مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسئلہ کشمیر پر عالمی کوششیں رنگ لانے لگیں یورپی پارلیمنٹیرین حرکت میں آچکے ہیں: بیرسٹر سلطان
بریڈفورڈ ... سابق وزیر اعظم آزاد کشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کے اعزاز میں پیپلز پارٹی برطانیہ کی ایڈہاک کمیٹی کے رکن چوہدری مالک نے ایک افطار ڈنر کا اہتمام کیا جس میں مہمان شخصیت کے دیرینہ ساتھی چوہدری حمید پوٹھی، چوہدری سردار محمد اور آزاد کشمیر سے آئےسینئر صحافی کشمیرالیکٹرانک میڈیاایسوسی ایشن کے صدر محمد رفیق مغل سمیت چیدہ چیدہ دوستوں نے شرکت کی۔ بعد ازان واقت کی کمی کی وجہ سے بیرسٹر سلطان محمود نے برمنگھم میں بھی ایسی ہی ایک تقریب میں شرکت کی اور نور ٹی وی کے روح رواں پیر علائوالدین صدیقی سے ملاقات کی۔ اس موقع پر سابق ممبر کشمیر کونسل چوہدری حمید پوٹھی، بیرسٹر کرامت حسین اور برمنگھم سے پی پی پی ایڈہاک کمیٹی کے ممبر چوہدری خادم حسین بھی موجود تھے۔ ان ملاقاتوں میں بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ کہ حالیہ دورہ امریکہ، برطانیہ اوریورپ کا مقصد خالصتاً مسئلہ کشمیر پر عالمی طاقتوں کی بھرپور توجہ حاصل کرنا ہے۔ممبران پارلیمنٹ کو خطوط لکھے۔ میرے ملاقاتیں بھی طے ہیں۔ ساؤتھ ایشیا میں بڑی تیزی سے تبدیلی جنم لے رہی ہے۔ ایک طرف امریکہ اور نیٹو افغانستان سے انخلا کا سوچ رہے ہیں۔ دوسری طرف انڈیا میں ایک ہندو انتہا پسند مودی اقتدار میں آگیا ہے۔بھارت میں مبصر مشن کے دفاتر بند کروانے سے مودی کے انتہا پسندانہ عزائم سامنے آگئے ہیں،اس لئے امریکہ برطانیہ اپنی ڈپلومیسی اور اثر رسوخ استعمال کرکے بھارت کو اس کے جنگی اور جارحانہ عزائم سے روکے۔ دوے کا یہ بھی مقصد ہے کہ دنیا کے بڑے پارلیمنٹرین کے ذریعے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل پر دباؤبڑھانا ہے تاکہ وہ جموں و کشمیر کے نہتے عوام کو ان کا پیدائشی اورجمہوری حق خودارادیت دے سکیں۔ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں اور بالخصوص تشدد، قتل عام، خواتین کی آبروریزی اور اجتماعی قبروں کی دریافت معمول بن چکا ہے لہذا برطانوی وزیر خارجہ اور حکومت مقبوضہ کشمیر میں جاری انسانی حقوق کی پامالیوں کو رکوانے کے لئے اپنا اثر ورسوخ استعمال کرے برٹش پارلیمنٹ کے 20 سے زائد اراکین کے دستخطوں سے برطانوی وزیر خارجہ کو لکھے گئے خط میں مقبوضہ کشمیرمیں ہونے والی ریاستی دہشت گردی اورمسئلہ کشمیر کے حل کے لئے برطانوی وزیر خارجہ اور حکومت سے اپنا اثر رسوخ استعمال کرنے کے لئے کہا گیا ہے ۔اسی طرح ان ممبران پارلیمنٹ نے برطانوی وزیر خارجہ سے ملاقات کا وقت بھی مانگ لیا ہے تا کہ برطانوی ممبران پارلیمنٹ وزیرخارجہ سے ملکر اصل صورتحال سے برطانوی حکومت کو آگاہ کر یں اور برطانوی حکومت اپنا کردار ادا کرے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ مسئلہ کشمیر پر عالمی سطح پرکوششیں رنگ لانے لگیں اور برطانوی پارلیمنٹیرینز تیزی سے حرکت میں آچکے ہیں برطانوی ممبران پارلیمنٹ کے اقوام متحدہ کے سیکر ٹری جنرل کو لکھے گئے خط کے بعد برطانوی ممبران پارلیمنٹ نے حکومت کو لکھ کر آگاہ کیا ہے .یا د رہے کہ برطانوی وزیر خارجہ کو خط لکھنا اورمسئلہ کشمیر کی ساری صورتحال سے آگاہ کرنے کا فیصلہ تین ہفتے قبل اسوقت کیا گیا تھا جب بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے برطانوی پارلیمنٹ میں آل پارٹیز کشمیر کمیٹی کے خصوصی اجلاس میں تیس سے زائد ممبران پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے ان پر زور دیا تھا کہ اب مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اہم اقدامات اٹھائیں جائیں ،برطانوی ممبران پارلیمنٹ کے برطانوی وزیر خارجہ کو لکھے گئے اس خط کی کاپی بیرسٹر کو بھیج دی گئی ہے۔