مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
قیدیوں کیلئے ڈاکٹر طاہر القادری کی علمی تحقیق پر مبنی لٹریچرکی فراہمی پر جیل حکام کا اظہار تشکر
برمنگھم ... منہاج القرآن کے زیر انتظام منہاج دعوہ پروجیکٹ کو ایچ ایم جیل برمنگھم کی انتظامیہ کی جانب سے قیدیوں کی دینی علمی ضروریات کی فراہمی کے لیے تعریفی سرٹیفیکیٹ دیا گیا ہے منہاج القرآن دعوہ پروجیکٹ کی ٹیم کچھ عرصہ سے برمنگھم کی جیل میں سزا یافتہ قیدیوں کی اخلاقی و دینی تعلیم و تربیت کے لیے شیخ الاسلام ڈاکٹر محمد طاہر القادری کی اردو و انگلش کتب اور خطابات کی آڈیو اور وڈیوزبڑی تعداد میں فراہم کر رہی ہے جس سے قیدیوں کی قابل ذکر تعداد فوائد حاصل کر رہی ہے جیل انتظامیہ نے قیدیوں میں کتابوں کے مطالعہ کے بعد آنے والی تبدیلیوں پر منہاج القرآن دعوی پروجیکٹ کے رضا کاروں کی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے انھیں تعریفی سرٹیفیکیٹ دیا ہے اور اس امید کا اظہار کیا ہے کہ اس اقدام کو دیگر جیلوں تک بھی پھیلایا جائے گا برمنگھم جیل کے امام اعجاز احمد شامی نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈاکٹر محمد طاہر القادری کی تحریریں اسلام کے محبت بھرے اور برداشت و رواداری سے بھر پور ہیں جو پڑنے والے کے دل و دماغ کو روشن و منور کرتی جاتیں ہیں جیل میں قید و بندلوگوں کی زندگیوں میں منہاج دعوہ پروجیکٹ کی انوکھی سرگرمیوں سے اخلاقی و روحانی تبدیلیاں رونما ہو رہی ہیں منہاج دعوہ پروجیکٹ کے ارشد عزیز نے کہاہے کہ ان کی کوششیں محض اللہ تعالی کی رضا کے لیے ہیں اور وہ اپنے قائد ڈاکٹر طاہر القادری کی دی ہوئی تربیت کے مطابق معاشرے کے بد قسمت افراد کو واپس مثبت زندگی گذارنے کی جانب راغب کرنے کی جدوجہد کر رہے ہیں۔