مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
سکاٹ لینڈ کی طرح کشمیری عوام کو بھی اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا حق ملنا چاہیے۔ جاوید اقبال بڈھانوی
برمنگھم ... آزاد کشمیر کے وزیر خوراک جاوید اقبال بڈھانوی نے کہا ہے کہ جس طرح سکاٹ لینڈ کے عوام کو ریفرنڈم کے ذریعے اپنے مستقبل کے فیصلے کرنا کا حق دیا گیا ہے۔ اسی طرح کشمیری عوام کو بھی اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کے لیے 68 برس سے انتظار کررہے ہیں۔برطانیہ جو جمہوریت کا سب سے بڑا دعویدار ہے، کشمیر کے عوام کو بھی اپنے مستقبل کے فیصلے کرنے میں مدد کرے اور وہ اپنے حق خودارادیت کا حق استعمال کرسکیں۔ کشمیریوں نے جس طرح اپنے حق خودارادیت کے لیے قربانیاں دی ہیں دنیا کی تاریخ میں ایسی کوئی مثال نہیں ملتی۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روزبرطانیہ کے دورے کے دوران برمنگھم سٹی کونسل میں لارڈ میئر آف برمنگھم سیّد شفیق شاہ کے ہمراہ صحافیوں سے گفتگو کرتے کیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور آزاد کشمیرکے عوام اس وقت بدترین قدرتی آفت کا شکار ہیں، سیلاب نے تباہی مچائی ہوئی ہے، سیکڑوں افراد جاں بحق، لاکھوں بے گھر اور اربوں روپوں کا نقصان ہوچکا ہے، بیرون ملک مقیم پاکستانیوں نے ہر مشکل وقت میں اپنے مصیبت زدہ بھائیوں کی مدد کی ہے۔ لہٰذا میں آپ سے پرزور اپیل کرتا ہوں کہ دل کھول کر ان کی مدد کے لئے فنڈزدیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں دھرنوں کی طوالت سے دنیابھر میں پاکستان کی سبکی ہورہی ہے۔ روپے کی قدر میں کمی اور سٹاک مارکیٹ میں مندی سے اب تک ملکی معیشت کو تقریباً 6کھرب روپے کا نقصان ہوچکا ہے۔ چینی صدر نے دھرنوں کی وجہ سے پاکستان کا دورہ ملتوی کردیا جس سے ملک میں 34ارب ڈالر کی سرمایہ کاری متاثر ہوئی۔ بین الاقوامی مالیاتی ادارے اقتصادی منصوبوں کے لئے امداد دینے میں محتاط ہوگئے ہیں۔ ملک کو دہشت گردی کی جنگ کے علاوہ سیلاب زدگان کی امداد و بحالی کی کٹھن مشکلات کا بھی سامنا ہے، ایسے میں حکومت ہی نہیں اس کے مخالفین کا بھی فرض ہے کہ وہ ملک کے امن و امان کو یقینی بنائیں۔ ریاست کا نظام اصلاحات کے ذریعے بہتر بنایا جا سکتا ہے جس کی آئین نے بھی ضمانت دی ہے۔ اس طرح کے فیصلے سڑکوں پر نہیں پارلیمنٹ میں کئے جاتے ہیں۔ دھرنا دینے والے لیڈر حکومت کو ہٹانے کے لئے ریاست کو نقصان نہ پہنچائیں اور مذاکرات کے ذریعے معاملات کو یکسو کرنے کے لئے اپنے رویوں میں لچک پیدا کریں۔ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے حکومت سے جو غلطی ہوئی اس پر ذمہ داران کو لازمی سزا ملنی چاہئے۔ دونوں فریق ڈائیلاگ کے دروازے کھلے رکھیں اور افہام و تفہیم سے متنازعہ مسا ئل حل کرکے قوم کو موجودہ بحران سے نکالیں۔انہوں نے کہا کہ دھرنے والوں کے مطالبات درست ہیں لیکن طریقہ کار غلط ہے۔ملک کے اندر ہم کشمیری ہیں لیکن ملک سے باہر ہم صرف پاکستانی ہیں۔وی آئی پی کلچر کے سخت خلاف ہوں قوم باشعور ہوچکی ہے،عوام کو اپنے حقوق کاعلم ہونے لگا ہے ،جس میں میڈیا کا اہم کردار ہے۔ اس موقع پر لارڈ میئر نے عوامی خدمات پر وزیر خوراک اآزاد کشمیر کو شیلڈ بھی پیش کی۔