مقبول خبریں
سیریا ریلیف کی چیئر پرسن ڈاکٹر شمیلہ کی طرف سے چیرٹی بر نچ کا اہتمام ، کمیونٹی خواتین کی شرکت
مسئلہ کشمیر بارےیورپی پارلیمنٹ انتخابات پر برطانیہ و یورپ میں بھرپور لابی مہم چلائینگے،راجہ نجابت
مسئلہ کشمیر کو پر امن طریقے سے حل کیا جائے: برطانوی و یورپی ارکان پارلیمنٹ کا مطالبہ
برطانیہ میں آباد تارکین وطن کی مسئلہ کشمیر پر کاوشیں قابل تحسین ہیں:چوہدری محمد سرور
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
کشمیریوں کو ان کا حق دیئے بغیر خطے میں پائیدار امن کا حصول ممکن نہیں: راجہ نجابت حسین
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
برطانیہ میں مقیم کشمیری و پاکستانی 16مارچ کو بھارت کے خلاف مظاہرہ کریں گے: راجہ نجابت حسین
سرچ آپریشن
پکچرگیلری
Advertisement
سپورٹس مین شپ کا مظاہرہ کرنا اگر غداری ہے توہم سب غدار ہیں: برنلے اینڈپینڈل فرینڈز لیگ
نیلسن ... ایشیا کرکٹ چیمپئن شپ کے بنگلہ دیش میں ہونے والے ٹورنامنٹ میں پاکستان کی ٹیم کے ہاتھوں بھارت کی شکست پر کشمیری طلباء کو پاکستان کی ٹیم کو سپورٹ کرنے کے جرم میں اور یونیورسٹی سے نکالنے پر طلباء سے اظہار یکجہتی کے لئے برنلے اینڈپینڈل فرینڈز لیگ نے ایک اجلاس کا اہتمام برائر فیلڈپیپلز سنٹرمیں کیا ۔تنظیم کے چئیر مین حاجی صغیر احمد کی صدارت میں ہونے والے اس اجلاس میں مذہبی و سیاسی احباب شریک ہوئے جن میں مدینہ مسجد نیلسن کے خطیب سید نوید شاہ، مدینہ مسجد کوہن کے خطیب قاری ارشد محمود ، سید اختر حسین شاہ اور برنلے سے حافظ محمد ارشد کے علاوہ سیاسی حلقوں سے نامزد ڈپٹی مئیر کونسلرنواز احمد کونسلر عبد العزیز ، بیرسٹر افضال انور ،مذکر علی، پیف کے سیکرٹری جنرل اسلم جاوید ، تحریک کشمیر کے نائب صدرحاجی محمد یٰسین ، منہاج القرآن کے حاجی غضنفر علی ، کشمیر ویلفئیر ایسوسی ایشن کے چوہدری محمد کلیم اور پاکستانی کرسچئین کمیونٹی کی نمائندگی ڈیوڈ ڈین نے کی۔ چئیر مین حاجی صغیر احمد نے اس اجلاس بلانے کے اغراض و مقاصد بیان کرتے ہوئے اپنی تنظیم کی طرف سے اہل کشمیر اور متاثرہ کشمیری طلباء سے اظہار یکجہتی کیامقررین نے اظہار خیال کرتے ہوئے بھارتی حکام کی جانب سے کشمیری طلبا کے ساتھ اس ناروا سلوک کی مذمت کی کہ بھارت اپنے آپ کو دنیا کی بڑی جمہوریت کہلواتا ہے لیکن اظہار رائے پر پابندی لگا کر اپنے اصل روپ میں سامنے آگیا ہے معروف کھیلوں میں عوام دنیا بھر کی مختلف ٹیموں کو سپورٹ کرتے ہیں اگر ممالک اپنے لوگوں کو دوسرے ملک کی ٹیم کو سپورٹ کرنے پر غدار قرار دینے لگے تو ہم سب غداری کے مرتکب ہوتے ہیں یہ مثال قائم کرکے بھارت نے اپنا مکروہ چہرہ دنیا کو دکھا دیا ہے۔ مقررین نے آئندہ کے لائحہ عمل کے طور چند تجاویز بھی پیش کیں جن پر عمل پیرا ہوکر جموں و کشمیر کے لوگوں سے اظہار یکجہتی کی جا سکتی ہے جن میں سب نے پینڈل میں بسنے والے لوگوں سے مطالبہ کیا ہے کہ اب ہماری آنکھیں کھل جانی چاہیئں اور ہمیں یہاں برطانیہ میں ہر قسم کی جنس اور بھارتی مصنوعات کا بائیکاٹ کرنا چاہئے۔