مقبول خبریں
پاکستان کا دورہ انتہائی کامیاب رہا ،ممبر برطانوی پارلیمنٹ ٹونی لائیڈ و دیگر کی پریس کانفرنس
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
کنزرویٹو پارٹی نے مسلمانوں کی مؤثر نمائندگی کو بڑھانے کے لئے ٹھوس اقدامات کئے ہیں: سجاد کریم
بری ... یورپی پارلیمنٹ کی سٹینڈرڈ اینڈ ایتھکس کمیٹی کے چئیرمین ڈاکٹر سجاد حیدر کریم نے دعویٰ کیا ہے کہ پاکستان کے جی ایس پی پلس معاہدے کے بعد یکم جنوری سے لے کر پہلی سہ ماہی میں یورپی یونین کے لئے پاکستان کی برآمدات میں 13 فیصد اضافہ ہوا ہے اور دوسری سہ ماہی میں یہ اضافہ کئی گنا زیادہ ہو گا۔ گذشتہ رات وہ گریٹر مانچسٹر کے علاقہ بری میں خواتین کے ایک اجتماع سے خطاب کررہے تھے جس کا اہتمام طاہرہ شفیع سالیسٹر نے کیا تھا اور اس میں کثیر تعداد میں مقامی ایشیائی و غیر ایشیائی خواتین نے شرکت کی ۔ انہوں نے کہا کہ اگر پاکستان کے کاروباری ادارے اور تاجر جی ایس پی پلس کا صحیح استعمال کریں گے تو کوئی وجہ نہیں کہ آئندہ سال پاکستان کی ترقی اور خوشحالی میں ہوشربا اضافہ نہ ہو ۔ ہم پاکستان کے وسیع تر کاروباری مفاد کے ساتھ ساتھ برطانیہ کے مفاد کو بھی پیش نظر رکھتے ہیں اور ہماری کوشش یہ ہونی چاہئیے کہ ہر دو اقوام کی معاشی مشکلات کو دور کیا جائے ۔ انہوں نے خواتین سے کہا کہ وہ اپنی تقریر کرنے کی بجائے حاضرین کی تجاویز او ر سوالوں کے جواب دینا زیادہ بہتر سمجھتے ہیں جس پر وہاں موجودخواتین نے مختلف سوالات کئے جن کے جواب میں ڈاکٹر سجاد حیدر کریم نے کہا کہ جب ہم مسلمان کمیونٹی کی بات کرتے ہیں تو ہم ایک بات کو مکمل طور پر بھول جاتے ہیں کہ برطانیہ میں بسنے والے مسلمانوں کا تعلق مختلف خطوں سے ہے جن کے اپنے اپنے رسوم و رواج اور اپنی اپنی روایات ہیں ۔ بھارت ، پاکستان اور بنگلہ دیش سے آنے والے مسلمانوں کا مزاج جمہوری ہے کیونکہ ان ممالک میں جمہوریت ہے ۔ دوسری طرف عرب ممالک سے آنے والے لوگوں میں جمہوری روایات بہت کم ہیں کیونکہ ان ممالک میں زیادہ تر بادشاہتیں ہیں ۔ تاہم انہوں نے زور دیا کہ ہم برطانیہ میں ایک برٹش مسلمان کمیونٹی کو فروغ دے سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ میں مسلمان ہوں ، برٹش ہوں ، یورپی ہوں ، انگلش ہوں ، پاکستانی ہوں اور ایشیائی ہوں ۔ اسی طرح ہر مسلمان کی کئی شناختیں ہیں اس لئے ہمیں اس معاملے میں کافی غور کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہاکہ کنزرویٹو پارٹی مساوی حقوق کی علمبردار ہے جس میں ہر کمیونٹی کے لوگوں کو مؤثر نمائندگی دی جاتی ہے ۔ آئندہ انتخابات میں مسلمانوں کی نمائندگی بڑھے گی کیونکہ یہ وقت کی اہم ضرورت ہے اور کنزرویٹو پارٹی نے مسلمانوں کی مؤثر نمائندگی کو بڑھانے کے لئے ٹھوس اقدامات کئے ہیں۔ انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ مقامی کونسلر ز کو اپنے حلقے کے عوام کے لئے ہر وقت رابطے میں رہنا چاہیے اور ان کے مسائل میں ان کی مدد کرنی چاہئیے ۔ انہوں نے تقریب میں موجود ایک خاتون نے کہا کہ ان کے والد کو پاکستان میں چار سال قبل اس وقت قتل کر دیا گیا جب وہ برطانیہ سے پاکستان گئے ہوئے تھے لیکن آج تک تمام تر کوشش کے باوجود ملزمان کو گرفتار نہیں کیا گیا جس کے جواب میں سجاد کریم نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے چار سال بعد مجھے یہ بات بتائی ہے ۔ آپ ابھی مجھے اس کیس کی تفصیلات بتائیں تاکہ میں پاکستان میں متعلقہ حکام سے اس بارے میں بات چیت کروں اور ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچاؤں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں چند جرائم پیشہ لوگ برطانیہ سے جانے والے شہریوں کو ’’ایزی ٹارگٹ‘‘ سمجھ کر ان کے ساتھ زیادتیاں کرتے ہیں جس کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔ پاکستان کو بیرون ملک مقیم اپنے شہریوں کے تحفظ کے لئے آئین میں ریفارم کرنے کی ضرورت ہے اور اس معاملے میں ہم پاکستان کی حکومت سے بات چیت کریں گے کیونکہ جی ایس پی پلس معاہدے کی کچھ شرائط بھی ہیں جن پر مکمل طور عمل کرنا حکومت پاکستان پر لازم ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر آئندہ ستمبر میں سکاٹ لینڈ کے مستقبل کے حوالے سے ہونے والے ریفرنڈم میں سکاٹ لینڈ کی علیحدگی کا فیصلہ ہوتا ہے تواس سے برطانیہ کا دنیا میں کلیدی کردار ختم ہو جائے گا۔ ایسا ہونے سے جہاں برطانیہ یو این او میں اپنی مستقل نشست کھو دے گا وہیں روس او رچین کی معیشت برطانیہ کی معیشت کو کہیں بھی سانس لینے کے قابل نہیں چھوڑے گی ۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے طاہرہ شفیع سالیسٹر نے کہا کہ مسلمان خواتین سجاد کریم کو تیسری دفعہ یورپی پارلیمنٹ کارکن منتخب کروانے کے لئے میدان عمل میں آئی ہیں اور انشاء اللہ ہم پہلے سے بھی زیادہ اکثریت سے سجاد کریم کو یورپی پارلیمنٹ کارکن منتخب کروا کر ہی دم لیں گی کیونکہ سجاد کریم نے ایم ای پی کی حیثیت سے خواتین کو درپیش مسائل کے حل کے لئے بھی ریکارڈ کوششیں کی ہیں ۔ دوسری طرف پاکستانیوں ، ایشیائیوں یا مسلمانوں کے معاملے میں لیبر پارٹی نے ہمیشہ ٹال مٹول اور زبانی جمع خرچ سے ہی کام چلایا ہے لیکن آج وہ وقت آ گیا ہے جب مسلمان کمیونٹی اور کنزرویٹو پارٹی کے درمیان حائل خلیج ختم ہو گئی ہے ۔ ہم وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون کے اقدامات کی مکمل حمائت کرتی ہیں ۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مانچسٹر کونسل میں کنزرویٹو پارٹی کے سابق لیڈر اور سابق کونسلر فرازبھٹی نے کہا کہ سجاد کریم نے یورپی پارلیمنٹ میں جاکر ٹھوس فوائد حاصل کئے ہیں ۔ فرینڈز آف پاکستان گروپ کے ساتھ ساتھ فرینڈز آف انڈیا گروپ اور فرینڈز آف بنگلہ دیش گروپ قائم کئے ہیں جن سے ان ممالک کو یورپی یونین کے قریب ہونے کا موقع ملا ہے ۔ اب نارتھ ویسٹ سے لیبر کی قلعی کھل گئی ہے کیونکہ اب کنزرویٹو پارٹی نارتھ ویسٹ میں ایک بڑی قوت کے طور پر سامنے آئی ہے ۔