مقبول خبریں
مکس مارشل آرٹ کونسل اور چیریٹی آرگنائزیشن کے زیر اہتمام تقریب کا انعقاد
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
پشاور ہائی کورٹ کااین اے پانچ اور این اے ستائیس حلقوں میں دوبارہ پولنگ کرانے کا حکم
پشاور ...پاکستان کے صوبہ خیبر پختون خواہ کی عدالتِ عالیہ نے حالیہ ضمنی انتخابات کے دوران بعض علاقوں میں خواتین کو ووٹ ڈالنے سے روکنے کی اطلاعات کی تحقیقات کا حکم دیتے ہوئے متعلقہ حلقوں کے سرکاری نتائج کا اعلان نہ کرنےاوروہاں دوبارہ پولنگ کا حکم دیا ہے۔ بائیس اگست کو ہونے والے ضمنی انتخابات کے دوران قومی اسمبلی کے دو حلقوں کے بعض پولنگ اسٹیشنز پر خواتین کو ووٹ ڈالنے سے روکنے کی خبروں پر پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس نے از خود نوٹس لے رکھا تھا۔ مقدمے کی سماعت کے دوران نوشہرہ اور لکی مروت میں ضمنی انتخابات میں حصہ لینے والے امیدواروں کے علاوہ متحلقہ سرکاری عہدداروں نے عدالت میں بھی اپنے بیانات ریکارڈ کروائے۔ پیر کو ابتدائی سماعت کے بعد پر چیف جسٹس دوست محمد خان نے الیکشن کمیشن کو حکم دیا کہ وہ اس معاملے کی تحیقات کرے جب کہ نوشہرہ اور لکی مروت کے اضلاع میں ان پولنگ پولنگ اسٹیشن پر دوبارہ ووٹنگ کرائی جائے جہاں یا تو خواتین کو بالکل ہی ووٹ ڈالنے نہیں دیا گیا یا جہاں خواتین کے ووٹ ڈالنے کی شرح برائے نام تھی۔ اطلاعات کے مطابق انتخابات سے قبل مقامی سیاسی عہدیداروں اور عمائدین نے مبینہ طور پر ایک معاہدے کے تحت خواتین کو ووٹ ڈالنے سے باز رکھا تھا ۔