مقبول خبریں
یوم عاشور کے حوالہ سے نگینہ جامع مسجد اولڈہم میں روح پرور،ایمان افروز محفل کا اہتمام
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
میاں جی کی لڑکیاں
پکچرگیلری
Advertisement
بریڈفورڈ کے ووٹرز نے لیبر کو ضمنی انتخابات کا دکھ بھلا دیا، پندرہ سال بعد کونسل میں واضع برتری
بریڈ فورڈ ... میٹروپولیٹن ڈسٹرکٹ کونسل بریڈفورڈ کی اکتیس نشستوں پر ہونے والے انتخابات میں لیبر پارٹی نے اچھی کارکردگی دکھا کر پندرہ سال بعد کونسل میں سادہ اکثریت حاصل کرکے اقتدار کلی طور پر اپنے قبضے میں کرلیا ہے، گزشتہ ضمنی انتخابات میں جو ابال آیا تھا اس کے خدشے کے پیش نظر ان انتخابات میں لیبر نے رعونت دکھانے کی بجائے روائیتی محبت اور اپنائیت کا اظہار کیا جسکے بدلے عوام نے بھی انہیں دل و جان سے ووٹ دیئے اور وہ ریسپیکٹ پارٹی جو یہاں سے ممبر پارلیمنٹ کی سیٹ جیت گئی تھی اسکے کسی ایک کونسلر کو بھی کامیاب نہ ہونے دیا۔ ریسپکٹ پارٹی نے 30 وارڈز میں سے 9 میں اپنے امیدوار کھڑے کیے تھے لیکن کامیابی تو دور کی بات ریسپکٹ کے امیدوار کسی بھی وارڑ میں جیتنے والے امیدوار کے قریب بھی نہیں پہنچ سکے۔ لیبر پارٹی نے اندرون شہر کی تمام وارڑوں میں تمام سیاسی جماعتوں کو شکست دیتے ہوئے ٹوری اور پیس پارٹی سے ان کی نشستیں جیت لیں جب کہ لیبرل اور ریسپکٹ سمیت کسی بھی دوسری سیاسی جماعت کو ایشیائیوں کے کسی بھی علاقہ یا وارڑ میں ایک بھی سیٹ نہیں مل سکی جب کہ لیبرپاٹی کی طرف سے کھڑے تمام ایشیائی امیدوار کامیاب ہوگئے جن میں پہلی مرتبہ کامیاب ہونے والے دو پاکستانی خواتین بھی شامل ہیں۔ مقامی انتخابات میں سب سے زیادہ ووٹ لیبر پارٹی سے ڈپٹی لیڈر عمران حسین نے حاصل کئے انہوں نے ٹولروارڈ سے 4850 ووٹ حاصل کیے جب کہ ان کے قریب ترین حریف ریسپکٹ پارٹی کے امیدوار صرف620 ووٹ حاصل کرسکے۔ ر کانٹے دار مقابلہ بریڈ فورڈ مور میں ہوا جہاں لیبر امیدوار محمد شفیق نے اپنے قریب ترین امیدوار لبرل ڈیموکریٹ کے ریاض احمد کو 2615 کے مقابلہ میں 2671 ووٹ لے کر 56 ووٹوں سے شکست دی اس وارڑ سے ریسپکٹ پارٹی کے امیدوار راشد علی صرف 231 ووٹ لے سکے- سابق لارڈ میئر نویدہ اکرام نے لٹل ہارٹن وارڈ سے ریسپکٹ پارٹی کے امیدوار کے 722 ووٹوں کے مقابلہ میں 3297 ووٹوں سے شکست دی۔ بریڈ فورڈ کے پہلے ایشیائی لارڈ میئر محمد عجیب کی صاحبزادی نے باولنگ اینڈ بار کر اینڈ کارڈ میں لیبر امیدوار کی حیثیت سے اپنے قریب ترین حریف کو 1669 ووٹوں کی اکثریت سے شکست دی۔ رضوانہ جمیل نے 2532 ووٹ حاصل کیے جب کہ ان کے قریب ترین حریف لبرل ڈیموکریٹ کے امیدوار نے صرف 863 جب کہ ریسپکٹ پارٹی کے امیدوار نے 829 ووٹ حاصل کئے۔ ہیٹن وارڈ میں لیبر امیدوار نصرت محمد نے علاقہ کے کونسلر امداد حسین کے 985 ووٹوں کے مقابلہ میں 1784 ووٹ حاصل کرتے ہوئے پیس پارٹی سے یہ نشست چھین لی اس وارڑ سے ریسپکٹ کے امیدوار صرف 408 ووٹ حاصل کرسکے۔ انتخابی نتائج کے بعد لٹل پاکستان میں روائیتی جوش و جذبے سے فتح کا جشن منایا گیا اور کامیاب امیدواروں کے علاوہ انکے نمایاں سپورٹرز کو بھی ہار پہنائے گئے۔