مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
مقبوضہ کشمیر،حریت رہنمائوں کیخلاف کریک ڈائون میں تیزی،متعدد گرفتار
سرینگر ... مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پولیس نے نام نہاد انتخابات مخالف مہم کو روکنے کیلئے حریت رہنماؤں اور کارکنوں کے خلاف کریک ڈائون کی کارروائی تیز کر دی ہے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی ، شبیر احمد شاہ اور نعیم احمد خان مسلسل گھروں میں نظربند ہیں جبکہ لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک کوٹھی باغ پولیس سٹیشن پرکئی دنوں سے نظربند ہیں ۔ پولیس نے کئی مقامات پر چھاپے مارے اور وسطی اور شمالی کشمیر میں بہت سےلبریشن فرنٹ کے رہنماؤں ، کارکنوں اور ان کے اہلخانہ کو گرفتار کیا ۔پولیس نے لبریشن فرنٹ کے قائد محمد اشرف بن سلام کے گھر پر چھاپہ مار انکے برادر محمد الطاف ڈار اورزونل نائب آرگنائزر کے دو بیٹوں کو گرفتار کیا۔ بھارتی پولیس نے مائسمہ سے عادل احمد بٹ، اشفاق حسین اور محمد حنیف ڈار،کوکر بازار سے محمد احسان ،تولہ مولہ سے منصور احمد بٹ کو بھی گرفتار کرکے نظر بند کردیا ہے ۔ ڈیموکریٹک فریڈم پارٹی کے ترجمان کے مطابق پولیس نے کئی سرگرم کارکنوں توصیف احمد ،شاہ جہان احمد ، وحید احمد ، شیراز احمد، ثابت احمد ، محمد ابراہیم اور بلال احمد شاہ کو گرفتار کر لیا ہے۔ نام نہادپارلیمانی انتخابات کے حلقے سرینگر بڈگام میں جہاں بدھ کو پولنگ ہوئی ہے ،کم از کم 150 نوجوانوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے ۔ اطلاعات کے مطابق سرینگر اوربڈگام میں گزشتہ دو روز میں رات کے وقت چھاپوں کے دوران سب سے زیادہ نوجوانوں کوگرفتار کیا گیا ہے۔بھارتی پولیس نے حریت رہنمائوں ظفر اکبر بٹ اور مختار وازہ کو نظربند کر دیا،بھارتی پولیس نے حریت رہنمائوں ظفر اکبر بٹ اور مختار احمد وازہ کو گرفتار کر کے پولیس اسٹیشنوں میں نظربند کر دیا ہے جبکہ مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی پولیس نے غیر قانونی طورپر نظربند حریت رہنماء مشتاق الاسلام کو رہائی کے فوراًبعد دوبارہ گرفتارکرلیاگیا ہے۔ادھر ضلع بارہمولہ کے قصبے کنزر میںپولیس کی طرف سے جھوٹے الزامات کے تحت ایک امام مسجد کی گرفتاری کے خلاف احتجاجی مظاہرے کئے گئے ۔ بزرگ حریت رہنماء سید علی گیلانی نےبدھ کومکمل ہڑتال کی کال دی ہے ۔ انہوں نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ 30اپریل اور7مئی کے بھارت کے نام نہاد انتخابی ڈھونگ کا مکمل بائیکاٹ کرکے بھارت اور اس کے حامی سیاست دانوں کو یہ پیغام دیں کہ کشمیری قوم بھارت کے غیر قانونی تسلط کے خلاف سراپا احتجاج ہے۔