مقبول خبریں
مئیر کونسلر جاوید اقبال نےرضاکارانہ خدمات پرتنظیم وائی فائی کو تعریفی سرٹیفکیٹ اور شیلڈ سے نوازا
پیپلزپارٹی کے رہنما ندیم اصغر کائرہ کی پریس کانفرنس ،صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیئے
واجد خان ایم ای پی کا آزاد کشمیر سے آئے حریت کانفرنس کے رہنمائوں کے اعزاز میں عشائیہ
تین طلاقوں پر سزا، اسلامی نظریاتی کونسل کا وسیع پیمانے پر مشاوت کا فیصلہ
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
سید حسین شہید سرور کا سابق پراسیکیوٹر ایڈوکیٹ جنرل ریاض نوید و دیگر کے اعزاز میں عشائیہ
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
جموں و کشمیر تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے زیر اہتمام پہلی کشمیر کلچرل نمائش کا اہتمام
دسمبر بے رحم اتنا نہیں تھا!!!!!!!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
میرٹھ یونیورسٹی واپسی کی صورت میں ہندو انتہا پسند حملہ کر سکتے ہیں: کشمیری طلباء
سرینگر ... ایشیاء کپ میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کی جیت کی خوشیاں منانے پر یونیورسٹی سے نکالے گئے کشمیری طلباء نے واپس میرٹھ یونیورسٹی جانے سے انکار کرتے ہوئے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ واپسی کی صورت میں ہندو انتہا پسند حملہ کر سکتے ہیں۔ وہ اپنی زندگیاں خطرے میں نہیں ڈال سکتے۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق میرٹھ یونیورسٹی سے نکالے گئے 67 طلباء کے داخلے بحال کر دیئے گئے تھے اور یونیورسٹی انتظامیہ نے اعلان کیا تھا کہ ایک اعلیٰ عہدیدار جلد طلباء کو لینے کشمیر جائیں گے تاہم طلباء نے واپس جانے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ بھارت میں نہ صرف ان کے کیرئیر کے ساتھ سیاست کی جاری ہے بلکہ ان کی زندگیاں بھی خطرہ میں ہیں۔ پاکستان اور آزاد کشمیر کی طرف سے بھرپور اخلاقی سپورٹ حاصل کرنے والےطلباء کا کہنا تھا کہ وہ انتہائی خوفزدہ ہیں چونکہ واپسی پر انتہا پسند ہندو ان پر حملے کر سکتے ہیں۔