مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
آزاد کشمیر میں حکومت مفلوج ، حکمرانوں کوعوام کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں ،راجہ مقصود
اولڈہم:آزاد کشمیر میں عملاً اس وقت حکومت مفلوج ہے حکمرانوں کوعوام کے مسائل سے کوئی سروکار نہیں ہے اور اپنی عیاشیوں اور آقائوں کو خوش کرنے اور ایک دوسرے سے برتری حاصل کرنے کے چکر میں ہیں،کشمیر کے بیس کیمپ میں تحریک آزادی کشمیر کو موثر انداز میں جاری رکھنے کیلئے حکومتی اقدامات سرد مہری کا شکار ہیں ایسے میں وزیر اعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید وزرا ء کی فوج لے کر برطانیہ کی ٹھنڈی ہوائوں میں اپنے اپنے پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کو سیاست کے میدان میں عملاً داخل ہونے کیلئے اپنی تمام تر توانیاں خرچ کر رہے ہیں،ان خیالات کا اظہار مسلم لیگ ن برطانیہ آزاد کشمیر کے قائم مقام صدر راجہ مقصود حسین کاکڑوی نے میڈیا بریفنگ کے دوران کیں،انہوں نے کہاکہ یہ کشمیری قوم کے ساتھ ایک گھنائونا مذاق ہے کہ ایک طرف مقبوضہ کشمیر کے اندر بھارتی جارحیت تمام حدوں کو عبور کر چکی ہے بجائے اس بارے اتحاد و اتفاق سے ایک آواز ہو کر بھارتی ایوانوں تک ایسا پیغام پہنچایا جاتا کہ کشمیر ی اپنی آزادی کیلئے متحد ہیں اور افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ ذاتی مفادات اور انا کو ملی جذبہ پر فوقیت دی جا رہی ہے جو جگ ہنسائی کا باعث بن رہی ہے انہوں نے مزید کہا کہ آزاد کشمیر کے حکمران اس بات کی وضاحت کریں کہ انہوں کے قومی خزانے پر اتنا بوجھ ڈال کے کیا مقاصد حاصل کریں گے یا پھر ذاتی جیب خرچ سے اپنے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی تشہیر کے لئے آئے ہیں،انہوں نے کہا کہ اگر کشمیری قیادت مسئلہ کشمیر پر کوئی متفقہ پالیسی اور حکمت عملی نا اپنا سکی تو پھر مسئلہ کشمیر ایک دفعہ سرد خانے کی زینت بن جائے گا لہٰذا معروضی حالات اس بات کے متقاضی ہیں کہ ہم آزادی کے بہت قریب ہیں صرف اتحاد و اتفاق سے منزل حاصل کی جا سکتی ہے،آخر میں انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن برطانیہ کے حکمرانوں پر واضع کر دینا چاہتی ہے کہ وہ اپنی روش بدلتے ہوئے عوام کے مسائل حل کریں وگرنہ ان کا سیاسی محاسبہ کیا جائے گا۔بیورو رپورٹ:فیاض بشیر