مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بحیثیت مسلمان عالمی سطح پر اسلام کے وقار میں اضافہ کرنا ہماری ذمہ داری ہے: چوہدری علی شان سونی
اولڈہم:دین اسلام ہمیں بھائی چارے،رواداری،امن اور اتحاد و اتفاق کا درس دیتا ہے، بحیثیت مسلمان اور انسان ہماری اولین ذمہ داری ہے کہ اس کے پرچار،حفاظت اور پھیلانے کیلئے ہم عملی طور پر اس کا ثبوت دیں تاکہ عالمی سطح پر اس کے وقار میں اضافہ ہو اور غیر مذہب متاثر ہو کر اسلام میں داخل ہوں،آج کے اس دور جدید میں جہاں الیکٹرانک،سوشل اور پرنٹ میڈیا ایڈوانس ہونے کے ساتھ ساتھ اسل ورسائل کیلئے موثر اور جلدی مانا جاتا ہے وہاں ہم کو اپنے دفاع کیلئے مثبت حکمت عملی اپنانی چاہئے تاکہ مسلمانوں پر جو دہشت گردی اور انتہا پسندی کے الزامات لگائے جاتے ہیں بتایا جائے یہ صرف چند گنے چنے عناصر ہیں جو اسلام کا نام صرف اپنی ذاتی عزائم کیلئے استعمال کرتے ہیں،یورپ اور خصوصاً برطانیہ میں رہتے ہوئے آپ کی یہ ذمہ داری اور فرض ہے کہ دین اسلام کا مثبت پیغام غیر مذہب تک ان سے ہر سطح پر رابطہ کر کے پہنچائیں،ان خیالات کا اظہار آزاد کشمیر حکومت کے وزیر مال وکسٹو ڈین چوہدری علی شان سونی نے برطانیہ کی جانی پہچانی سیاسی و سماجی شخصیت راجہ آفتاب شریف اور انکے بھائیوں کی طرف سے انکے اعزاز میں ایک با وقار تقریب کے دوران کیا،انہوں نے مزید کہا کہ میں سیاست کا ایک ادنیٰ طالب علم ہوں اور دوست احباب سے سیکھ رہا ہوں اور میں آج آپ کے درمیان آزاد کشمیر کے وزیر مال کی حیثیت سے اور ہمارے ٹیم کیپٹن وزیر اعظم چوہدری عبدالمجید کی ٹیم کے ایک رکن کی حیثیت سے موجود ہوں،انہوں نے کہا کہ پاکستان اس وقت آزادی سے لے کر اب تک کے سب سے نازک ترین دور سے گزر رہا ہے اور میں خراج تحسین پیش کرتا ہوں کہ دیار غیر خصوصاً برطانیہ میں بسنے والے ہم وطنوں کے جذبہ حب الوطنی کی کہ وہ ہر مشکل گھڑی میں ہمارے شانہ بشانہ کھڑے ہوتے ہیں اور انکی قربانیاں لازوال ہیں جس سے ہمارے بھی حوصلے بلند ہوتے ہیں،اہلیان اولڈہم بارے انہوں نے کہا کہ ان کے اندر سیاسی وابستگی سے بالا تر ہو کر اتحاد و اتفاق اس بات کا منہ بولتا ثبوت ہے انہوں نے جمہوری قدروں کی صحیح پہچان کی ہے اور ایسا ہی ہونا چاہئے انہوں نے کہا کہ تحریک آزادی کشمیر کیلئے برطانیہ میں بسنے والے کشمیریوں کی کاوشیں قابل فخر و تحسین ہیں آپ سب کو رنگ و نسل،علاقائی ازم اور ذاتیات سے نکل کر متحد ہو کر آنے والی مشکلات کا ڈٹ کر مقابلہ کرنا چاہئے،انہوں نے کہا کہ بحیثیت مسلمان ہم بہت سی باتوں میں یہاں کی سوسائٹی میں گل مل نہیں سکتے لیکن بحیثیت برطانوی شہری آپکو یہاں کے قوانین اور ملک سے وفادار رہنا چاہئے یہی درس ہمارا مذہب اسلام دیتا ہے اور شر پسندی کی مذمت کرنی چاہئے،پاکستان کے حوالے سے انہوں نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تمام سیاسی طاقتوں کو سانحہ پشاور سے پہلے ٹھوس حکمت عملی اپنانی چاہئے،کاش یہ واقعہ نہ ہوتا بہر حال اب مربوط حکمت عملی سے ملک دشمن عناصر کا مکمل خاتمہ نا گزیر ہے،انہوں نے مزید کہا کہ سیاست میں مستقل مزاجی،رواداری،خدمت خلق ہی سے کامیابی ملتی ہے اور انہی زریں اصولوں کو اپنا کر وہ عملی سیاست کر رہے ہیں،آخر میں انہوں نے کہا کہ راجہ آفتاب شریف نے بھی سیاست کے اندر مقام اسی وجہ سے پایا ہے اور انکے ساتھ جماعتی وابستگی سے ہٹ کر بھائی چارے کا مضبوط رشتہ ہے جو قائم رہے گا،تقریب کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا،اس کی سعادت حافظ جاوید اقبال نے حاصل کی،نعت رسول مقبولؐ حاجی صوفی اکبر نے پیش کی،سٹیج سیکرٹری کے فرائض راجہ آفتاب شریف نے سر انجام دیئے،انہوں نے کہا کہ رب کریم کا ارشاد ہے کہ جو بندہ میری مخلوق کا شکر گزار نہیں ہے وہ میرا کیسے ہو سکتا ہے لہٰذا انسانیت کی خدمت کرنے سے ہی رب راضی ہوتا ہے،انہوں نے مزید کہا کہ سیاست میں ان کو یہ مقام محسن اور بڑے بھائی چوہدری طارق فاروق کے بعد چوہدری علی شان سونی کی وجہ سے ملا وہ انکے بے حد مشکور و ممنون ہیں،آخر میں انہوں نے کہاکہ چوہدری علی شان سونی کی ذات کو جب بھی ضرورت پڑی تو وہ کندھے سے کندھا ملا کر انکے شانہ بشانہ کھڑے ہوں گے،ڈپٹی میئر اولڈہم کونسلر عتیق الرحمن نے کہا کہ برطانیہ اور یورپ کے اندر رہتے ہوئے ہم پر مشکل وقت کی تلوار لٹک رہی ہے ہمیں اپنے اندر اتحاد و اتفاق پیدا کر کے کالی بھیڑوں کو بے نقاب کر کے کیفر کردار تک پہنچانا چاہئے وگرنہ سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے،سابق میئر کو کونسلر چوہدری ریاض احمد نے کہا کہ خداراہ علاقائی،برادری اور شخصیات سے نکل کر اپنی آنے والی نسل کو برطانیہ میں بہتر مستقبل دینے کے لئے یکجہتی کا عملی مظاہرہ کرنا چاہئے میری تمام احباب سے التجا ہے کہ تبدیلی حالات کے ساتھ ساتھ اپنی سوچوں کے اندر مثبت سوچ پیدا کریں وگرنہ پچھتاوا ہمارا مقدر بنے گا،بیرسٹر عابد علی نے کہا کہ وزیر موصوف بزرگوں اور نوجوانوں کے اندر یکساں مقبولیت انکے سیاسی شعور اور شخصیت کی عکاسی کرتی ہے اور آج یہاں تمام مکتبہ فکر کے لوگوں کو اکٹھا کر کے راجہ آفتاب شریف نے بہتر مستقبل کی بنیاد ڈال دی ہے،مسلم کانفرنس برطانیہ کے کنوینئر چوہدری بشیر رٹوی نے کہا کہ جماعتی سیاست اپنی جگہ لیکن ہم سب کو مل جل کر باہمی اتحاد و اتفاق سے ایک متفقہ لائحہ عمل اپنانا چاہئے جسکی مسئلہ کشمیر اور برطانیہ اور یورپ میں پیدا ہونے والے دیگر مسائل جنکا براہ راست ہماری کمیونٹی سے تعلق ہے ان سے نمٹا جائے،آخر میں انہوں نے کہا کہ راجہ آفتاب شریف سے بھائی چارے کا رشتہ ہے جس میں کوئی رکاوٹ حائل نہیں ہو سکتی،اس تقریب سے چوہدری محمد ذوالفقار،راجہ ظہور خالق آبادی،راجہ مقصود حسین،بولٹن سے راجہ عبدالقیوم،چوہدری اکبر ناڑوی،کونسلرز اولڈہم کونسل،شائد مشتاق،شاداب قمر،عقیل سلامت،خضر الرحمن،عاشق مغل،حاجی منظور خالق آبادی،چوہدری بشیر احمدآف بہملہ،چوہدری محمد سردار،بریڈ فورڈ سے چوہدری محمد مالک،چوہدری اقبال کسگموی،حاجی نذر نے بھی خطاب کیا،صدر تقریب حاجی محمد اعظم نے تمام مہمانان گرامی کا دلی شکریہ ادا کیا،آخر میں ریسٹورنٹ کے مالک شائد)مکتا(کی والدہ محترمہ کی صحت و سلامتی کیلئے خصوصی دعا کی گئی۔بیورو رپورٹ:فیاض بشیر