مقبول خبریں
برطانوی حکومت مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کرے:ایم پی جیوڈتھ کمنز
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
یورپی حکومتوں کی مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے مداخلت کی جدوجہد جاری رکھیں گے: ممبران پارلیمنٹ
برٹن آن ٹرینٹ...برطانوی پارلیمنٹ میں کشمیر گروپ کے چیئرمین اینڈریو گرفتھس ایم پی نے کشمیری قوم کو یقین دلایا کہ وہ اور دیگر کشمیر دوست ارکان پارلیمنٹ برطانیہ اور یورپ میں مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرانے اورکشمیریوں کےحق خود ارادیت کے حصول کیلئے جدو جہد جاری رکھیں گے،بہت جلد برطانوی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پر بحث ہو گی اور یورپی پارلیمنٹ میں بھی کشمیریوں کا نکتہ نظر اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کو بند کروانے کیلئے لابی میں معاونت کی جائے گی جبکہ کنزر ویٹو پارٹی کی ویسٹ مڈ لینڈ سے ممبر یورپی پارلیمنٹ انتھیا میکنٹائر نے کہا کہ اگر سکاٹ لینڈ میں ریفرنڈم ہو سکتا ہے تو جموں کشمیر میں رائے شماری کروانے کیلئے بھارت کوکیا پرابلم ہے،یورپی ارکان پارلیمنٹ کشمیریوں کوانصاف دلانے کیلئے ہر جگہ آواز بلند کرینگے،تحریک حق خود ارادیت یورپ کی بھرپور معاونت کی جائے گی،انہوں نے تحریک کی کشمیر پٹیشن پر دستخط کر کے برٹن میں دستخطی مہم کا بھی آغاز کیا جس کیلئے کشمیر گروپ کے چیئرمین اینڈریو گرفقس اور علاقے کے سیاسی و سماجی رہنمائوں اور علمائے کرام نے بھرپور تائید کرتے ہوئے تحریکی عہدیداروں کو بھرپور معاونت کی یقین دہانی کرائی،اس موقع پر خواتین رہنمائوں نے برٹش کشمیری خواتین کی طرف سے مسئلہ کشمیر پر چلائی جانیوالی مہم اور تحریک کی سرگرمیوں میں معاونت جاری رکھنے کے عزم کا اظہار بھی کیا۔ان خیالات کا اظہار مقررین اور حاضرین نے گزشتہ روز جموں وکشمیر تحریک حق خود ارادیت یورپ کی کشمیر پٹیشن کے سلسلے میں برٹن کے پاکستانی کمیونٹی سینٹر میں ایک خصوصی تقریب میں کیا جس کیلئے تحریکی عہدیداروں محمد جمیل اور مقامی مسجد کے علمائے کرام نے معاونت کی جبکہ دونوں ارکان پارلیمنٹ ،تحریک کے سرپرست اور وزیر اعظم آزاد کشمیر کے مشیر سردار عبدالرحمان خان،چیئرمین راجہ نجابت حسین،سنی تحریک کونسل کی چیئرپرسن رعنا شمع نذیر،برمنگھم کی سابق کونسلر اور ممتاز سماجی رہنما نجم حفیظ،محمد جمیل ،حاجی ظہیر الاسلام القادری رضا المصطفٰے چشتی نے خطاب کیا،تقریب کی صدارت ممتاز کشمیری رہنما اور سنی حریت کونسل برطانیہ کے چیئرمین حافظ فضل احمد قادری نے کی جبکہ علامہ حفیظ الرحمان غزالی،حافظ محمد رمضان،علامہ عبدالرزاق چشتی،اشرف قادری اور حاجی افتخار نے تعاون کا یقین دلایا،آل پارٹیز کشمیر گروپ کے چیئرمین اینڈریو گرفتھس ایم پی نے اپنے تفصیلی خطاب میں کہا کہ انہیں نہایت خوشی ہے کہ وہ اس شہر کے لوگوں کے نمائندے کی حیثیت سے پارلیمنٹ میں جا کر کشمیریوں کا مقدمہ لڑ رہے ہیں جو حق و انصاف پر مبنی ہے ہماری پوری ٹیم کشمیریوں کے جذبات کی ترجمانی کرتے ہوئے برطانوی حکومت،پاکستانی اور بھارتی حکام سے مسلسل رابطے میں ہیں اور عالمی برادری خصوصی طور پر امیریکی صدر بارک او بامہ اور برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ آگے آ کر مسئلہ کشمیر حل کروائیں تاکہ دنیا میں پائیدار امن کیلئے برصغیر کے اس دیرینہ مسئلہ کو حل کر کے ہم آگے بڑھ سکیں،انہوں نے کہا کہ تحریکی عہدیداروں کی ایماء پر ہم بہت جلد بیک بینچ بزنس کمیٹی کے ذریعے برطانوی پارلیمنٹ میں بحث کیلئے درخواست دیں گے مگر اس کے ساتھ ساتھ کشمیری تمام حلقوں میں ممبران پارلیمنٹ کی موجودگی میں بلا امتیاز سیاسی وابستگی کشمیر پٹیشن پر دستخطی مہم جاری رکھیں تا کہ دونوں اطراف سے سرگرمیاں جاری رہ سکیں ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام پر ہونیوالے مظالم اور اس مسئلہ کو ماضی میں نظر انداز کئے جانے سے لاکھوں کشمیریوں نے قربانیاں دیکر جس انداز میں مسئلہ کشمیر کو زندہ رکھا ہوا ہے کشمیر دوست ارلکان پارلیمنٹ انکی قربانیوں کو رائیگاں نہیں جانے دینگے اور ہم یورپی حکومتوں کو اس مسئلے کے حل کیلئے مداخلت پر آمادہ کرنے کی جدوجہد جاری رکھیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر گروپ برطانوی وزیر خارجہ اور بھارت و پاکستان کے لندن میں نمائندوں سے بھی ملے گا جبکہ ہم کوشش کرینگے کہ ریاست کے تمام علاقوں کا بھی جلد از جلد دوبارہ دورہ کیا جائے تا کہ مقبوضہ کشمیر میں ہونیوالی انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کا مشاہدہ بھی کیا جا سکے اور آزاد کشمیر و گلگت بلتستان کے عوام کے سیاسی و سماجی حقوق پر بھی حکومت پاکستان سے بات کی جا سکے ۔ یورپی پارلیمنٹ میں ویسٹ مڈ لینڈ سے کنزرویٹو پارٹی کی رکن پارلیمنٹ انتھیا میکنٹائر نے اپنے خطاب میں جہاں اپنے دورہ بھارت کے دوران مسئلہ کشمیر اجاگر کرنے کی تفصیلات سے آگاہ کیا بلکہ بھارتی حکومت کے احتجاج اور یورپی یونین میں اثر و رسوخ کے حوالے سے آگاہ کرتے ہوئے کشمیری نمائندوں پر زور دیا کہ وہ تمام یورپی ارکان پارلیمنٹ کو کشمیر کے بارے میں انفارمیشن پہنچا کر بھارتی عزائم اور مظالم کو بے نقاب کریں ۔ انہوں نے کہا کہ وہ کسی دبائو کے بغیر کشمیریوں کے حق خودارادیت کیلئے جدوجہد جاری رکھیں گی اور پارلیمنٹ ، یورپی یونین کے دیگر اداروں اور اپنی پارٹی کے اندر بھی تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین اور انکی ٹیم سے بھر پور تعاون کرینگے ۔ انتھیا میکنٹائر نے تحریک میں خواتین کی بھر پور شمولیت کو مغربی معاشرے میں تحریکی سرگرمیوں کو پھیلانے میں اچھی پیش رفت قرار دیا اور اپنی طرف سے کشمیری خواتین کو بھر پور تعاون کی یقین دہانی کرائی ، اس موقع پر اپنے استقبالیہ سے خطاب میں تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین نے کہا کہ برطانوی کشمیری ان سیاستدانوں کے شکر گزار ہیں جو ہماری جدوجہد میں بے لوث مددگار ہیں مگر مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی خواہشتات کے مطابق حل کروانے کیلئے برطانیہ اور یورپ کے ایوانوں میں ایک مفصل بحث کروا کر بھارت اور پاکستان کو مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے مجبور کریں اور کشمیریوں کو نظر انداز کیے جانے کی پالیسی ختم کروانے میں ہماری معاونت کریں حافظ فضل احمد قادری نے اپنے خطاب میں بھارتی یونیورسٹیوں سے کشمیری طلباء کے اخراج پر شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اگر برطانوی حکومت جمہوریت پسند ہے تو بھارتی حکومت کو بھی کشمیری عوام کے جمہوری حقوق کی حمایت کرنی چاہئے ۔ انہوں نے تمام کشمیریوں سے اپیل کی کہ وہ تحریک حق خودارادیت کی کشمیر پٹیشن مہم میں بھر پور معاونت کریں ۔اس موقع پر تحریک کے چیئرمین راجہ نجابت حسین اور دیگر رہنمائوں نے انتھیا میکنٹائر ایم ای پی کو کشمیر ایوارڈ کی شیلڈ بھی دی جبکہ برمنگھم کے سیاسی و سماجی رہنمائوں ملک نذیر احمد اعوان ، راجہ محمد یاسین ، برٹن سے کونسلر مقصود حسین ، بیرسٹر خادم حسین تھوتھال ، بیگم شمیم محمود ، ڈربی سے مسلم لیگ ن کے ڈاکٹر اشفاق سمیت متعدد رہنمائوں نے کشمیر پٹیشن پر دستخط مہم میں تعاون کی یقین دہانی کرائی جبکہ برمنگھم سے آئے ہوئے ایک کشمیری نے سیف الملوک پڑھ کر سنائی ۔