مقبول خبریں
مکس مارشل آرٹ کونسل اور چیریٹی آرگنائزیشن کے زیر اہتمام تقریب کا انعقاد
بریگزیٹ بحران :کنزرویٹو پارٹی کی تین خواتین ممبر کی آزاد گروپ میں شمولیت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
میئرآف لوٹن (برطانیہ) نے شاہد حسین سید کو کمیونٹی سروسز پر شیلڈ پیش کی
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
راجہ نجا بت حسین کی صدر آزاد کشمیر سردار مسعود اور وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر سے ملاقات
میں روشنی سے اندھیرے میں بات کرتا ہوں!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
برمنگھم میں میڈیا اینڈ آرٹس کی تعلیم دینے والا سنٹر جلادیا گیا، متعدد پروجیکٹس تباہ انتظامیہ سراپا احتجاج
برمنگھم ... ایک سکھ سربراہ کی زیر نگرانی چلنے والے آرٹ اینڈ کرافٹ سنٹر کو جلا دیا گیا ہے جس پر وہاں کام کرنے والے تمام کمیونیٹیز کے مرد خواتین سراپا احتجاج ہیں۔ تفصیلات کے مطابق ہائی گیٹ میں واقع الفا سنٹر آف میڈیا اینڈ آرٹس کو نامعلوم شرپسندوں نے آگ لگا کر ناصرف سازوسامان راکھ کر دیا بلکہ بہت سے لڑکوں اور لڑکیوں کو انکے تیار شدہ پروجیکٹس سے محروم کردیا جس میں سے کئی ایک پر وہ سالوں سے کام کر رہے تھے۔ الفا سنٹر میں اسلامی فنون و لطیفہ اور اسلامی تہذیب و ثقافت پر مبنی پروگرام اور کورس کرائے جاتے تھے سنٹر کو اس سے پہلے میل اور ویڈیو پیغام کے ذریعے بھی دھمکیاں مل چکی ہیں۔ 2 ماہ پہلے اسی طرح کی ایک سی ڈی بھی سنٹر کو پہنچا کر دھمکی دی گئی تھی۔ بتایا جاتا ہے یہاں مسلمان خواتین نغمے اور عارفانہ کلام سیکھتی تھیں اس لحاظ سے یہ مڈلینڈ زمیں واحد سنٹر تھا جو مسلمان خواتین سنگرز کیلئے کام کر رہا تھا۔ اس کمیونٹی سنٹر میں گانے بجانے کیساتھ اسلامی فنون و لطیفہ بھی سکھایا جاتا تھا۔ سنٹر کو الفا آرٹس و میڈیا گروپ نامی مسلمان خواتین کی تنظیم چلا رہی تھی۔ جبکہ اس کے چیف ایگزیکٹو آفیسر پرشانت سنگھ ہیں جو حملے کے وقت وہاں موجود نہ تھے۔سنٹر کو طویل عرصہ سے اسلام مخالف گروپوں کی جانب سے دھمکیوں کا سامنا کرنا پڑ رہاتھا۔ حملے سے سنٹر کا لگ بھگ 60% حصہ جل کر خاک ہو گیا ہے۔ پولیس مختلف پہلوؤں سے مصروف تفتیش ہے۔ برمنگھم میل کے مطابق حملہ اسلام مخالف انتہا پسند گروپ نے کیا ہے جبکہ الفا کی ڈائریکٹر نار کوثر اور ترجمان سارہ جاوید کا کہنا ہے کہ یہ حملے سراسر نسل پرستی کا شاخسانہ ہے جسکی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ بی بی سی کے مطابق آتش زنی کا نشانہ بننے والے ایک کمیونٹی آرٹس گروپ نے کہا ہے کہ اسے یقین ہے کہ نسل پرست اس واقعے کے ذمہ دار ہیں۔