مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
آزادی اظہار کے حوالے سے برطانیہ نے جسطرح مسلمانوں کے جذبات کی قدر کی قابل تحسین ہے: لارڈ قربان
برمنگھم ... برطانیہ میں اگر اظہار رائے کی آزادی ہے تو لوگ اسے ذمہ داری سے استعمال کرنا بھی جانتے ہیں، فرانس ڈنمارک اور ہالینڈ یورپ ہی میں ہیں لیکن مذاہب کے احترام کے برعکس انہوں نے توہین رسالت کے اقدامات کر کے دنیا کے مہذب معاشروں میں خود کو متنازعہ بنالیا، لیکن برطانیہ نے انہیں اقدار کا احترام کرتے ہوئے اس سے قبل کسی سازش کا حصہ بنا اورنہ اس مرتبہ حکومت اور میڈیامیں سے کسی نے گستاخانہ خاکے دکھا کر مسلمانوں کی دل آزاری میں حصہ لیا۔ ان خیالات کا اظہار لارڈ قربان حسین نے بنات المسلمین کے زیراہتمام آزادی اظہار کے حوالے سے ہونے والے ایک پروگرام میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ لارڈ قربان حسین نے مزید کہا کہ دہشت گردی جہاں بھی ہوگی ہم انکی سخت مذمت کرتے ہیں۔ مگر اسکے ردعمل میں جس طرح فرانسیسی جریدے نے سرکار دو جہان ؐکی شان اقدس میں گستاخانہ خاکے چھاپ کر 1.5بلین مسلمانوں کی دل آزاری کی ہے یہ بھی دہشت گردی ہے۔ 8فروری کے تحفظ ناموس رسالتؐ مارچ کی حمایت کرتے ہیں۔ ڈپٹی پولیس کرائمز کمشنر کونسلر ایوان ماسکیٹو نے کہا کہ یہاں پر ہمیں ہر طرح کی آزادی ہے۔ برمنگھم میں مسلمان کمیونٹی نے پیار دیا۔ ایم ای پی انتھا میکنٹائر نے کہا کہ یورپین پارلیمنٹ میں، میں آپکی نمائندگی کرتی ہوں۔ مسلمان کمیونٹی کو فریڈم آف سپیچ پر تحفظات ہیں تو اسکے متعلق میں آواز بلند کروں گی۔ تقریب کا باقاعدہ آغاز تلاوت کلام پاک سے کیا گیا جس کی سعادت آمنہ خالد سلطانی نے حاصل کی ۔ پروگرام کی ترتیب انیلہ اسد نے بیان کی۔ مہمانوں کا تعارف اور استقبالی کلمات سکول بورڈ آف گورنر اور کونسلر محمد اخلاق نے اداکیے۔ بنات المسلمین کی فائزہ شاہد نے اپنی تنظیم کی نمائندگی کی۔بنات المسلمین کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شوکت نواز خان نے فریڈم آف سپیچ کے حوالے سے مہمانوں کو بریف کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ فرانس کے واقعے پر پوری امت مسلمہ کے دل زخمی زخمی ہیں۔ ایسی صورتحال میں فریڈم آف سپیچ کو کن معنوں میں لیا جائے۔ بنات المسلمین کی چیئرپرسن سمیرا فرخ نے تمام معزز مہمانوں کا شکریہ ادا کیا اور اپنے خطاب میں کہا کہ فریڈم آف سپیچ کیلئے حدود کا تعین ضروری ہے، تاکہ آئندہ کوئی فریڈم آف سپیچ کا غلط استعمال نہ کرے۔