مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
یوم شہدا ء پر پاکستان اور کشمیر میں مظاہرے،حریت قیادت نظر بند
سری نگر /مظفر آباد/ اسلام آباد: لائن آف کنٹرول کے دونوں طرف اور دنیا بھر میں مقیم کشمیریوں نے اتوار کو یوم شہدا ئے کشمیر عقیدت و احترام سے منایا اور اس عزم کا اظہار کیا کہ جدوجہد آزادی کشمیر کو جاری رکھا جائے گا۔13جولائی 1931کے شہدا ء جموں وکشمیر کی یاد میں اتوار کو مقبوضہ کشمیر میں عام ہڑتال رہی ۔مقبوضہ وادی میں بھارت کے خلاف احتجاجی جلسے جلوس اور مظاہرے کئے گئے بھارتی پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے لاٹھی چارج کیا متعدد افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں ،ہڑتال کی اپیل حریت رہنما ئوں علی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق ، یاسین ملک ، شبیر شاہ نے دی تھی جس کے باعث ان رہنمائوں کو گھرں میں نظربند کردیا گیا ۔ کاروبار زندگی اورٹرانسپورٹ بھی معطل رہی جبکہ جھڑپوں کے دوران فوجی اہلکاروں نے رہائشی مکانوں اور دکانوں میں داخل ہو کر توڑ پھوڑ کی مکینوں اور راہگیروں کو زدوکوب کیا۔ ادھر اسلام آباد میں حریت کانفرنس جموںو کشمیر آزاد کشمیرشاخ کے زیر اہتمام اقوام متحدہ کے دفتر کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا گیا۔دھر نا کے شرکا ء نے 13جولائی 1931کے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے انکے مشن کو منطقی انجام تک پہنچانے کے عزم کا اعادہ کیا۔ اس موقع پر بھارتی مظالم کے خلاف یادداشت بھی پیش کی گئی ۔ دھرنے میں غلام محمد صفی، محمود احمد ساغر، غلام نبی نوشہری، عبدالمجید میر، الطاف حسین وانی، ایڈووکیٹ پرویز احمد ، سید مظفر شاہ، محمد سلطان بٹ، عبدالحمید لون، نورالباری نے شرکت کی ، مظفرآباد میں تقریب سے خطا ب کرتے ہوئے وفاقی وزیرمذہبی امور سردارمحمدیوسف نے کہا کہ جنوبی ایشیاء میں پائیدار امن کے قیام کے لئے مسئلہ کشمیر کا حل ناگزیر ہے ۔ پاکستان اور کشمیر لازم و ملزوم ہیں۔ پاکستان کشمیریوں کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھے گا ہم مذاکرات کے حق میں ہیں اور پاکستان کی خارجہ پالیسی میں مسئلہ کشمیر سرفہرست ہے ۔ پاکستان پڑوسی ممالک کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہاں ہے مگر اپنے اندرونی معاملات میں کسی کو مداخلت کی اجازت نہیں دے سکتے ،تقریب سے چوہدری لطیف اکبر، تقدیس گیلانی، شوکت جاوید میر، داؤد یوسف زئی، سید قلب عباس،ڈائریکٹر لبریشن سیل راجہ سجاد، راجہ سعد اقبال، شیخ اظہر، مشتاق الاسلام، عزیر غزالی، پروفیسر عبدالعزیز علوی، علی رضا سبزواری، بشارت مغل اور دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا ، کشمیر ہائوس اسلام آباد میں ملاقات کے دوران وفدسے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم چوہدری عبدالمجید نے حریت کانفرنس کے رہنماؤں کی نظربندی کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے بھارتی حکومت کی بوکھلاہٹ قرار دیا ہے ۔چوہدری عبدالمجید نے کہا کہ بھارت کشمیریوں کی پر امن سیاسی جدوجہد کو تشدد کے ذریعے ختم کرنا چاہتا ہے آزادکشمیر کی تمام سیاسی جماعتیں بھارت سے آزادی پر متفق ہیں۔