مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برمنگھم سٹی کونسل کے باہر بین المذاہب ریلی، سینکڑوں افراد کی بھرپورشرکت
برمنگھم: برمنگھم سٹی کونسل کے باہر بین المذاہب ریلی ہوئی جسمیں سینکڑوں افراد نے شرکت کی ۔ اس ریلی سے دنیا کو پیغام دیا گیا کہ ہمیں آپس میں مل جل کر کام کرنا ہے مسلمان کسی بھی طرح انتہا پسندی کی حمایت نہیں کرتے ، بین المذاہب ریلی میں تمام مذاہب کی نمائندگی موجود تھی مذہبی رہنمائوں نے اپنے اپنے مذہب کی نمائندگی کی اور پیغام امن دیا ، آغاز برمنگھم کے لارڈ میئر سید شفیق شاہ نے کہا کہ دنیا کے امن و امان کو قائم رکھنے کیلئے اتحاد و اتفاق کو برقرار رکھنا ہے اور انتہا پسندی کیخلاف کوئی بھی مذہب اجازت نہیں دیتا ۔ بین المذاہب (انٹرفیتھ ریلی ) سے تمام کمیونٹی کی تعداد سینکڑوں پر موجود تھی لیکن پاکستانی اور مسلمان کمیونٹی کی تعداد گنتی پر تھی ۔ اس سے معلوم ہوتا ہے کہ ہم موجود حالات میں زیادہ دلچسپی ظاہر نہیں کرتے ۔ برمنگھم انٹر فیتھ ریلی سے پاکستانی اور کمیونٹی رہنما بھی شامل نہ ہو سکے ۔ سلطان باہو ٹرسٹ کے خطیب اور اسلامک سکالر سید ظفر اللہ شاہ نے کہا کہ ہمیں حالات کا جائزہ لیتے ہوئے اشتعال سے نہیں بلکہ فکری حکمت عملی کے ذریعے دیگر کمیونٹی کے ساتھ اتفاق رائے سے اپنی کوششوں کو جاری رکھنے کی ضرورت ہے اور کسی بھی طرح آتش فشاں کو پھٹنے نہیں دینے ہونگے ۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کی انٹر فیتھ ریلی سے اسلام کی اصل تصویر پیش کرنے کی ضرورت ہے اور اسلام کسی بھی طرح سے انتہا پسندی اور دہشتگردی کی اجازت نہیں دیتا ۔ انہوں نے کہا امن و امان کی خاطر مسلم امہ کو بھی یگانگت سے کام لینا ہو گا اور جہاں علماء اسلام اپنی ذمہ داری ادا کر رہے ہیں اس طرح برطانیہ اور یورپ میں کمیونٹی کو بھی حق کا علم بلند کرنا ہو گا اپنے اپنے فور مپر انتہا پسندی کیخلاف آواز اٹھانے کی ضرورت ہے انٹرفیتھ ریلی کا ایک ہی پیغام تھا کہ ہم سب یونائیٹڈ ہیں ۔