مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
:برطانیہ سے ریفرنڈم کے ذریعے سکاٹ لینڈ کی علیحدگی باعث تشویش ہے،چوہدری شبیر
گریٹر مانچسٹر:برطانیہ سے ریفرنڈم کے ذریعے سکاٹ لینڈ کی علیحدگی باعث تشویش ہے اور سب کچھ بد قسمتی سے تمام جماعتیں جو حکومت میں رہی ہیں ان کی غلط اور دوہری پالیسیوں کا شاخسانہ ہیں،آج برطانیہ کا ذی شعورشہری یہ سوچنے پر مجبور ہے کہ برطانیہ جو دنیا کی سپر طاقتوں میں سے ایک ہے حکمرانوں کو کوتاہی اور دوہرے معیار کی وجہ سے ان حالات سے دو چار ہوئی ہے اور وہ ممالک جو سلامتی کونسل کی مستقل ممبر بننے کی طاق لگائے بیٹھے ہیں اندر سے خوش ہو رہے ہوں گے کیونکہ اگر سکاٹ لینڈ علیحدہ ہو گیا تو پھر سلامتی کونسل کی مستقل ممبر کی حیثیت کا وجود سخت خطرے سے دو چار ہو گا،ان خیالات کا اظہار سماجی،کمیونٹی و کاروباری رہنما چوہدری شبیر احمد نے میڈیا سے خصوصی نشست کے دوران کیا۔انہوں نے کہا کہ حالات اس بات کے منقاضی ہیں کہ تمام سیاسی،سماجی،کمیونٹی رہنما اس بارے سکاٹ لینڈ کی عوام کو قائل کریں اور انہیں ہر قسم کی تحریری یقین دہانی کروائیں کہ متحدہ برطانیہ میں انکا کردار آگے سے زیادہ اہم ہو گا اور مزید مراعات بھی دی جائیں گی کیونکہ حالیہ پول سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ ہاں اور نہیں بارے سکاٹ لینڈ کی عوام پچاس پچاس فیصد ہے،یہ ایک ایسا تاریخی موقع ہے جو ہاتھ سے نہیں نکلنا چاہئے وگرنہ پچھتاوا مقدر بنے گا،انہوں نے مزید کہا کہ دوہرے معیار کے تمام قوانین کو ختم کیا جائے تاکہ لوگ احساس محرومی کی وجہ سے ایسا کرنے پر مجبور نہ ہوں،آخر میں انہوں نے کہا کہ گیارہ ستمبر2000میں امریکہ کے اندر دہشت گردی کے بعد امت مسلمہ کو بھی ہمیشہ شک کی نظر سے دیکھا جاتا ہے اور برطانوی حکام بالا سے گزارش ہے کہ وہ اس بارے میں بھی اپنی ٹھوس اور واضع پالیسی بنائیں تاکہ مسلمان کو دوہرے قانون کا سامنا نہ کرنا پڑے ہم دہشت گردی کے تمام واقعات کی پر زور مذمت کر تے ہیں۔اسلام امن کا گہوارہ ہے اور ہم پر امن لوگ ہیں۔بیورو رپورٹ:فیاض بشیر