مقبول خبریں
سیرت النبیؐ کے پیغام کو دنیا بھر میں پہنچانے کے لئے میڈیا کا کردار اہم ہے:پیر ابو احمد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
دنیا بھر کے آزادی پسندہمالیہ کے اونچے پہاڑوں میں آباد کشمیری قوم کو بھول چکے : جاوید اقبال بڈھانوی
ناٹنگھم ...کشمیری امن پسند اور آزادی پسند قوم ہیں بھارت کی ریاستی دہشت گردی نے جنوبی ایشیا کے مستقبل کو خطرے میں ڈالا ہوا ہے جنوبی ایشیا میں مستقل امن کے تمام راستے کشمیر سے گزرتے ہیں جب تک کشمیریوں کو آزادی نہیں ملتی جنوبی ایشیا میں امن کا قیام ممکن نہیں۔ان خیالات کا اظہار آزاد کشمیر کے وزیر خوراک حاجی جاوید اقبال بڈھانوی نے بین الاقوامی یوم امن کے موقع پر ناٹنگھم میں منعقدہ کشمیری کمیونٹی کے ایک جلسہ عام سے اپنے خطاب میں کیا۔جلسے کا اہتمام پیپلز پارٹی کے راہنماؤں شفیق کھٹانہ، شبیر کٹاریہ اور دیگر نے جاوید اقبال بڈھانوی کے وزیر بننے کے بعد پہلی مرتبہ برطانیہ آنے پر انکے اعزاز میں کیا تھا۔جلسہ عام میں کثیر تعداد میں کمیونٹی نے شرکت کی۔جلسے کا آغاز نثار ضیاء نے تلاوت کلام پاک سے کیا ،غلام محی الدین نے نعت رسول پیش کی، نظامت کے فرائض شبیر کٹاریہ نے انجام دئیے، جبکہ جلسے کی صدارت مفتی محمد اکبر نے کی۔جاوید اقبال بڈھانوی نے اپنے خطاب میں اقوام متحدہ اور بین الاقوامی برادری کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آج دنیا بھر میں یوم امن منایا جارہا ہے مگر دنیا بھر کے آزادی پسند ، جمہوریت پسند اور امن پسند ہمالیہ کے ان اونچے پہاڑوں کے درمیان آباد اس کشمیری قوم کو بھول چکے ہیں جو ایک امن پسند قوم ہے اور امن کی متلاشی ہے ۔انھوں نے مطالبہ کیا کہ کشمیریوں کو سکاٹ لینڈ کی طرح اپنا حق رائے دہی استعمال کرنے کا موقع دیا جائے جس کے لیے بین الاقوامی برادری کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔انھوں نے برطانیہ میں آباد کشمیری کمیونٹی کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ جو برطانیہ میں آباد ہیں یہ بھی آپ کا وطن ہے اس کی معیشت اور ترقی میں بھی ہماری کمیونٹی کا اہم کردار رہا ہے اور یہاں آبادکمیونٹی کو اس ملک کے قوانین کا مکمل احترام کرنا چاہیے۔انھوں نے کہا کہ برطانیہ میں آباد کمیونٹی نے پاکستان اور آزاد کشمیر کی معیشت کو بہتر بنانے میں بھی اور مصیبت کی ہر گھڑی میں ہمیشہ اہم کردار ادا کیا ہے۔انھوں نے کمیونٹی سے اپیل کی کہ آج جب ملک سیلاب کی نذر ہوا ہے اس قدرتی آفت سے متاثرہ اپنے ہم وطنوں کو مصیبت میں اکیلے نا چھوڑیں بلکہ انکی مدد کریں۔دارالحکومت آزاد کشمیر مظفر آباد کے ایڈمنسٹریٹر سردار مبارک نے اپنے خطاب میں کہا کہ پیپلز پارٹی کی بنیاد ہی مسئلہ کشمیر تھی اور ذوالفقار علی بھٹونے کہا تھا کہ اگر ہمیں کشمیر کی آزادی کے لیے ایک ہزار سال تک بھی لڑنا پڑا تو لڑیں گے۔انھوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی بھٹو شہید کے افکار پر عمل کرتے ہوئے کشمیر کی آزادی کے لیے جدوجہد جاری رکھے گی۔انکا یہ بھی کہنا تھا کہ آزاد کشمیر حکومت سیاست سے بالا تر ہو کر خطے کی تعمیر و ترقی میں مشغول ہے اور کئی بڑے بڑے پاور پراجیکٹس پایہ تکمیل کو پہنچ چکے ہیں۔جلسے سے شفیق کھٹانہ،صغیر کالس،آصف گل،چوہدری امتیاز،ناظم گجر، اخلاق بانیاں،شہزاد کاظمی،شفیق ملک،شاہد چوہان،حمید ممتاز،حق نواز کھٹاریہ،طارق شبیر کھٹاریہ، عنصر،ماسٹر یعقوب،گلباز،بشارت رزاق اور دیگر نے بھی خطاب کیا،جبکہ مفتی محمد اکبر نے صدارتی خطبہ پیش کیا۔،مقررین نے کہا کہ پاکستان میں جمہوریت کے لیے پاکستان پیپلز پارٹی کے راہنماؤں نے اپنے جانوں نے نذرانے پیش کیے ہیں اور جمہوریت پر آنچ نہیں آنے دینگے،مقررین نے کہا کہ کشمیری غلام قوم ضرور ہیں مگر ایک بہادر قوم ہیں انکے حق خودارادیت کو طاقت کے زور پر زیادہ دیر تک دبایا نہیں جا سکتا۔