل چوہدری محمد خان اورمسلم کانفرنس لوٹن برانچ کی جانب سے دیئے گے استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ کشمیریوں کے مستقبل کا فیصلہ کشمیری بہتر سکتے ہیں پاکستا ن کا کمزور ہونا گویا تحریک آزادی کشمیر کمزور ہونے کے مترادف ہے ۔جب تک مسئلہ کشمیر کا پائیدار حل نہیں ہو جاتا اس وقت تک بھارت کو سلامتی کونسل کا ممبر بنانا کشمیریوں سے زیادتی ہو گی بھارت کو سلامتی کونسل کا ممبر بنانے کو مسئلہ کشمیر سے مشروط کیا جائے۔ سردار عتیق احمد خان نے کہا ہے کہ برطانوی کشمیری پاکستانی اپنی تقاریب میں جہاں کشمیر اور پاکستان کے حوالے بینرز آویزاں کرتے ہیں۔ کشمیر اور پاکستان سے وابستگی کا اظہار کرتے ہیں جو کہ خوش آئند ہے مگر ساتھ ہی وہ برطانیہ تابندہ باد کے بینرز بھی لگایا کریں اور میزبان کمیونتی سے اپنی محبتوں کا اظہار کھل کر کیا کریں تاکہ انہیں اندازہ ہو کہ ہم مل جل کر رہنے اور برطانیہ سے محبت کرنے میں کتنے آگے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہاں برطانیہ میں الیکشن منعقد ہو رہے ہیں۔ دیکھا جائے کہ کشمیر کو کیسے امیدواروں کے ساتھ اٹھایا جائے اور اسے بین الاقوامی مسئلہ کے طور پر اٹھایا جائے۔ ہم کو متحد ہوکر مختلف مواقع کو استعمال کرکے کشمیر کے مسئلہ کو شدت سے پیش کرنا چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ برطانیہ میں بسنے والوں کو شخصی آ زادی حاصل ہے اور یہ دنیا کا مرکز سمجھا جاتا ہے یہاں بسنے والے کشمیری مسئلہ کشمیر کی خاطر متحد ومنظم ہو کر مظلوم کشمیریوں کی آذادی کیلئے جدوجہد کریں نیو یا رک ٹائمز بھی لکھتا ہے کہ بھارت اپنی ساتھ لاکھ فوج کے ہمراہ مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں پر ظلم ڈھا رہا ہے آج جدید دور ہے جسکا فائدہ اٹھاتے ہوئے ہمیں اس ایشو کو اجاگر کرنے کیلئے اپنا اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔انھوں نے کہا کہہ دنیا کے اندر صر مسلم ممالک کیلئے انصاف مہنگا ہو چکا ہے فلسطین،کشمیر،عراق اور شام کو کیوں برباری کی سطح پر نہیں رکھا جاتا اقوام متحدہ کا دوہرا معیار ہے ۔انھو ں نے جنرل پرویز مشرف کی کشمیر پالیسی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ میں آج بھی پرویز مشرف سے مفتق ہوں ان میں دیگر بہت ساری خرابیاں ہو سکتی ہیں مگر کشمیر ایشو کیلئے انکا نقطہ نظر ہماری سوچ کی عکاسی تھا۔اس موقع پر انھوں نے تقریب کا اہتمام کرنے پر لوٹن میں مقیم جماعت کے کارکنان بالخصوص شبیر حسین ملک،پروفیسر امتیاز چوہدری اور دیگر کی کاشوں کو سراہا۔سردار عتیق احمد خان نے مزید کہا کہ برطانیہ کے دونوں ایوانوں میں ہمارے کشمیری موجود ہیں اور لارڈ قربان حسین کی کشمیر کاز کیلئے جدوجہد قابل ستائش ہے ایسے لوگوں سے رابطے میں رہیں اور ان کی رہنما ئی میں اپنی جدوجہد تیز کی جائے۔ممبر کشمیر کونسل چوہدری محمد خان نے کہا کہ مسلم کانفرنس نے جتنا تحریک آز ا د ی کیلئے کام کیا ہے اسکا کریڈت بالخصوص مجاھد اول اور سردار عبدالقیوم کو جاتا ہے۔ہندوستان ایک ظلم و جابر ملک ہے جسے جمہوری کہلانے کا حق نہیں ہے اسے سلامتی کونسل کا ممبر بنانا کشمیریوں کے ساتھ نا انصافی ہوگی۔لارڈ قربان حسین نے کہا کہ میری کسی پاکستانی اور کشمیر ی سیاسی جماعت کے ساتھ وابستگی نہیں ہے تاہم مسلم کانفرنس کو پسند کرتا ہوں یہ ریاست کی نمائندہ جماعت ہے ۔یہ جماعت اب کمزور ہو سکتی ہے مگر آج بھی اس کی جڑیں عوام میں ہیں۔انھوں نے کہا کہ سردار عتیق احمد خان بڑے باپ کے بڑے بیٹھے ہیں جو بہت کچھ کرنے کی صلاحتیں رکھتے ہیں۔اور ان کے پاس ایک ویژن ہے ورنہ بعض ایسے کشمیری سیاسی لیڈر بھی یہاں مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے کیلئے وفد کے ہمراہ آتے ہیں جن کو انگریزی زبان تک نہیں آتی۔ لارڈبل میکنزی نے کہا کہ ہم نے ہمیشہ کشمیر کاز کو سپورٹ کیا ہے اور آئندہ بھی اس مسئلہ کے حل کیلئے اپنا کردار ادا کریں گے۔نذیر احمد شال نے کہاکہ بھارت مسلسل کشمیریوں پر ظلم و ستم کر رہا ہے گزشتہ دنوں ایک انیس سالہ نوجوان کو شہید کر دیا ایسی داستاں ہمیں روزانہ سننے کو ملتی ہیں۔مگر سکون کی نیند سونے والے آر کے آذاد کشمیر ی ان کی تکلیف کو شاید محسوس کر رہے ہیں۔انھوں نے کہا کہ ہم بھارت پر واضح کر دینا چاہتے ہیں کہ کشمیر کبھی بھی تمھاے غلام نہیں بنیں گے اور آذادی سے کم کسی چیز پر خاموش نہیں بیٹھیں گے۔انھوں نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ محبت کا ثبوت اور جذبہ آزادی کا اندازہ اس بات سے باخوبی لگایا جا سکتا ہے مقبوضہ کشمیر میں آج بھی پاکستان کا جھنڈا لہرایا جاتا ہے اور پاکستان زندہ باد اور کشمیر بنے گا پاکستان کا نعرہ لگتا ہے۔ضرورت اس بات کی ہے ان کی اس سوچ اور الفاظ کی شدت کو محسوس کیا جائے۔نذیر احمد قریشی نے کہا کہ باتوں سے صرف آزادی نہیں ملتی بلکہ عزم اور اچھے ارادوں سے حاصل کی جا سکتی ہے۔انکا کہناتھا کہ جب کشمیری رہنما،لیڈر یہاں آتے ہیں تو اس وقت مسئلہ کشمیر زندہ ہو جاتا ہے ورنہ زیادہ خاموش ہی رہتی ہے ہمیں ہر موڑ پر اس مسئلے کے حل کیلء جدوجہد کرنی ہے۔انھوں نے سید علی گیلانی اور دیگر حریت رہنماؤں کی نظر بندی کی مذمت کی۔کیلون ہوپکینز نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو ایک عرصہ سے جانتا ہوں اور کشمیریوں کے اسرار پر ہمیشہ اس ایشو کو ہاؤس آف کامنز میں اٹھایا ہے کشمیریوں کو جہاں ہماری ضرورت ہو ہم ان کا ساتھ دیں گے۔مسلم کانفرنس برطانیہ کے سابق جنرل سیکرٹری سابق میئر کونسلر ریاض بٹ نے سردار عتیق احمد خان کو لوٹن میں ویلکم کیا اور انکی قیادت پر اعتماد کا اظہار کیا۔ مسلم کانفرنس برطانیہ کے سابق جنرل سیکرٹری سابق میئر کونسلر ریاض بٹ نے سردار عتیق احمد خان کو لوٹن میں ویلکم کیا اور انکی قیادت پر اعتماد کا اظہار کیا۔تقریب میں نظامت کے فرائض صدر مسلم کانفرنس لوٹن برانچ پروفیسر امتیاز چوہدری نے انجام دیئے۔کونسلر نسیم ایوب،مسلم کانفرنس کے مرکزی رہنما ظفر معروف،مسلم کانفرنس لوٹن کے سابق صدر راجہ یعقوب خان اور دیگر نے بھی اظہار خیال کیا۔تقریب میں برطانیہ کے دیگت شہروں سے بڑی تعداد میں مسلم کانفرنس رہنماؤں،عہدران اور کارکنان نے شرکت جبکہ دیگر سیاسی جماعتوں کے زعماء بھی کثیر تعداد میں شریک ہوئے ۔