مقبول خبریں
راچڈیل مساجد کونسل کی طرف سے مئیر کونسلر محمد زمان کی مئیر چیرٹیز کیلئے فنڈ ریزنگ ڈنر کا اہتمام
اوورسیز پاکستانیوں کے لئے خصوصی سیل بنایا جانا چاہئے: سلیم مانڈوی والا
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
وہ بے خبر تھا سمندر کی بے نیازی سے!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مسئلہ کشمیر آئین ہند کے تحت حل نہیں ہوسکتا ،میر واعظ عمر فاروق
سرینگر: مقبوضہ کشمیر میں آزادی پسند رہنمائوں نے بھارتی وزیر دفاع ارون جیٹلی کی طرف سے بھارتی آئین کے تحت مذاکرات کی پیشکش کو مستردکرتے ہوئے کہا ہے کہ آئین ہند کے تحت کوئی بھی بات چیت ناقابل قبول ہے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے کہا کہ مسئلہ کشمیر آئین ہند کے تحت حل نہیں ہوسکتا ، بھارتی وزیردفاع کے بیان کو بدقسمتی سے تعبیر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے تین فریق ہے اور تینوں فریقوں کے مابین سنجیدہ اور بامعنی مذاکرات سے ہی تنازع کشمیر کا حل ممکن ہے ۔ انہوں نے ارون جیٹلی کی طرف سے آرمڈ فورسز سپیشل پاورز ایکٹ( افسپا) کو برقرار رکھنے کے بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی حکومت کشمیری عوام پر ذہنی دبائو ڈال کر انہیں اعصابی طور پر تھکانا چاہتی ہے ۔ جموں ولبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے ارون جیٹلی کی طرف سے بیان کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کشمیری آزادی کی لڑائی لڑ رہے ہیں اور آئین ہند میں مسئلہ کشمیر کا حل ممکن نہیں ہے ، 2010کی عوامی ایجی ٹیشن کے بعد جب بھارت کاکل جماعتی پارلیمانی وفد کشمیر آیا اور انہوں نے سید علی گیلانی ،میر واعظ عمر فاروق اور مجھ سے بات کی تو اس وفد میں شامل ارون جیٹلی نے آزادی پسند جماعتوں سے ملاقات کا بائیکاٹ کیا تھاتو آج کیوں کر انہیں کسی کی یاد آئی ہے ۔ سینئر حریت رہنما شبیر احمد شاہ نے بھارتی وزیر دفاع ارون جیٹلی کی بات چیت کی پیشکش کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ آئین ہند کے دائرے میں بات چیت ممکن نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم سیاسی طور پر لڑنے کیلئے تیار ہیں جس طرح بھارت نے 100برس تک برطانیہ کے خلاف سیاسی لڑائی لڑی۔ شبیر احمد شاہ نے واضح کیا کہ کشمیری قوم تھکنے والی نہیں ہے ،مسئلہ کشمیر متنازعہ ہے اور آئین ہند کے اندر بات چیت مضحکہ خیز ہے ۔ سید علی گیلانی کی زیر قیادت فورم نے بھی بھارتی وزیر دفاع ارون جیٹلی کی طرف سے مشروط بات چیت کی پیش کش کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک بین الاقوامی سطح کا مسئلہ ہے اور اس تنازع کو حل کرنے اور بات چیت کیلئے اپنا ایک طریقہ کار ہے ۔ فورم کے ترجمان نے کہا کہ اقوام متحدہ کی نگرانی میں سہ فریقی مذاکرات سے ہی مسئلہ کشمیر حل ہوسکتا ہے ۔