مقبول خبریں
نائجیریا کمیونٹی ایسوسی ایشن کا میئر چیئرٹی فنڈریزنگ ڈنر کا اہتمام ،مئیر کونسلر محمد زمان کی خصوصی شرکت
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
بھارتی میڈیا کے اکسانے پرمشتعل مظاہرین کا پاکستان ہائی کمیشن نئی دلی کے دفتر پرحملہ !!
نئی دلی... بھارت کے دارالحکومت نئی دلی میں نئی دلی میں کانگریس جماعت کے کارکنوں نے پاکستان ہائی کمیشن کے دفتر پر دھاوا بول دیا، مشتعل مظاہرین نے دفتر کے اندر داخل ہونے کی کوشش بھی کی۔ اطلاعات کے مطابق 100 کے قریب افراد پاکستان ہائی کمشن کی عمارت کے باہر جمع ہوئے اور نعرہ بازی کرتے ہوئے عمارت میں داخل ہونے کی کوشش کرنے لگے۔ مظاہرین وزیراعظم من موہن سنگھ سے لائن آف کنٹرول پر جاری کشیدگی پر ایکشن لینے کا مطالبہ کر رہے تھے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق مشتعل مظاہرین نے عمارت کے اندر داخل ہونے کی کوشش کی جسے پولیس نے ناکام بنا دیا۔ بھارت نے پاکستان پر اپنے 5 فوجیوں کی ہلاکت کا الزام عائد کیا ہے۔ بھارتی وزیر خارجہ نے واقعے پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کنٹرول لائن پر ہونے والے واقعے پر پاکستان سے وضاحت مانگی ہے جس کے جواب میں سلمان خورشید نے کہا کہ پاک بھارت مسائل ایک دن میں ختم نہیں ہوسکتے۔ کنٹرول لائن پر کشیدگی کے واقعات امن کے عمل میں رکاوٹ پیدا کرتے ہیں۔ بھارتی میڈیا نے پروپگنڈے کی بنیاد پر عوام کو تشدد پر مایل کیا جس کے بعد یہ صورتحال پیدا ہوئی ...واشنگٹن میں امریکی حکام نے بھی پاکستان اور بھارت کے درمیان کنٹرول لائن کشیدگی پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ امریکا کا کہنا ہے کہ کنٹرول لائن پر کسی بھی قسم کے واقعے پر تشویش ہے۔ امریکی محکمہ خارجہ کی ترجمان جین ساکی نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت پر امریکی پوزیشن میں کوئی تبدیلی نہیں آئی، مسئلہ کشمیر پر دونوں ممالک کو مذاکرات کرنے چاہئیں۔