مقبول خبریں
اولڈہم ٹاؤن میں پہلی جنگ عظیم کی صد سالہ تقریب،جم میکمان،مئیر کونسلر جاوید اقبال و دیگر کی شرکت
مشتاق لاشاری سی بی ای کا پورٹریٹ کونسل ہال میں لگا نے کی تقریب، بیگم صنم بھٹو نے نقاب کشائی کی
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نام نہاد انتخابات میں آمرانہ ہتھکنڈوں سے بھارتی جمہوریت کا چہرہ بے نقاب ہورہا ہے،میر واعظ
سرینگر...کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کہا ہے کہ بھارت نے نام نہاد انتخابات کے انعقاد کے لئے مقبوضہ علاقے کو پولیس سٹیٹ میں تبدیل کر دیاہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک پریس کانفرنس میں کیا جس میں آل پارٹی حریت کانفرنس کے عندالغنی بھٹ، مولانا عباس و دیگر رہنما بھی موجود تھے۔ دریں اثنا انہوں نے مختلف اجتماعات سے بھی خطاب کیا اور اس امر پر زور دیا کہ کشمیری ایسے انتخابات کو نہیں مانتے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی پولیس نے حریت رہنماؤں اور کارکنوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کر رکھا ہے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ نام نہاد انتخابات ایک فوجی آپریشن سے زیادہ کچھ نہیں۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق میر واعظ عمر فاروق نے سرینگر میں ایک عوامی اجتماع سے خطا ب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر میں نام نہاد انتخابی عمل رچانے کے لئے جس آمریت کا مظاہرہ کیا جارہا ہے اس سے بھارتی جمہوریت کا چہرہ بے نقاب ہو گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے ہر علاقے میں فوج اور پولیس کا گشت بڑھا دیا گیا ہے اور بڑے پیمانے پر گرفتاریوں کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے ۔ حریت چیئرمین نے کہا کہ کشمیری جد وجہد آزادی اور شہدا ء کی قربانیوں کے ساتھ اپنی گہری وابستگی عملی طور پر ثابت کر رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ لوگ بھارت نواز رہنماؤں کے دوروں کے دوران انکے خلاف احتجاج اور آزادی کے حق میں نعرے بلندکرتے ہیں۔ میر واعظ نے کہا کہ کشمیریوں کا یہ رد عمل بھارت نواز جماعتوں کے لئے چشم کشا ہے۔میر واعظ نے کہا کہ قابض انتظامیہ نے اگرچہ توسہ میدان کی لیز میں توسیع نہ کرنے کا اعلان کیا ہے تاہم اسکی بات پر اعتبار نہیں کیا جاسکتا کیوں کہ کشمیریوں کے بھارت اور قابض انتظامیہ کے وعدوں کے حوالے سے تلخ تجربات ہیں۔ انہوں نے کہاکہ بھارتی فوج کولیز کی معیاد ختم ہونے کے بعد خود توسہ میدان خالی کرنا چاہئے۔