مقبول خبریں
عبدالباسط ملک کے والدحاجی محمد بشیر مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے دعائیہ تقریب
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
کشمیری اگر رائے شماری میں بھارت کے خلاف فیصلہ دیں تو بھارت کبھی بھی قبول نہیں کریگا: ڈیوڈ وارڈ ایم پی
بریڈفورڈ ... بریڈ فورڈ ایسٹ سے کشمیر دوست رکن پارلیمنٹ ڈیوڈ وارڈ نے کہا ہے کہ مجھے یقین ہے کہ اگر کشمیری رائے شماری کے ذریعے بھارت کے خلاف فیصلہ دے دیں تو بھارت اسے کبھی بھی قبول نہیں کرے گا۔ ہم پارلیمنٹ اور باہر اس امر کا تقاضہ تو کرتے ہیں کہ کشمیریوں کو انسانی ہمدردی کی بنیاد پر انکا حق خود ارادی دیا جائے مگر اس حقیقت کو بھول جاتے ہیں کہ ایسا ہونے کی صورت میں بھی بھارت ایسے کسی بھی فیصلے کو نہیں مانے گا جو اسکے حق میں نہ ہو۔ وہ کشمیر یونائیڈ فورم کے زیراہتمام کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کی تقریب سے خطاب کررہے تھے جس میں پاکستان اور برطانیہ کی تقریباً تمام قابل ذکر سیاسی جماعتوں کے نمائندوں نے شرکت کی۔ ڈیوڈ وارڈ ایم پی نے کشمیریوں اور پاکستانیوں پر زور دیا کہ وہ اپنے اپنے رکن پارلیمنٹ کو خط لکھتے اور ای میل کرتے ہوئے اس امر پر اصرار کریں کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں بنیادی انسانی حقوق اور ان کی خلاف ورزیوں کے بارے میں پارلیمنٹ میں سوال اٹھائیں۔تقریب سے ان کے علاوہ بریڈ فورڈ کونسل کے ڈپٹی لیڈر اور بریڈ فورڈ ایسٹ سے لیبر پارٹی کے پارلیمانی امیدوار کونسلر عمران حسین اسی حلقہ سے کنزرویٹو پارٹی کے پارلیمانی امیدوار افتخار احمد پاک کشمیر یونائیڈ فورم کے چیئرمین آصف خان، سابق لارڈ میئر محمد عجیب، ناز شاہ، سردار طاہر، کرنل (ر) فہیم، خادم الحسن، گوہر الماس خان، پیپلز پارٹی کے رہنما سردار عبدالرحمن خان، فورم کے سیکرٹری شرجیل ملک اور محمد ادریس نے خطاب کیا جبکہ شیراز اختر نے نظامت کے فرائض ادا کیے۔ لیبر پارٹی کے پارلیمانی امیدوار اور کونسل کے ڈپٹی لیڈر کونسلر عمران حسین نے کشمیر کے سوال پر بڑی جذباتی تقریر کرتے ہوئے کہا کہ اس کے باوجود کہ میرا تعلق بھی ایک برطانوی سیاسی جماعت سے ہے ہمیں یہ تسلیم کرنا پڑے گا کہ برطانیہ کی تینوں بڑی سیاسی جماعتوں، لیبر، کنزرویٹو اور لبرل نے کشمیر کے مسئلہ پر ہمیں مایوس کیا ہے، بلکہ انہوں نے ہمیں ’’فیل‘‘ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مغربی دنیا کے دہرے معیار ہیں اور ان کی دوغلہ پالیسی کی ہی وجہ سے آج تک یہ اہم مسئلہ نظر انداز ہوتا آیا ہے۔ بریڈ فورڈ ایسٹ سے کنزرویٹو پارٹی کے امیدوار افتخار احمد کا کہنا تھا کہ کشمیر میں ہر روز میری ماں، بہن کی عصمت دری کرکے میری غیرت کا خون کیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ مسئلہ کبھی بھی سیاسی نہیں رہا، بلکہ یہ زندہ انسانوں کے حقوق اور ان کی زندگی اور موت کا مسئلہ ہے۔ سابق لارڈ میئر محمد عجب نے کہا کہ مسئلے سے نمٹنے کا ایک ہی حل ہے کہ ہم اپنے تمام تر اختلافات کو بالائے طاق رکھ کر آزادی کی جدوجہد کرنے والوں کی ہر ممکن اخلاقی مدد کریں۔ فورم کے چیئرمین آصف خان نے شرکا محفل کو یقین دلایا کہ ان کی تنظیم مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے اور اس سلسلے میں اپنے کشمیری بھائیوں کی مدد کرنے میں ہر ایک سے تعاون کرنے کو تیار ہے۔ مقررین نے اس امر پر حیرت کا اظہار کیا کہ فلسطین کے مسئلہ پر تو ہمارے پاکستانی اور کشمیری بچے بڑے سرگرم رہتے ہیں، لیکن مسئلہ کشمیر کے سلسلے میں ان میں فلسطین جیسا جوش و ولولہ نہیں پایا جاتا۔ مقررین کا کہنا تھا کہ شاید اس کی سب سے بڑی وجوہات میں یہ بھی ہو کہ فلسطین کی طرح عالمی میڈیا پر مسئلہ کشمیر کی تشہیر نہیں ہوتی۔ تقریب میں معروف شاعرہ غزل انصاری نے کشمیریوں کو ان کی جدوجہد پر منظوم خراج عقیدت پیش کیا، جبکہ حمیرہ میمن نے تاریخ کشمیر کے بارے میں حاضرین سے سوالات پوچھتے ہوئے انہیں نقد انعامات دیے۔