مقبول خبریں
پاکستانی کمیونٹی سنٹر اولڈہم میں بیڈمنٹن ٹورنامنٹ کا انعقاد، برطانیہ بھر سے 20 ٹیموں کی شرکت
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
عبدالستار ایدھی : خدمت انسانی کی علامت
ایدھی فائونڈیشن دنیا بھر میں خدمت کے حوالے سے کسی تعارف کی محتاج نہیں ہے۔ اس کے سربراہ عبدالستار ایدھی سادگی، محبت، خلوص اور وفا کا جیتا جاگتا پیکر ہیں۔ انکی خصوصی ہدایات پر ایدھی فائونڈیشن کا ہر ملازم سادگی اور انسانیت سے فطری محبت کا آئینہ دار ہوتا ہے۔ امسال رمضان المبارک کیلئے ایدھی فائونڈیشن یوکے نے رمضان اپیل کا آغاز کردیا ہے جس کے تحت امت مسلمہ اپنی زکواہ، صدقہ، فطرانہ اور فدیہ کیلئے ہاٹ لائین کے علاوہ آن لائن بھی ادائیگی کر سکتے ہیں۔ اس موقع پر ہم ایدھی کی جانب سے سن 2013 میں کئے جانے والے بھلائی کے کاموں پر ایک طائرانہ نظر ڈالنا ضروری سمجھتے ہیں تاکہ قارئین کشمیر لنک کو علم ہوسکے کہ اس تنظیم کے تحت خدمت انسانی کیسے ہوتی ہے۔ ٭ یکم جنوری سے 31دسمبر 2013ء تک پاکستان کے تمام ایدھی ویلفیئر سینٹروں کی جانب سے مجموعی طور پر پولیس کے ذریعے ملنے والی 6595لاوارث میتوں کو غسل اور کفن دے کر مفت تدفین کی گئی جبکہ صرف کراچی میں گزشتہ ایک سال کے دوران 1665لاوارث میتوں کی تدفین کی گئی، اوسطاً ایک لاوارث میت کو غسل کفن دے کر دفن کرنے پر 8500روپیوں کے اخراجات آئے اور ایک سال میں اس مد پر 56057500روپے (پانچ کروڑ ساٹھ لاکھ ستاون ہزار پانچ سو ) روپیوں کے اخراجات آئے ۔ ٭ گزشتہ ایک سال کے دوران پاکستان میں لڑکیوں اور عورتوں کیلئے قائم ایدھی ہومز جن میں کراچی ، ملتان ، لاہور ، اسلام آباد ، پشاور ، کوئٹہ میں گھریلو تشدد یا دیگر وجہات کی بنا پر پناہ کیلئے آنیوالی لڑکیوں ، عورتوں جنکے ساتھ بچے بھی تھے کو عارضی طور پر پناہ دی گئی ۔ جن میں کراچی میں 3220 ملتان 460لاہور 691اسلام آباد 202395پشاور 101کوئٹہ 32شامل ہیں ۔ ٭ گزشتہ سال کی بہ نسبت 2013ء میں پناہ لینے والی لڑکیوں اور عورتوں کی تعداد میں 50%فیصدی اضافہ ہوا ہے ۔ ٭ گزشتہ ایک سال کے دوران خیبر پختون خواہ ، بلوچستان کے مختلف شہروں اور کراچی ، پنجاب میں مجمعوعی طور پر 569چھوٹے بڑے بم دھماکے اور خود کش حملے ہوئے جسمیں 1649ہلاک اور 4041زخمی ہوئے ۔ کراچی میں 45بم دھماکے ہوئے جسمیں 185افراد ہلاک اور 762افراد زخمی ہوئے اور سکھر بم دھماکے میں 6 افراد ہلاک اور 42زخمی ہوئے ۔ ٭ خیبر پختونخواہ کے شہروں پشاور ، ہنگو ، کوہاٹ میں مجموعی طور پر 477بم دھماکے ہوئے جسمیں 800افراد ہلاک اور 2240 زخمی ہوئے ۔ ٭ بلوچستان میں کوئٹہ اور دیگر شہروں میں 15بمدھماکوں ، خود کش حملوں ، ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں 658افراد ہلاک اور 997افراد زخمی ہوئے ، جنوری میں ہزارہ مارکیٹ کے بم دھماکے میں 4 ایدھی رضا کار شہید ، 5 زخمی ہوئے جبکہ 5 ایدھی ایمبولینس مکمل طور پر تباہ ہو گئیں ۔ ٭ خیبر پختونخواہ میں 2012ء کی بہ نسبت 2013ء میں بم دھماکوں اور خود کش حملوں میں نمایاں کمی آئی ۔ ٭ کم جنوری تا31دسمبر 2013ء میں کراچی میں گزشتہ ایک سال کے دوران ٹارگٹ کلنگ ، گینگ وار ، پولیس مقابلوں میں 2695افراد ہلاک اور 3194افراد زخمی ہوئے جبکہ سب سے زیادہ ہلاکتیں مئی کے مہینے میں ہوئیں جسمیں 273افراد ہلاک اور 335زخمی ہوئے ۔ کراچی میں ایک سال میں چھوٹے بڑے 45 دھماکے ہوئے جس میں 185افراد ہلاک اور 678زخمی ہوئے جبکہ سب سے زیادہ ہلاکتیں اپریل میں ہوئی جسمیں 57 افراد ہلاک اور 101 زخمی ہوئے ، خود کشی کی وارداتوں میں 85افراد نے خود کشی کی ۔ کراچی میں مختلف وارداتوں جسمیں کرنٹ لگنے ، ٹرین سے کٹنے ، چھت سے گرنے ، زہریلی شراب پینے اور کھانے ، چھریوں کے وار اور خود کشی سے 396افراد ہلاک اور 591زخمی ہوئے ۔ ٭ کراچی میں چھوٹے بڑے ایکسیڈنٹوں میں گزشتہ ایک سال کے دوران 644 افراد ہلاک اور 7461زخمی ہوئے جبکہ ایکسیڈنٹ کے سب سے زیادہ واقعات اگست کے مہینے میں ہوئے جسمیں 99 افراد ہلاک اور 865افراد زخمی ہوئے ۔ ٭ گزشتہ سال کے دوران کراچی میں فٹ پاتھوں سے ملنے والے اور لوگوں کی جانب سے داخل کروائے جانے والے 842 لاوارث ، زہنی مریض مردوں اور 625ذہنی مریض عورتوں کو ایدھی ولیج اور ایدھی نارتھ کراچی سینٹر برائے ذہنی مریضوں خواتین کو ایدھی ایمبولنسوں کے ذریعے اٹھا کر داخل کیا گیا ۔ ٭ ایدھی چائلڈ ہوم کورنگی میں گمشدہ 160بچوں اور مختلف شہروں سے بھاگ کرآنیوالے 180بچوں کو داخل کیا گیا اور 255 کو ورثہ کے حوالے کیا گیا ۔ ٭ گزشتہ سال کراچی میں ایدھی ایمبولینسوں کے ذریعے 310250(تین لاکھ دس ہزار دو سو پچاس ) مریضوں اور میتوں کو گھروں سے ہسپتال یا ہسپتال سے گھروں کیلئے رعائتی بنیاد پر سروس فراہم کی گئی جبکہ اس سال مریض منتقلی سروس میں 25% فیصدی اضافہ ہوا ہے ۔ ٭ منشیات کے عادی افراد کی علاج گاہ سہراب گوٹھ کے وارڈ جہاں 200 منشیات کے عادی افراد کو رکھنے کی گنجائش ہے میں اس سال 3526منشیات کے عادی افراد کا علاج کیا گیا ۔ ٭ ایدھی فری میٹر نیٹی ہوم ، میٹھا ور اور موسیٰ لین میں گزشتہ ایک سال میں مجموعی طور پر بلا معاوضہ نارمل ڈیلیوری کے 7306کیسز کئے گئے جبکہ بلقین ایدھی میٹرنیٹی ہوم موسیٰ لین میں بلا معاوضہ آپریشن کے ذریعے ڈلیوری کے 1022کیسیس کئے گئے ، واضح رہے کہ ڈیلوری کے آپریشن میں فی کس کم از کم 15000روپیوں کے اخراجات آتے ہیں ۔ ٭ ایدھی فری اسپیشلسٹ کلینک موسیٰ لین میں ای این ٹی ، اسکین ، شوگر اور بچوں کے ماہرین ڈاکٹروں کی جانب سے 57703مریضوں کا علاج کیا گیا ۔ ٭ ایدھی فری لیبارٹری موسیٰ لین میں 3210مریضوں کے مفت اور 18500مریضوں کے رعایتی بنیاد پر ٹیسٹ کئے گئے ۔ ٭ ایدھی انیمل ہاسٹل سپر ہائی وے میں کراچی کے مختلف سے ٹیلی فون آنے پر 65 معذور کتوں ، 88 بلیوں 4 معذور اور بیمار گدھوں کو داخل کرنے کے بعد انکا علاج کیا گیا ۔ ٭ ایدھی ایمونائزیشن سینٹر مٹھا ور اور موسیٰ لین میں 4520 بچوں کو پولیو کے ڈراپس کے علاوہ مختلف بیماریوں سے بچائو کے حفاظتی ٹیکے لگائے گئے ۔ ٭ گزشتہ سال بلوچستان کے ضلع آواران میں آنیوالے شدید زلزلے میں 472 شدید زخمیوں کو ایدھی ایمبولینسوں کے ذریعے سول ، جناح اور لیاری جنرل ہسپتال لایا گیا اور علاج کے بعد بلا معاوضہ واپس پہنچایا گیا ، فیصل ایدھی کی جانب سے علاج کیلئے 20000 روپیہ فی کس مرض دیئے گئے (بارہ ہزار ) خاندانوں میں خشک راشن جسمیں آٹا ، چاول ، دال ، تیل کے ڈبے ، چینی ، خشک دودھ کے علاوہ کمبل ، 200ٹینٹ ، گرم کپڑے تقسیم کئے گئے ۔ ٭ گزشتہ سال کے دوان کراچی اور اندرون سندھ میں آگ لگنے ، بارش اور سیلاب سے متاثر ہونیوالے 3925 خاندانوں میں پکا ہوا کھانا ، خشک راشن ، کپڑے اور گھریلو استعمال کے برتن تقسیم کئے گئے ۔ ٭ یکم جنوری تک 31 دسمبر 2013ء کے دوران ایدھی بحری خدمات کی جانب سے کراچی کے ساحل کے قریب ڈوبنے والی 3 کشتیوں کے 92 مسافروں کو زندہ نکال کر محفوظ مقامات تک پہنچایا گیا اور سمندر میں ڈوبنے والی 28 لاشوں کو نکالا گیا ۔ ٭ ایدھی فری کنسلٹینٹ ڈسپنسری مٹھا ور ، ایدھی ہوم سہراب گوٹھ میں 55010 مریضوں کا مفت علاج کیا گیا ۔ ٭ ایدھی فری کینسر ہاسٹل طارق روڈ میں کیسز 918 مریضوں کا علاج کیا گیا ۔ ٭ پاکستان میں اسلام آباد ، لاہور ، فیصل آباد ، ملتان ، کراچی کے ایدھی فری کنسلٹینٹ ڈسپنسریوں میں مجموعی طور پر 281917 مریضوں کا مفت علاج کیا گیا ۔ ٭ گزشتہ ایک سال کے دوران کراچی میں مجموعی طور پر 332158 مریضوں اور میتوں کو رعایتی بنیادوں پر بیرون کراچی پاکستان کے دیگر شہروں کیلئے 31130 مریضوں اور میتوں کو ایمبولینس سروس دی گئی ۔ ٭ جبکہ گزشتہ ایک سال کے دوران 335 ایدھی ویلفیئر سینٹروں اور 1800 ایدھی ایمبولینسوں کے فلیٹ کے ذریعے 1403750 مریضوں اور میتوں کیلئے اندرون شہر اور 40163 مریضوں اور میتوں کیلئے بیرون شہر رعایتی بنیادوں پر ایمبولینس سروس فراہم کی گئی ۔ ٭ یکم جنوری تا 31 دسمبر 2013ء کے دوران کراچی ، اسلام آباد ، لاہور ، ملتان ، فیصل آباد ، کوئٹہ ، حیدر آباد کے علاوہ دیگر شہروں اور ہائی ویز پر ہونیوالے 6688 چھوٹے بڑے حادثات میں 1728ہلاک ہونیوالوں اور 16571زخمیوں کو ایدھی ایمبولینسوں کے ذریعے بلا معاوضہ قریبی ہسپتالوں تک پہنچایا گیا ۔ ٭ 2013ء میں کراچی کے ایدھی فری لنگر ، اسلام آباد، راولپنڈی ، لاہور ، فیصل آباد ، ملتان اور ٹھٹہ کے بلقیس ایدھی فری لنگر میں مجموعی طور پر 329008بھوکوں کو ایک وقت کا کھانا فراہم کیا گیا ۔ ٭ گزشتہ سال کے دوران بشمول کراچی کے پاکستان کے تمام ایدھی ویلفیئر سینٹروں کی جانب سے معمولی ڈپازٹ پر مریضوں کے استعمال کی چیزیں فراہم کی گئیں ۔ بیساکھیاں 9553 جوڑیاں ....لیٹرین چیئر 11300 ......یورین پاٹ 5910 ..... واکرز 4580..... (ایدھی انفارمیشن بیورو کی جانب سے پاکستان کے 335ایدھی ویلفیئر سینٹروں اور 17 ایدھی ہومز کی کارکردگی کی رپورٹ اخبارات میں اشاعت کیلئے جاری کی گئی)