مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مختلف مواقع پرمسلم کمیونٹی کا احساس ذمہ داری وباہمی اتفاق قابل تحسین ہے: خالدمحمودایم پی
برمنگھم... پیری بار برمنگھم سے رکن برطانوی پارلیمنٹ خالد محمود نےکہا ہےکہ میں عیدا لفطر کے موقع پر چاند کے مسئلے پر مسلم کمیونٹی کا اتفاق رائے اور پھر برمنگھم میں ہونے والے ای ڈی ا یل کے مظاہرے کے موقع پر مسلم کمیونٹی کا احساس ذمہ داری وباہمی اتفاق قابل تحسین ہے ۔ انہوں نےمرکزی جماعت اہل سنت برطانیہ کے زیر اہتمام یکم ستمبر کو ہونے والی عالمی تاجدار ختم نبوت اور تحفظ مقام مصطفی کانفرنس کابھی خیر مقدم کیا اور مسلمانوں کے اتحاد واتفاق اور یکجہتی کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کانفرنس کے اغراض ومقاصد اور افادیت کی تعریف کی ہے۔انہوں نے کہا مجھے یہ جان کر خوشی ہوئی ہے کہ مرکزی جماعت اہلسنت برطانیہ کی کانفرنس برمنگھم شہر میں یورپ کی سب سے بڑی مرکزی جامع مسجد بلگریوروڈ میں منعقد ہورہی ہے جس میں برطانیہ بھر سے مسلمانوں کی بڑی تعداد شریک ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ آج دنیا بھر میں جہاں مسلمانوں کوہر سطح پر ہر ملک اور علاقے میں اتحاد اور باہمی ہم آہنگی کی ضرورت ہے وہاں خاص طورپر یورپ میں بسنے والے مسلمانوں کو بھی یورپ کے مخصوص اور مختلف حالات طرز زندگی اور سماجی وثقافتی پس منظر کی وجہ سے یہاں مسلمانوں کو زیادہ فعال اور منظم ہوکر آگے بڑھنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں نے ہمیشہ اس بات پر زور دیا ہے کہ برطانیہ میں مسلم کمیونٹی کو بہرصورت فرقہ پرستی اور فروغی اختلافات سے دور رہ کر کام کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہاس سلسلے میں برطانوی حکومت مسلم کمیونٹی کے اجتماعی مفادات، ضروریات اور مستقبل میں ہمیشہ کی طرح اب بھی معاون ثابت ہوگی۔