مقبول خبریں
دی سنٹر آف ویلبینگ ، ٹریننگ اینڈ کلچر کے زیر اہتمام دماغی امراض سے آگاہی بارے ورکشاپ
پارٹی رہنما شعیب صدیقی کو پاکستان تحریک انصاف پنجاب کا سیکریٹری جنرل بننے پر مبارک باد
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
جس لڑکی نے خواب دکھائے وہ لڑکی نابینا تھی!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
عیدالفطر مسلمانوں کیلئے رمضان کی عبادات کا انعام ہے،شیخ ابو اسامہ
برمنگھم۔مرکزی جمعیت اہل حدیث برطانیہ کی جامع مسجد گرین لین برمنگھم کے زیر اہتمام نماز عیدالفطر سمال ہیتھ پارک میں مذہبی عقیدت و احترام اور جوش و جزبے سے ادا کی گئی جس میں مختلف اسلامی ممالک سے تعلق رکھنے والے بیس ہزار مرد و خواتین اور بچے شریک ہوئے خطابت و امامت کے فرائض مدینہ یونیورسٹی کے فارغ التحصیل شیخ ابو اسامہ نے سر انجام دیئے،انہوں نے نماز عید کے ایک بڑے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ رحمت،مغفرت اور بخشش والا مقدس ماہ رخصت ہوا ہے،عید سعید عبادات گزار بندوں کیلئے انعام و اکرام،اعمال کے جائزے اور عزم نو کا دن ہے،مسلمان اللہ کی بارگاہ میں نماز عید ادا کر کے اس عزم کا اعادہ بھی کرتے ہیں کے وہ سال کے باقی گیارہ ماہ میں بھی اسلامی تعلیمات پر چل کر اللہ کی رضا و خوشنودی کیلئے سرگرم رہیں گے،شیخ ابو اسامہ نے عید کے شرکاء پر زور دیتے ہوئے کہا کہ دائمی کامیابی اور درپیش چیلنجز سے نمٹنے کیلئے قرآن و سنت سے رہنمائی لینا ہو گی،دریں اثناء ڈاکٹر عبدالرب ثاقب نے کہا ہے کہ اسلام میں اتحاد و اتفاق کی بہت ہی زیادہ اہمیت ہے،دن رات کی پانچ فرض نمازوں،جمعہ کی نماز،عیدین کی نمازوں اور حج سے اس کی اجتماعیت واضح ہے مگر افسوس کہ اسلام نے اتحاد و اتفاق پر جس قدرزور دیا ہے آج امت مسلمہ اتنی ہی زیادہ متفرق ہےانہوں نے کہا کہ اس ملک میںبھی ہماری جگ ہنسائی ہے کہ ایک ہی گھر اور ایک ہی فیملی کے افراد دو عیدوں میں بٹے ہوئے اور منعقد ہیں تمام مکاتب فکر اور مسالک کے سنجیدہ علماء کرام اورقائدین ایک پلیٹ فارم پر جمع ہوکر اس مسئلہ کو مستقل بنیادوں پر ہمیشہ کیلئے حل کرائیں۔