مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال کی طرف سے نسیم اشرف اور قاری محمد بلال کو تعریفی سرٹیفکیٹ سے نوازا گیا
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
عمران خان تمام مسائل کو ایوان کے اندر لے جائیں اور قانون سازی کے ذریعے حل کریں، چوہدری رخسار
مانچسٹر:وزیر اعظم پاکستان میاں نواز شریف کی قومی سوچ،مدبرانہ اور جراتمندانہ اقدامات سے ملک معاشی مشکلات اور دہشت گردی کے گرداب سے نکل کر استحقامت کی جانب اپنی حقیقی منزل کے حصول کیلئے رواں دواں ہے،ایسے میں افراتفری،احتجاجی مظاہروں سے غیر یقینی صورت حال پیدا ہو گی اور بیرونی سرمایہ کار پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے کے منصوبوں پر نظر ثانی کر سکتے ہیں اس سے غربا ء کو روزگار کا حصول ملنا اور نا گزیر ہو جائے گا سیاسی قائدین کو مذاکرات کے ساتھ تمام مسائل کا حل نکالنا چاہئے یہ باتیں پاکستان مسلم لیگ ن آزاد کشمیر برطانیہ کے رہنما چوہدری رخسار احمد نے میڈیا نمائندگان سے خصوصی بات چیت کے دوران کیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ملک کے اندر جمہوریت کا پودا پروان چڑھ رہا ہے اس کوکسی تیسری قوت کو فائدہ پہنچانے کیلئے ہرگز استعمال نہیں کرنا چاہئے عمران خان ایک سیاسی جماعت کے لیڈر ہیں اور پارلیمنٹ میں ان کی بھرپور نمائندگی موجود ہے تمام مسائل کو ایوان کے اندر لے جائیں اور قانون سازی کے ذریعے حل کریں یہی قومی سوچ کا تقاضا ہے اور علامہ طاہر القادری پہلے اپنی جماعت کو ایوان کے اندر لے کر آئیں پھر مطالبات کریں وگرنہ ضد اور انا کی سیاست کسی بھی فرد واحد کے مفاد میں نہیں ہے،اگر واقعی تمام سیاسی،مذہبی اور سماجی رہنما مملکت پاکستان کے ساتھ مخلص ہیں تو پھر سب کو قومی سوچ اپنانی ہو گی اوروہ ہے اتحاد،ایمان اور تنظیم وگرنہ اب پچھتاتے کیا ہو جب چڑیاں چگ گئیں کھیت والی بات ہو گی۔