مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
اسلامک ریلیف کی مدد سے دنیا بھرمیں ان گنت خاندان زندگی سے لطف اندوز ہورہے ہیں: جسٹین گریننگ
برمنگھم ... تین دہائیوں سے زائد عرصے سے خدمت انسانی میں مصروف عمل چیریٹی اسلامک ریلیف نے دنیا بھر میں ریلیف کے کام کر کے اپنی ساکھ بنائی ہے، اسے بلاشبہ برطانیہ میں مسلم کمیونٹی کی ایک ماڈل چیریٹی کے طور پر جانا جا سکتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار بین الاقوامی ترقی کی برطانوی وزیر جسٹین گریننگ نے برمنگھم میں واقع اسلامک ریلیف کے بین الاقوامی دفتر کے دورے کے موقع پر کیا۔ اسلامک ریلیف یوکے کےچیف ایگزیکٹو آفیسر ڈاکٹر محمد آشماوی اور ڈائریکٹرجہانگیر ملک نے دیگر سٹاف کے ہمراہ مہمان وزیر کا پرتپاک استقبال کیا۔ برطانوی وزیر برائے ڈیفڈ جسٹین گریننگ نے اس موقع پر مزید کہا کہ اسلامک ریلیف کی مسلسل محنت اور انتھک کاوشوں کی بدولت آج دنیا بھر کے ان گنت خاندان آج تعلیم اور صحت سمیت دنیا کی تمام بنیادی سہولتوں سے لطف اندوز ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلامک ریلیف کے رضاکاروں نے جس طرح اپنے آپ کو مشکل میں ڈال کر دنیا کے کونے کونے میں بے گھر لوگوں کو کھانا، شیلٹر کے علاوہ بنیادی ضروریات، صحت، پھر کیمپوں کے اندر تعلیم جیسی سہولت سے آراستہ کرنے کی کوششیں کیں اس پر وہ خراج تحسین کے بجا مستحق ہیں۔ اس سے قبل جہانگیر ملک نے مہمان وزیر کو چیریٹی کی طرف سے خوش آمدید کہا اور افغانستان و شام سمیت دنیا بھر میں جاری ریلیف ورک کا مختصر احاطہ کیا۔ انہوں نے کہا اسلامک ریلیف نے گزشتہ تیس سال سے زائد عرصے میں دنیا بھر میں مستحق افراد، قدرتی آفات میں متاثرین اور جنگوں کے دوران بے گھرخاندانوں کی مدد کی۔ اس موقع پر سی ای او اسلامک ریلیف ڈاکٹر محمد آشماوی نے کہا کہ1984 میں ایک نو سالہ سکول کے بچے کی 20 پنس ڈونیشن سے شروع ہونے والی اس چیرٹی کی سالانہ آمدنی 100 ملین پونڈ تک پہنچ گئی ہے۔ ہم اپنے رضاکاروں، ڈونرز کو بھی خراج تحسین پیش کرتے ہیں جن کی وجہ سے ہم اس قابل ہوئے کہ دنیا میں غربت کی لیکر سے نیچے زندگی گزارنے والے لاکھوں افراد تک بنیادی سہولتیں پہنچائی ہیں۔ آج خدمت کے تیس سال مکمل ہونے پر کامیابی کا ایک اور سنگ میل عبور ہوگیا ہے۔