مقبول خبریں
آشٹن گروپ کی جانب سے پوٹھواری شعر و شاعری کی محفل،شعرا نے خوب داد وصول کی
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
اسلام دہشت نہیں محبت سکھاتا ہے‘ دارالعلوم قادریہ جیلانیہ کے زیر اہتمام جلسہ و جلوس کا انعقاد
لند ن ... انٹرنیشنل مسلم موومنٹ، انجمن خدام قادریہ جیلانیہ اور دارالعلوم قادریہ جیلانیہ والتھم اسٹوکے زیر اہتمام والتھم فا ر سٹ ٹاؤن ہال میں جشن عید میلاد النبیؐ کے سلسلے میں ایک عظیم الشان جلسہ و جلوس مفکر اسلام ڈاکٹر پیر سید عبدالقادر شاہ جیلانی کی زیر قیادت منعقد ہوا۔ جس میں برطانیہ بھر کے مختلف شہروں کے علاوہ پورے یورپ سے شمع رسالتؐ کے پروانے ہزاروں کی تعداد میں پورے جوش و جذبے اور محبت و عقیدت سے شریک ہوئے۔ شرکائے جلوس و جلسہ نے اس عہد کا اعادہ کیا۔ کہ غلامان مصطفےؐ پورے عالم میں نفاذ نظام مصطفےٰ کا تحفظ چاہتے ہیں۔ اور عالم اسلام کی حکومتوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ امت مسلمہ میں اتفاق و اتحاد پیدا کرکے مسلمانان عالم کی فلاح و بقاء کے لئے کوئی مشترکہ لائحہ عمل اختیار کریں اور دہشت گردی کی لعنت کو جڑ سے اکھاڑنے کی تدبیر کریں۔ جنہوں نے پورے عالم اسلام میں فتنہ و فساد برپا کر رکھا ہے۔ جلوس کی قیادت ڈاکٹر پیر سید عبدالقادر شاہ جیلانی، پیر سید منور حسین شاہ جماعتی، پیر سید صابر حسین شاہ گیلانی، سید احمد حسین شاہ ترمذی، علامہ عبدالعزیز چشتی، پیر سید مظہر حسین شاہ گیلانی، سید انور حسین شاہ صاحب کاظمی، علامہ مفتی محمد حنیف قریشی ، صاحبزادہ حامد رضا چیئرمین سنی اتحاد کونسل پاکستان اور مفتی ظہور اللہ چشتی،پیر سید نور احمد شاہ کاظمی، مولانا علامہ عبدالقادر واہ کینٹ پاکستان، علامہ محمد خان قادری کر رہے تھے۔ اسکے علاوہ برطانیہ بھر کے علمائے کرام اور پاکستان سے آئے ہوئے علمائے کرام و مشائخ عظام بھی موجود تھے۔ نعت خوان حضرات تھوڑے تھوڑے فاصلے پر کاروں پر نصب شدہ لاؤڈ سپیکر پر تمام جلوس کے دوران بارگاہ رسالت مآبؐ میں نذرانہ عقیدت پیش کرتے رہے۔ جلوس والتھم سٹو کی مختلف شاہراہوں سے ہوتا ہوا واپس ٹاؤن ہال پر اختتام پذیر ہوا۔ جلوس کے دوران بڑے بڑے روح پرور اور ایمان افروز مناظر دیکھنے میں آئے۔ جلوس میں شامل کاروں کو بڑی خوبصورتی سے پھولوں اور جھنڈیوں سے سجایا ہوا تھا۔ مقامی غیر مسلموں کی کثیر تعداد جلوس کو دیکھنے کے لئے مختلف چوراہوں اور سڑکوں کے کنارے پر کھڑے تھے۔ دارالعلوم قادریہ جیلانیہ کی انتظامیہ نے ان کو پمفلٹس کے ذریعے اسلام کا محبتوں بھرا پیغام اور یہ دن منانے کی وجہ اور اہمیت سے آگاہ کیا۔ جسکو ان لوگوں نے بڑا سراہا۔ بی بی سی نے میلاد النبی ؐ کے جلوس کے مناظر بھی دکھائے اور اس جلوس کو لندن میں ہونے والے اس جلوس کے ساتھ منسلک کیا جو پیرس کے واقعہ کے خلاف نکالا گیا۔ اس موقع پر پیر سید عبدالقادر جیلانی نے پیرس کے واقعہ کی مذمت کی اور کہا کہ دہشت گردوں کے اس طرح کے اقدامات کا مین سٹریم مسلمانوں کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ اور یورپ کے مسلمانوں میں انتہا پسندوں کی کارروائیوں پر تشویش ہے۔ بی بی سی والتھم فاریسٹ کے سابق میئر کونسلر ندیم علی کے تاثرات بھی دکھائے ۔ جلوس کے اختتام پر ایک عظیم الشان میلاد مصطفٰے ؐ کانفرنس منعقد کی گئی۔ جس سے مقتدر علمائے کرام اور مشائخ عظام نے اپنے اپنے انداز میں خطاب کیا۔ ا س محفل میں خصو صی طو ر پر مقامی ممبر آ ف پا ر لیمنٹ سٹیلا کر یسی لیڈ ر آ ف کو نسل کو نسلر کر س ر ا بنز سا بق میئر کو نسلر ر چرڈ سو یڈ ن نے شر کت کی ا و ر ا پنے ا پنے مختصر خطا ب میں ا ہلیا ن و ا لتھم فا ر سٹ کو عمو می ا و ر مسلما نو ں کو خصو صی طو ر پر آ خر ی نبی کا یو م و لا د ت منا نے پر مبا ر ک با د د ی ۔مفکر اسلام ڈاکٹر پیر سید عبدالقادر شاہ جیلانی نے خطاب کرتے ہو ئے کہا کہ عاشقان رسولؐ کا یہ ٹھاٹھیں مارتا ہوا سمندر اس بات کی غمازی کرتا ہے۔ کہ عشق رسولؐ ہی وہ روحانی طاقت ہے۔ جو مسلمانان عالم کو اکٹھا کرسکتی ہے۔ مسلمانوں کی یکجہتی اور سالمیت صرف اور صرف غلامئی مصطفیٰ ؐ میں مضمر ہے۔ من حیث القوم غلامئی مصطفٰی ؐ کا پٹہ اگر گلے میں ہو تو دنیا کی کوئی طاقت مسلمانوں میں تفرقہ نہیں ڈال سکتی۔ اور نہ ہی اتحاد میں کوئی رخنہ ڈال سکتی ہے۔مفکر اسلام نے اس موقع پر 16 دسمبر پشاور میں ہونے والے دلخراش، اندوہناک اور وحشیانہ حملے اور بربریت کی شدید مذمت کرتے ہوئے حکومت وقت سے مطالبہ کیا کہ عوام الناس کی جان و مال، عزت و آبرو کی حفاظت کرے جو کہ اس معاملے میں بے بس اور ناکام نظر آرہی ہے۔ پاکستان میں دہشت گردی پھیلانے والے اور اسکا امن و امان تباہ کرنے والوں کا نیٹ ورک جو کہ پورے پاکستان میں پھیلا ہوا ہے۔ اب وقت آگیا ہے کہ ان قوتوں کو بے نقاب کیا جائے۔ جو بیرونی امداد پر یہ کارروائیاں سرانجام دے رہے ہیں۔ ا نہو ں نے فر ا نس میں ہو نے و ا لے د ہشت گر د ی کے وا قعہ کی بھی پر ز و ر مذ مت کی۔ علی پور کے سجادہ نشین پیر سید منور حسین شاہ جماعتی نے اپنے خطاب میں فرمایا کہ ہمارے بزرگوں نے ہر کھٹن دور میں ملت اسلامیہ کی رہنمائی فرمائی ہے۔ خواہ وہ فتنہ قادیانیت ہو خواہ تحریک پاکستان ہر موقع پر ڈٹ کر مقابلہ کیا۔اب بھی پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کی کوششیں ہو رہی ہیں۔ ان سازشوں کا سدباب بھی کرنا ہوگا۔ سید انور شاہ کاظمی نے کہا کہ موجودہ دور کے خارجیوں نے مختلف روپ دھار کر طرح طرح کے فتنوں کو برپا کیا ہوا ہے۔ اور قوم و ملت میں نفرت و افراق کے بیج بورہے ہیں۔ کوئی کہتا ہے نبی ہم جیسا ہوتا ہے کوئی کہتا ہے کہ نبی کو اپنے نبی ہونے کا پتہ نہیں تھا۔ کوئی مسئلہ افضلیت جو کہ ضروریات دین میں سے نہیں ہے۔ اچھال رہا ہے اور دوسروں پر کفر کے فتوے صادر کر رہا ہے۔علی ھذا القیاس ملت اسلامیہ میں ایک افراتفری کا عالم ہے۔پاکستان میں سیاستدانوں کا حل اس سے بھی ابتر ہے۔ صاحبزادہ حامد رضا چیئرمین سنی اتحاد کونسل پاکستان نے اپنے خطاب میں کہا کہ یہ دور مسلمانوں پر آزمائشوں اور ابتلاؤں کا دور ہے۔ کیونکہ مسلمانوں نے جدیدیت کو اپناکر مذہب سے دوری اپنا شعار بنالیا ہے۔ اسی لئے جگہ جگہ اور قدم قدم پر ذلیل و خوار ہورہے ہیں۔ انہوں نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ اتحاد ملت وقت کی اہم ضرورت ہیے۔ مگر اس وقت مصلحتوں سے بالاتر ہوکر اور ذاتی مفاد کو یکسر نظر انداز کرتے ہوئے دہشت گردی کے ناسور کو پاکستان کے پاک وجود سے ختم کرنا ہوگا۔ انہوں نے سانحہ پشاور کی بھی پرزور مذمت کی۔ قاضی علامہ عبدالعزیز چشتی سیکرٹری جماعت اہلسنت نے کہا کہ مرکزی جماعت اہل سنت ہی برطانیہ و یورپ کے عوام اہل سنت کی نمائندہ جماعت ہے۔ جس نے ہر موقع پر مسلمانوں کی نمائندگی کی۔ خواہ وہ رشدی کا فتنہ ہو یا قادیانیت کی یلغار یا یورپ کی اسلام اور بانیء اسلام ﷺ پر الزام تراشی، ان سب فتنوں کا جواب بھرپور طریقے سے مرکزی جماعت اہلسنت کے پلیٹ فارم سے دیا گیا۔ ان سب فتنوں کی سرکوبی کے لئے مرکزی جماعت اہلسنت کو ڈاکٹر پیر سید عبدالقادر شاہ جیلانی کی سرپرستی حاصل رہی۔ سید احمد حسین شاہ ترمذی نے کامیاب جلسہ و جلوس پر مفکر اسلام کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ آج کا کامیاب جلسہ و جلوس اس بات کی غمازی کرتا ہے۔ کہ اہل سنت پہلے سے زیادہ منظم اور فعال ہیں۔ اور جماعت اہلسنت کے روشن مستقبل کی غمازی بھی ہوتی ہے۔ سید مظہر حسین شاہ گیلانی نے کہا کہ ہم مفکر اسلام کے زیر سایہ حسنی و حسینی جذبے کے ساتھ مسلک حقہ کا علم بلند رکھیں گے۔ اور اس راہ میں کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ مفتی ظہور اللہ ہاشمی چشتی ، علامہ مفتی محمد حنیف قریشی ،مولانا پیر عبدالقادر ،علامہ محمد رفیق چشتی، علامہ حافظ فاروق صاحب چشتی، حافظ شاہ محمد چشتی، حافظ محمد افضل چشتی، حافظ حسنات قادری، حافظ اشتیاق قادری، سید نور احمد شاہ کاظمی، مولانا مفتی خان محمد قادری، پیر سید افضال حسین شاہ، علامہ مولانا مفتی عبدالرسول منصور الازہری، مولانا عبدالقادر پاکستان،، مولانا شیر افضل ، مفتی ہارون ، مولانا علامہ ساجد لطیف قادری، قاری محمد امین چشتی کے علاوہ متعدد علمائے کرام اور مشائخ عظام نے بھی خطاب کیا۔ اور میلاد پاک منانے پر روشنی ڈالی۔ پاکستانی سفارتخانے کے اعلیٰ حکام اور سفارت کاروں کے علاوہ مقامی ممبر آ ف پا ر لیمنٹ سٹیلا کر یسی لیڈ ر آ ف کو نسل کو نسلر کر س ر ا بنز سا بق میئر کو نسلر ر چرڈ سو یڈ ن، د یگر کونسلرز حضرات اور کمیونیٹیز لیڈروں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ آخر میں پیر سید عبدالقادر شاہ جیلانی نے میڈیا کا خصوصی طورپر ہر سال عالی شان کوریج کرنے پر شکریہ ادا کیا اور عالم اسلام اور شرکائے جلسہ و جلوس کے لئے خصوصی دعا فرمائی۔