مقبول خبریں
اولڈہم کے نوجوانوں کی طرف سے روح پرور محفل، پیر ابو احمد مقصود مدنی کی خصوصی شرکت
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
تحریک آزادی کشمیر میں تیزی کیلئےتحریک حق خودارادیت یورپ نے آئیندہ پروگراموں کا اعلان کردیا
بریڈفورڈ ... جموں کشمیر تحریک حق خودارادیت یورپ 17 جون کو برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیر کانفرنس جس میں برطانوی وزراء، شیڈو وزراء اور دونوں ایوانوں کے ارکان کے علاوہ کشمیری تنظیموں کے نمائندے اورممتاز صحافی شرکت کرینگے کے بعد نومنتخب یورپی پارلیمنٹ میں 8، 9 جولائی کو دوروزہ بین الاقوامی کانفرنس منعقد کرکے یورپی یونین اورمغربی ممالک میں تحریک آزادی کشمیر کیلئے مستقبل کی منصوبہ بندی کا لائحہ عمل طے کیا جائیگا جس کیلئے کنزرویٹو پارٹی کے یورپی ممبرپارلیمنٹ ٹھوقسی کرک ہوپ معاونت کرینگے جبکہ دیگر سیاسی گروپوں سے تعاون لینے کیلئے راجہ نجابت حسین، محمد اعظم اور سردار صدیق خان یورپین پارلیمنٹ کے نومنتخب ممبران کو لابی کرینگے تاکہ آنیوالے دنوں میں یورپی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر بحث کروائی جاسکے۔رمضان کے مہینے میں ہفتہ بیداری کشمیر کے ذریعے برطانیہ کے مختلف شہروں میں بھی افطارڈنر منعقد کئے جائینگے تاکہ برٹش کمیونٹی اور سیاستدانوں کو مقبوضہ کشمیر کے عوام کانکتہ نظرپہنچایا جاسکے،اسی دوران برطانوی پارلیمنٹ میں بحث، برطانوی سیاسی جماعتوں کی سالانہ کانفرنسوں کے دوران کشمیر پر اجلاس منعقد کرنے اور آزادکشمیر پاکستان میں کشمیری وپاکستانی قیادت سے رابطوں کیلئے ممبران پارلیمنٹ اور کونسلروں کے ہمراہ دورہ آزادکشمیر گلگت بلتستان کے پروگرام کو بھی آخری شکل دی جائیگی، تحریک کے شعبہ خواتین کی رہنمائوں کونسلر یاسمین ڈار، کونسلر نسرین علی، کونسلر شاہینہ ہارون، سابق لارڈ میئر کونسلر نویدہ اکرام، شبانہ عباس، نویدہ خان، صبیحہ خان، غزالہ کاظمی، کونسلر رضوانہ جمیل، شہنازصدیق، صبیحہ شہزاد، عطرت علی کونسلر حلیمہ خالد، رمنا شفیع نذیر، شمیم اختر، نادیہ چوہدری اور صائمہ یوسف نے کشمیری وپاکستانی کونسلر ہیں، ممبران پارلیمنٹ اورنومنتخب ممبران یورپی پارلیمنٹ سے اپیل کی ہے کہ وہ تحریک حق خودارادیت یورپ کی معاونت کریں اور ان کے پروگراموں کو کامیاب کرانے کیلئے اپنے اپنے ایوانوں میں مسئلہ کشمیر پر بحث کروائیں تاکہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی مسلسل خلاف ورزیاں بند کروائی جاسکیں،تحریک کی ہائی کمان کا ایک خصوصی اجلاس چیئرمین راجہ نجابت حسین کی صدارت میں ہوا جس میں مندرجہ بالا فیصلوں کی منظوری دیتے ہوئے مسئلہ کشمیر کی سفارتی سرگرمیوں کو تیز کرنے اور دیگر کشمیری گروپوں سے تعاون اوراتحاد کے حوالے سے بھی غوروخوص کیاگیا۔تحریک کے رہنمائوں نے فیصلہ کیا کہ برطانیہ اور یورپ میں کام کرنیوالی تمام کشمیری وپاکستانی تنظیموں اور جماعتوں سے مقامی حالات کے مطابق تعون کیا اور لیا بھی جائیگا مگر آزادکشمیر اور مقبوضہ کشمیر سے آنیوالے مہمان لیڈروں اور سکھ کارکنوں سے اپیل کی جائیگی کہ وہ یہاں سیاسی کارکنان کی معاونت کریں اور اپنی اپنی جماعتوں اور برادریوں کے ذریعے مسئلہ کشمیر پر رخنہ اندازی سے گریز کریں۔بیرون ملک کشمیری ریاست کے تمام اہم سیاسی رہنمائوں اورشخصیات کی عزت کرتے ہیں اور ان سے توقع کرتے ہیں کہ وہ آزادکشمیراورمقبوضہ کشمیر کے عوام کے مقامی مسائل اور حقوق کیلئے مقامی سطح پربھارت اورپاکستان کی حکموتوں سے جدوجہد کریںاور عالمی سطح پر بیرون ملک مقیم کشمیری سیاسی اور تحریکی کارکنوں کوآزادانہ کام کرنے دیں،تحریک کے عہدیداروں سردار عبدالرحمان خان، سردار ممتاز احمد چشتی،چوہدری محمداکرم،محمداعظم اورامجد حسین مغل نے بھی بیرون ملک مسئلہ کشمیرتحریک آزادی کیلئے چلائی جانیوالی مہم میں کشمیردوست ممبران پارلیمنٹ اورکونسلروںکو مبارکباد دیتے ہوئے مختلف شہروں میں میئرزاورلارڈمیئر بننے پر بھی خوشی کا اظہارکیااور اس توقع کااظہارکیاکہ وہ اپنے اپنے علاقے میں آبائی وطن کی فلاح وبہبود کیساتھ مقامی سیاستدانوں کوکشمیریوں کا ہمنوا بنائیں گے،تحریکی رہنمائوں نے مقبوضہ کشمیر کی سیاسی اورسماجی لیڈرشپ سے رابطوں کیلئے سالارممتاز احمد چشتی کی سربراہی میں ایک کمیٹی بھی قائم کردی جو ریاست کے دوتہائی حصے کی قیادت سے ملاقاتوں کا سلسلہ بھی شروع کریگی تاکہ تحریک کی سرگرمیوں کوریاست کی تمام اکائیوں تک مربوط کیا جاسکے۔