مقبول خبریں
راچڈیل کیسلمئیرسنٹر میں کمیونٹی کو صحت مند رہنے،حفاظتی تدابیر بارے آگاہی ورکشاپ کا انعقاد
یورپی پارلیمنٹ میں قائم ’’فرینڈز آف کشمیر گروپ‘‘ کی تنظیم سازی کردی گئی
جموں کشمیر تحریک حق خود ارادیت جولائی میں برطانیہ و یورپ میں کانفرنسز،سیمینارز منعقد کریگی
قومی متروکہ وقف املاک بورڈ کا سربراہ پاکستانی ہندو شہری کو لگایا جائے:پاکستان ہندوکونسل کا مطالبہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
مظلوم کشمیری بھائیوں کیلئے پہلے کی طرح آواز بلند کرتے رہیں گے:مئیر کونسلر طاہر محمود ملک
اوورسیز پاکستانیز ویلفیئر کونسل کا وسیم اختر چوہدری اور ملک ندیم عباس کے اعزاز میں استقبالیہ
مسئلہ کشمیر کو برطانیہ و یورپ میں اجاگر کرنے پر تحریکی عہدیداروں کا اہم کردار ہے: امجد بشیر
ہم نے سچ کو دیکھا ہے جھوٹ کے جھروکوں سے!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
طلبہ کو وہ معیار دیں کہ انہیں بیرون ممالک اعلی تعلیم کے حصول میں کوئی رکاوٹ نہ ہو:مطلوب انقلابی
میرپور ... آزاد جموں وکشمیر کے وزیرہائیرایجوکیشن محمد مطلوب انقلابی نے کہا ہے کہ حکومت آزاد کشمیر میرپور یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (مسٹ) کو دور جدید کے تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کے لئے ہرممکن اقدامات اٹھارہی ہے ۔یونیورسٹی کے شعبہ سول ،مکینیکل ،الیکٹرلیکل انجینئرنگ اور یگر شعبہ جات میں جدید تعلیم وتحقیق کو یقینی بنایا جائے اور ایجوکیشن کو بین الاقوامی معیار کے مطابق بنایا جائے تاکہ یہاں کے فارغ التحصیل طلباء وطالبات کو بیرون ممالک اعلی تعلیم کے حصول کی راہ میں کوئی رکاوٹ پیدا نہ ہو نہ ہی اندرون ملک اپنے شعبہ جات میں اپنی خدمات سرانجام دینے میں کوئی دقت ہو اس سلسلہ میں وائس چانسلر اوریونیورسٹی فیکلٹی کا بڑا اہم اور کلیدی رول ہے ۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (مسٹ) میرپور کے دورہ کے دوران یونیورسٹی کی بریفنگ کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا ۔وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر حبیب الرحمن نے یونیورسٹی کے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ یونیورسٹی میں 22تدریسی شعبہ جات،56ڈگری پروگرامزجاری ہیں ۔یونیورسٹی میں تقریباً2کروڑ روپے کی لاگت سے میٹریل ٹیسٹنگ مشین لائی گئی ہے جو شعبہ سول انجینئرنگ کو فراہم کی گئی ہے جس میں آزاد کشمیر بھر میں کنسٹرکشن کا کام کرنے والی فرموں کو میٹریل ٹیسٹنگ کی سہولت میسر آئے گی جبکہ اس سے پہلے میٹریل ٹیسٹنگ کے لئے لاہور اور ٹیکسلا جاناپڑتا تھا۔اس سے یونیورسٹی کی انکم میں بھی اضافہ ہو گا۔اس کے علاوہ یونیورسٹی میں 92سٹوڈنٹس کو need base scholarshipsاور مختلف ممالک میں کثیر تعداد میں HRD Programکے تحت سکالرز بھیجے جار ہے ہیں جس سے یونیورسٹی فیکلٹی مضبوط ہو گی۔یونیورسٹی کی طرف سے تخلیقی سرگرمیوں میں اضافہ کیا جارہا ہے جس سے یونیورسٹی رینکنگ میں اضافہ ہو گا۔یونیورسٹی میں زیر تعلیم طلبا ء کی تعداد کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔وائس چانسلر نے Quality Enhancement Cell اور ORIC کے متعلق بھی تفصیلی بریفنگ دی ۔انہوں نے بتایا کہ مقبوضہ کشمیر سمیت بین الاقوامی یونیورسٹیوں کے ساتھ ویڈیو لنک کے ذریعے پروفیسر صاحبان اور طلباء و طالبات کو لیکچر دئیے جاتے ہیں۔