مقبول خبریں
پاکستان میں صاف پانی کی سہولت کو ممکن بنانے کیلئے مختلف منصوبوں پر کام کرونگی:زارہ دین
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
نیٹو سپلائی بحال کر دی ،انخلاء میں تعاون کرینگے،نواز شریف کی انجیلا مرکل سے گفتگو
ہیگ...وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ عالمی برادری پر امن جوہری پروگرام کے معاملے پر پاکستان سے بھرپور تعاون کرے،امتیازی سلوک کی پالیسی اب ختم کی جانی چاہیے،طور خم پر نیٹو سپلائی بحال کر دی گئی ہے، افغانستان سے نیٹو فورسز کے انخلاء میں بھرپور تعاون کریں گے۔وہ منگل کو جرمن چانسلر انجیلا میرکل سے ملاقات میں گفتگو کررہے تھے۔ ملاقات میں دونوں رہنمائوں نے توانائی ، تجارتی، اقتصادی، دہشت گردی کے خلاف جنگ پاکستان کی امن مذاکرات کے حوالے سے جاری کوششوں سمیت خطے کی مجموعی سلامتی کی صورتحال اور باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ اس موقع پر وزیر اعظم نے جرمن چانسلر کو حکومت کی جانب سے خطے میں کی گئی امن کوششوں سے متعلق بھی آگاہ کیا۔ ملاقات میں معاون برائے خارجہ امور طارق فاطمی، اعزاز احمد چوہدری اور معظم خان بھی شریک تھے۔ وزیر اعظم نے کہاکہ عالمی برادری پاکستان کے ساتھ پر امن جوہری پروگرام کے حوالے سے تعاون کرے۔ بعض معاملات میں عالمی سطح پر پاکستان کے ساتھ رکھا جانے والے امتیازی سلوک اب ختم کر دینا چاہیے ۔ اس موقع پر جرمن چانسلر انجیلاء مارکل نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ تجارتی، اقتصادی معاملات سمیت مختلف شعبوں میں تعاون جاری رکھیں گے۔ طالبان کے ساتھ امن مذاکرات سمیت خطے میں مفاہمتی عمل میں پاکستان کا کردار انتہائی مثبت اور اہم ہے۔ انہوں نے امن مذاکرات کے حوالے سے پاکستان کے کردار کو سراہا ۔ ا س موقع پر جرمن چانسلر نے وزیر اعظم نواز شریف کو یقین دہانی کرائی کہ جرمنی تجارتی، اقتصادی خطے میں امن کے معاملات اور سیکیورٹی کی صورتحال سمیت دیگر تمام اہم معاملات میں پاکستان کے ساتھ تعاون جاری رکھے گا۔ دریں اثناء ملاقات کے بعد میڈیا سے مختصر بات چیت میں وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ جی ایس پی پلس کا درجہ دلانے کیلئے پاکستان کی حمایت کرنے پر میں نے جرمن چانسلر کا شکریہ ادا کیا ہماری خطہ کی صورتحال اور بین الاقوامی معاملات پر تفصیلی بات چیت ہوئی اور یہ ملاقات انتہائی مفید رہی ہے اس کے نتیجہ میں دو طرفہ تعلقات کو مزید فروغ حاصل ہوگا۔