مقبول خبریں
دار المنور گمگول شریف سنٹر راچڈیل میں جشن عید میلاد النبیؐ کے حوالہ سےمحفل کا انعقاد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگرکرنے میں اوورسیز کشمیریوں کا کردار قابل ستائش ہے،چوہدری عبدالمجید
بریڈ فورڈ:مسئلہ کشمیر کو عالمی سطح پر اجاگرکرنے میں اوورسیز کشمیریوں کا کردار قابل ستائش ہے،راجہ نجابت حسین اور انکی ٹیم کی تحریک آزادی کشمیر میں گراں قدر خدمات ہیں جنہیں پوری کشمیری قوم قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے،پاکستانی اور کشمیری نژاد ارکان پارلیمنٹ ،کونسلر اور برطانوی سیاسی جماعتوں کے ارکان کشمیریوں کے حقیقی سفیر ہیں آزاد کشمیر کی حکومت حریت کانفرنس کی قیادت اور دونوں اطراف کی کشمیری قیادت متحد ہو کر مسئلہ کشمیر کو ہر فورم پر اجاگر کرے گی،بیرون ملک تحریک حق خود ارادیت جیسی تنظیموں کی صلاحیتوں سے بھی استفادہ حاصل کیا جائیگا،بیرون ملک تمام کشمیری و پاکستانی متحد ہوکر بلا امتیاذ سیاسی و گروہی وابستگی حق خود ارادیت کے حصول اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کروانے کیلئے منظم کردار ادا کریں۔ان خیالات کا اظہار آزاد حکومت ریاست جموں و کشمیر کے وزیر اعظم چوہدری عبدالمجید نے دورہ بریڈ فورڈ کے موقع پر جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کے چیئرمین راجہ نجابت حسین اور تحریک کے سر پرست و مشیر حکومت سردار عبدالرحمان خان سے ایک خصوصی ملاقات میں کیا،اس موقع پر تحریک کے دونوں رہنمائوں نے وزیر اعظم کو برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیر پٹیشن پر بحث کیلئے منظوری لینے،یورپی پارلیمنٹ میں ممبران یورپی پارلیمنٹ اور گروپ لیڈروں سے ملاقاتوں کے علاوہ پارٹی کانفرنسوںکے انعقاد کے حوالے سے بریفنگ دی جبکہ دیگر کشمیری تنظیموں،کونسلروں اور خواتین و نوجوان کے متحرک کروانے بارے میں بھی وزیر اعظم کو آگاہ کیا۔وزیر اعظم آزاد کشمیر چوہدری عبدالمجید نے اس موقع پر تحریک کی مثبت اور مسلسل سرگرمیوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ جس انداز میں آپکی ٹیم ریاستی عوام کا نکتہ نظر برطانیہ اور یورپ کے ایوانوں اور سیاسی جماعتوں کے رہنمائوں تک پہنچا رہے ہیں اس سے مقبوضہ کشمیر اور آزاد کشمیر میں تحریک آزادی کشمیر کے حوالے سے مثبت نتائج آ رہے ہیں دونوں اطراف کی کشمیری لیڈر شپ بیرون ملک جدو جہد کو تحریک کا ہر اول دستہ سمجھتے ہیں،انہوں نے کہا کہ ہم نے آزاد کشمیر کے تمام ان رہنمائوں کو آزاد کشمیر حکومت نے ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کر لیا ہے اور ہم ایک واضع پروگرام کے تحت دنیا بھر میں وفود اور کانفرنسوں و سیمینارز کے ذریعے کشمیریوں کا نکتہ نظر بین الاقوامی برادری تک پہنچائیں گے،انہوں نے کہا کہ بیرون ملک تمام کشمیری و پاکستانی تنظیموں کے با صلاحیت لوگوں سے بھی استفادہ حاصل کیا جائیگا،انہوں نے کہا کہ ہم نے مقامی مسائل کے حوالے سے بعض اہم کام کیلئے اور تحریک آزادی کشمیر کو بھی اسی انداز میں چلائیں گے کیونکہ آزاد کشمیر جو کہ آزادی کا بیس کیمپ ہے اس کی حکومت مسئلہ کشمیر کو بھی نظر انداز نہیں کر سکتی اور ہم سب کو ساتھ لیکر چلنے کی پالیسی پر گامزن ہیں،انہوں نے کہا کہ برٹش کشمیری آزاد کشمیر اور پاکستان سے آنیوالے لیڈروں کے مقابلے میں یہاں کے سیاستدانوں سے بہتر روابط استوار کر سکتے ہیں اس لئے ہم اپنے ان بھائیوں اور دوستوں سے ملکر سیاسی تحریک آزادی کشمیر کے سفارتی محاذ پر کام کریں گے تاکہ مقامی ممبران پارلیمنٹ او ر وزرا ء انکی معاونت سے ہمارے مسئلے پر حمایت کر سکیں،وزیر اعظم آزاد کشمیر کے جہاں کشمیری و پاکستانی نژاد ارکان پارلیمنٹ کو مسئلہ کشمیر کو اجاگر پر شکریہ ادا کیا وہاں تمام کشمیر دوست ارکان کا بھی شکریہ ادا کیا جو اپنے اپنے ایوانوں میں کشمیریوں کے حق میں آواز بلند کرتے ہیںاس موقع پر وزیر اعظم نے کہا کہ وہ ستمبر میں امریکہ کا بھی دورہ کریں گے اور اسلامی کانفرنس کے کشمیر گروپ کے رہنمائوں سے بھی خطاب کریں گے جبکہ یورپ اور مڈل ایسٹ میں ریاست کے مختلف مکاتب فکر کو اکٹھا کر کے کشمیریوں کے مشترکہ لائحہ عمل بھی طے کروائیں گے جس کیلئے مقبوضہ کشمیر کی سیاسی قیادت بھی ہمارے ساتھ تعاون کرے گی جبکہ پیپلز پارٹی کے سربراہ اور سابق صدر آصف علی زرداری بھی اس مشترکہ کانفرنس کے انعقاد میں ہماری معاونت اور سر پرستی کریں گے،وزیر اعظم نے اس موقع پر برطانیہ میں تمام کشمیریوں سے اپیل کی کہ وہ پاکستان کی مضبوطی اور استحکام کیلئے اپنا مثبت کردار ادا کرتے رہیں کیونکہ ایک مضبوط اور مستحکم پاکستان کیلئے ہی ریاست جموں کشمیر کی آزادی کا ضامن ہے،پاکستان کے اندرونی حالات میں خلفشار سے تحریک آزادی کشمیر کو بھی نقصان پہنچے گا اور ہمیں پاکستان کی افواج اور انکی قربانیوں کو نظر انداز نہیں کرنا چاہئے جبکہ پاکستانی افواج اور عوام نے ہمیشہ کشمیر کی آزادی کیلئے بے شمار قربانیاں دی ہیں جن کو کشمیری قوم قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ (بیورو رپورٹ: فیاض بشیر)