مقبول خبریں
دار المنور گمگول شریف سنٹر راچڈیل میں جشن عید میلاد النبیؐ کے حوالہ سےمحفل کا انعقاد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نبیؐ کا ذکر عبادت ،تمام پریشانیوں کا حل رسول اللہ کا ذکر کرنا ہے، قاری عبدالغفار نقشبندی
مانچسٹر:امت مسلمہ کے بارے میں اللہ تعالیٰ قرآن پاک میں ارشاد فرماتا ہے کہ یہ امت ماضی و حال کی تمام امتوں سے اس لئے بہتر ہے کہ یہ نیکی کا حکم دیتی ہے اور برائی سے روکتی ہے،اس حقیقت سے انکار نہیں کہ اللہ کے نزدیک یہ امت اس وقت انعام و کرام کی حقدار کہلا سکتی ہے جب یہ اپنی ذمہ داریوں کو پورا کرے اور اقوام عالم میں اسے عزت و احترام اسی صورت حاصل ہو سکتی ہے جب فریضہ امرمعروف و نہی عن منکر کی ادائیگی کی صلاحیت رکھتی ہو۔ان خیالات کا اظہار قاری عبدالغفار نقشبندی نے سالیٹرز فاروق عزیز کی رہائش گاہ پر محفل میلاد کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ مجھے بے حد خوشی ہے کہ برطانیہ میں ہر گلی،محلہ مساجد میں محفل میلاد مصطفیؐ کی محفلوں کا انعقاد کیا جا رہاہے،نبی کا ذکر یقینا عبادت سے کم نہیں ہے،تمام پریشانیوں کا حل اللہ کے رسولؐ کا ذکر کرنا ہے کیونکہ اللہ تعالیٰ نے خود قرآن میں فرمایا کہ میں خود اور فرشتے اور اے ایمان والو رسول اللہ پر درود سلام پیش کرو،آج یہ محفل یقینا قابل قبول ہو گی،انشاللہ۔حافظ طاہر نے اپنے خطاب میں کہا کہ آج عالم اسلام عالمی سطح پر مشکلات کا شکار ہے تو اس کا سبب یہ ہے کہ ہم نے اپنی ذمہ داری کو بھلا دیا ہے،وہ اس بات کو فراموش کر چکی ہے کہ اس نے اسلام کی تربیت نظام پر عمل کر کے اپنے اندر سے برائیوں کو مٹانا اور نیکیوں کو فروغ دینا تھا تاکہ اولاد آرام،عدل و انصاف اور مساوات کے ماحول میں سانس لے سکے۔لیکن جب مسلمان اپنی ذمہ داری قبول کرنے سے قاصر رہے تو بہترین امت کے مقام سے ہٹ گئے،آخر میں دعا کی گئی کہ اللہ رب العزت ہمارے ملک پاکستان کی حفاظت فرمائے اور حکمرانوں کو اسلام کے راستہ پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے اور سانحہ پشاور میں بے گناہ بچوں کو قتل کیا گیا ان کے لئے فاتحہ خوانی بھی کی گئی،اللہ تعالیٰ ان کو جنت الفردوس میں اعلیٰ مقام عطا فرمائے،پروگرام میں شریک حاضرین بڑی تعداد نے شرکت کی اور اپنے ایمانوں کو تازہ کیا،جن میں جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کے وائس چیئرمین امجد حسین مغل،سالیٹرز فاروق عزیز،عدنان مغل،قاری عبدالغفار نقشبندی،حافظ نور سلطان،فاروق عقیل قریشی،حاجی عبدالعزیز مغل،حاجی عبدالرزاق،ساقب عزیز،حافظ طاہر،جمیل شریف،محمد معروف،کامران رازق،ایوب حسین،مطلوب حسین،مبین زبیر،محمد عمان،رمیشن معروف،ارادن معروف،ثمرہ معروف،نور،مسلمع الوحید و دیگر نے شرکت کی۔بیورو رپورٹ:فیاض بشیر