مقبول خبریں
دی سنٹر آف ویلبینگ ، ٹریننگ اینڈ کلچر کے زیر اہتمام دماغی امراض سے آگاہی بارے ورکشاپ
پارٹی رہنما شعیب صدیقی کو پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا سیکریٹری جنرل بننے پر مبارک باد
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
جس لڑکی نے خواب دکھائے وہ لڑکی نابینا تھی!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بین الااقوامی مغربی موسیقار زوبن مہتا کاسرینگر میں پروگرام احساس کشمیر تنازع کا شکار ..!!
سری نگر ...کشمیری حریت پسند رہنما سید علی شاہ گیلانی نے معروف بین الااقوامی مغربی کلاسیکی موسیقار زوبن مہتا کے سرینگر میں موسیقی کے پروگرام کو منسوخ کرنے کی اپیل کی ہے۔ موسیقی کا یہ پروگرام سات ستمبر کو سری نگر میں جرمنی کا سفارتخانہ ریاستی اور مرکزی حکومت کے تعاون سے منعقد کر رہا ہے۔ اس پروگرام کے لیے ملک اور بیرون ملک سے ڈیڑھ ہزار اہم شخصیات کو مدعو کیا گیا ہے۔ پروگرام کے مطابق تمام یوروپی ممالک کے سفیر بھی اس کنسرٹ کے لیے سری نگر میں ہوں گے۔ کشمیری رہنماسید علی شاہ گیلانی نے جرمنی کے سفیر مائیکل اسٹینر کو لکھا ہے کہ’کشمیر ایک متنازع خطہ ہے اور متنازع خطے میں کسی بین الاقوامی پروگرام کے انعقاد سے اس کی متنازع حیثیت میں مداخلت ہوتی ہے‘۔ انہوں نے مزید لکھا ہے کہ’1983 میں ہم نے انڈیا ویسٹ انڈیز کرکٹ میچ کی بھی مخالفت کی تھی کیونکہ اس طرح کے بین الاقوامی پروگراموں کو کشمیری کی متنازع حیثیت تبدیل کرنے کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے‘۔ جرمن سفیرگزشتہ ہفتے اس کنسرٹ کی تیاری کے سلسلے میں سری نگر میں تھے۔ انہوں نے سول سوسائٹی کے ارکان سے بات کرتے ہوئے امید ظاہر کی تھی کہ تمام یورپی ممالک کے سفیر موسیقی کےاس یادگار پروگرام میں شریک ہونگے۔ گیلانی نے جرمنی کے سفیر سے اپیل کی ہے کہ وہ اس خطے میں بھارت کے ذریعے حقوق انسانی کی خلاف ورزیوں کو نظر انداز نہ کریں۔ انہوں نے یوروپی یونین کے ایک وفد کے 2004 کے سرینگر کے دورے کو یاد دلاتے ہو کہا ہے کہ’اس وفد نے کشمیر کو ایک خوبصورت جیل قرار دیا تھا۔ یوروپی یونین کے ایک ذمےدار رکن کے طور پر جرمنی کے لیے یہ نامناسب ہو گا کہ وہ قیدیوں کے لیے موسیقی کی محفل کا اہتمام کرے‘۔ ’احساس کشمیر‘ نام کا یہ پروگرام سر ی نگر کی ڈل جھیل کے کنارے شالیمار باغ میں منعقد کیا جائے گا۔اس کنسرٹ کا لوگو کشمیر کے معروف فنکار مسعود حسین تیار کر رہے ہیں ۔پروگرام کی نظامت معروف فلمی اداکارگل پناگ کریں گی اور اس پروگرام کو پوری دنیا میں ٹیلی ویژن پر براہ راست نشر کیا جا ئے گا۔