مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
دنیا میں جہاں کہیں ظلم ہوا اس کی شدید مذمت کا اظہار کرنے میں بھی مسلمان کمیونٹی ہمیشہ پیش پیش رہی
شفیلڈ ...برطانیہ میں آباد مسلمانوں نے نہ صرف ہمیشہ امن پسند ،محنتی، قانون اور دوسروں کا احترام کرنے والی کمیونٹی ہونے کا ثبوت دیا بلکہ دنیا میں جہاں کہیں بھی ظلم ہوا اس کی شدید مذمت کا اظہار کرنے میں بھی مسلمان کمیونٹی ہمیشہ پیش پیش رہی ان خیالات کا اظہار برطانیہ کے نائب وزیراعظم نک کلیگ نے پارٹی مہم کے سلسلے میں شفیلڈ میں کیا،انہوں نے مزید کہا دنیا کے مختلف ممالک میں اسلام کے نام پر ظلم بربریت اور درندگی کا مظاہرہ کرنے والوں کا اسلام سے یقینا کوئی واسطہ نہیں ہو سکتا ۔ وہ یہاں شفیلڈ بینکویٹنگ ہال میں لبڈیم پارٹی کے ایشیائی ممبران چوہدری محمد ظہور ، محمد نذیر اعوان ، چوہدری محمد معروف اور نثار ملک کی جانب سے دیئے گئے استقبالیہ سے خطاب کر رہے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ کسی ایک فرد یا گروپ کی غلط کاریوں اور انسانیت سوز و غیر فطری کارستانیوں کا ذمہ دار تمام کمیونٹی کو ٹھہرانا غیر ذمہ دارانہ فعل ہے جس کی نہ صرف مسلمان کمیونٹی بلکہ ہم سب کو بڑھ چڑھ کر مذمت کرنی چاہیے ۔ نک کلیگ نے کہا کہ برطانیہ سالانہ 59 بلین پونڈ کی خطیر رقم سود کی مد میں اس مالی بحران کے شکنجے سے نجات حاصل کرنے کے لئے ادا کرتا ہے جس کا آغاز سابقہ حکومت کے دور سے ہوا۔ انہوں نے کہا کہ آج کے دور میں دنیا جس افراتفری ، انتشار اور نفرتوں کا شکار ہے اس کا مشاہدہ اپنی سیاسی زندگی میں اس سے قبل مجھے کبھی نہ ہوا ۔ مغرب اپنے غرور اور تکبر کے باعث دنیا کے مسائل حل کرنے کی پوزیشن سے محروم ہوتا جا رہا ہے ۔ طاقت کا توازن یورپ اور امریکہ سے بتدریج ایشیا کی جانب منتقل ہو رہا ہے۔ مختلف اسلامی ممالک میں جاری اندرون خانہ تصادم ، 2008 میں بنکنگ کے عالمی نظام کا درہم برہم ہو جانا جیسے واقعات نے لوگوں کے دلوں میں غیر یقینی اور عدم تحفظ پیدا کر دیا ہے ۔ ایسی حالات میں مفاد پرستوں کو اپنی دکانداری چمکانے کا موقع مل جاتا ہے ، وہ مسائل کو حل کرنے اور ان سے نمٹنے کی بجائے اس کی ذمہ داری دوسروںڈال کر نفرتوں کو فروغ دیتے ہیں ، میرا آپکو مشورہ ہو گا کہ آپ صبر کا دامن نہ چھوڑیں ، اپنی روایات اور اقدار پر پہلے کی طرح سختی سے کاربند رہیں ، دوستی اور بھائی چارہ کو فروغ دیتے رہیں ۔ ان تنگ نظر اور مفاد پرست عناصر کا مقابلہ کرنے کا یہی ایک موثر ذریعہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت تمام تر مشکلات اور دشواریوں کے باوجود دشواریوں سے نمٹنے کے لئے اپنے تمام تر وسائل بروئے کار لا رہی ہے اور اسی کے باعث بالخصوص نوجوانوں اور خواتین میں بے روزگاری کی شرح میں بتدریج کمی آ رہی ہے ۔ لبڈیم پارٹی شفیلڈ کے متحرک رکن چوہدری محمد ظہور نے اس موقع پر نظامت کے فرائض سرانجام دیتے ہوئے نک کلیگ کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ہر سال منعقد کی جانے والی اس تقریب کا مقصد ایشیائی کمیونٹی کے سرکردہ رہنماؤں کو موقع فراہم کرنا ہوتا ہے کہ وہ نہ صرف نک کلیگ ایم پی بلکہ برطانیہ کے نائب وزیر اعظم کے ساتھ ملاقات کر کے انہیں اپنے مسائل سے براہ راست آگاہ کر سکیں ۔ حال ہی میں ہاؤس آف لارڈز کے رکن بنائے گئے سابق کونسل لیڈر پال سکریون نے اپنے خطاب میں کہا کہ انہوں نے بحیثیت کونسلر اور سٹی کونسل لیڈر شفیلڈکے ان طبقات کی نمائندگی اور ان کے تحفظات ختم کرنے میں کوئی کسر نہ چھوڑی جن کے باعث وہ عدم تحفظ اور مایوسیوں کا شکار ہو چکے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنی اسی روش کو ہاؤس آف لارڈز میں جاری رکھیں گے ۔ چوہدری محمد معروف اور محمد نذیر اعوان ایڈووکیٹ نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے نک کلیگ کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے پال سکریون جیسے انسان دوست شخص کو ہاؤس آف لارڈز کا رکن بنایا ۔