مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال نےرضاکارانہ خدمات پرتنظیم وائی فائی کو تعریفی سرٹیفکیٹ اور شیلڈ سے نوازا
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برطانوی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر بحث رکوانے والوں کو منہ کی کھانی پڑے گی: وزیر اعظم آزاد کشمیر
لیڈز... وزیراعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید نے کہا ہے کہ اوورسیز کشمیری مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگر کرنے اور ریاست کی معیشت کو تقویت دینے میں انتہائی اہم کردار ادا کر رہے ہیں، اوورسیز کشمیریوں کے وطن میں تمام مسائل حل کریں گے ، اوورسیز کشمیری آزاد کشمیر کے اندر ہائیڈل اور سیاحت کے شعبوں میں سرمایہ کاری کریں، حکومت تمام سہولیات فراہم کرے گی۔ وہ لیڈز میں کشمیریوں کے مختلف وفود سے بات چیت کر رہے تھے۔ وزیر اعظم بریڈفورڈ سے لیڈز پہنچے تو سابق میئر لیڈز چوہدری اقبال، وزیر اعظم کے کوآرڈینیٹر اوورسیز ساجد قریشی، چوہدری قیوم، چوہدری حنیف ایڈووکیٹ اور چوہدری ادریس شان نے ان کا استقبال کیا۔ اس موقع پر پرنسپل سیکرٹری فیاض علی عباسی، پولیٹیکل سیکرٹری عامر ذیشان جرال اور پرنسپل سٹاف آفیسر مسعود الرحمن بھی موجود تھے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ بھارت کی طرف سے مسئلہ کشمیر پر دہرا معیار اپنایا جا رہا ہے ۔ ایک طرف وہ جمہوریت کی بالا دستی کی بات کرتا ہے اور دوسری طرف مقبوضہ کشمیر کے اندر عوام کے تمام انسانی و جمہوری حقوق پر ڈاکہ ڈال رہا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ اوورسیز کشمیریوں کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ بھارت کے اس دہرے معیار کو عالمی برادری کے سامنے لائیں۔ انہوں نے کہا کہ جلد ہی برطانوی پارلیمنٹ کے اندر کشمیریوں کے حق خودارادیت کے حوالے سے بات بھی ہو گی۔ اوورسیز کشمیری اپنے علاقے کے اراکین پارلیمنٹ سے رابطہ رکھتے ہوئے انہیں اصل صورت حال سے آگاہ رکھیں۔ بھارتی لابی اس بحث کو رکوانے کے لئے متحرک ہو چکی ہے مگر اسے منہ کی کھانا پڑے گی۔