مقبول خبریں
دار المنور گمگول شریف سنٹر راچڈیل میں جشن عید میلاد النبیؐ کے حوالہ سےمحفل کا انعقاد
کشمیر انسانی حقوق کی پامالیوں کا گڑھ ،اقوام عالم نوٹس لے، بھارت پر دبائو بڑھائے: فاروق حیدر
بھارت اپنے توپ و تفنگ سے اب کشمیری عوام کے جذبہ حریت کو دبا نہیں سکتا:بیرسٹر سلطان
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
کشمیریوں کو حق خود ارادیت دیا جانا چاہیے تاکہ وہ اپنے مستقبل کا فیصلہ کر سکیں : مقررین
آدمی کو زندگی کا ساتھ دینا چاہیے!!!
پکچرگیلری
Advertisement
میرٹھ یونیورسٹی واپسی کی صورت میں ہندو انتہا پسند حملہ کر سکتے ہیں: کشمیری طلباء
سرینگر ... ایشیاء کپ میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کی جیت کی خوشیاں منانے پر یونیورسٹی سے نکالے گئے کشمیری طلباء نے واپس میرٹھ یونیورسٹی جانے سے انکار کرتے ہوئے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ واپسی کی صورت میں ہندو انتہا پسند حملہ کر سکتے ہیں۔ وہ اپنی زندگیاں خطرے میں نہیں ڈال سکتے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق میرٹھ یونیورسٹی سے نکالے گئے 67 طلباء کے داخلے بحال کر دیئے گئے تھے اور یونیورسٹی انتظامیہ نے اعلان کیا تھا کہ ایک اعلیٰ عہدیدار جلد طلباء کو لینے کشمیر جائیں گے تاہم طلباء نے واپس جانے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ بھارت میں نہ صرف ان کے کیرئیر کے ساتھ سیاست کی جاری ہے بلکہ ان کی زندگیاں بھی خطرہ میں ہیں۔ پاکستان اور آزاد کشمیر کی طرف سے بھرپور اخلاقی سپورٹ حاصل کرنے والےطلباء کا کہنا تھا کہ وہ انتہائی خوفزدہ ہیں چونکہ واپسی پر انتہا پسند ہندو ان پر حملے کر سکتے ہیں۔