مقبول خبریں
ن لیگ برطانیہ و یورپ کا نواز شریف،مریم نواز اور کیپٹن صفدر کی سزائیں معطل ہونے پر اظہار تشکر
قاضی انویسٹ منٹ کی جانب سے وطن کی محبت میں ڈیم فنڈ کیلئے ایک لاکھ پائونڈ عطیہ کا اعلان
تحریک حق خود ارادیت انٹر نیشنل کے ساتھ ملکر کشمیر کانفرنس کا انعقاد کرینگے :کرس لیزلے و دیگر
ڈیم سے روکنے کی کوشش پر غداری کا مقدمہ چلے گا: چیف جسٹس پاکستان
مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی فائرنگ سے شہری شہید، حریت رہنماؤں کی شدید مذمت
لوٹن میں بھی پی ٹی آئی کی کامیابی کا جشن، ڈھول کی تھاپ پر سڑکوں پر رقص اور بھنگڑے
آکاس انٹرنیشنل کی جانب سے پیرس فرانس میں پہلے یورپین فیملی فنگشن کا انعقاد
پاکستان سے تشریف لائے ممبر پنجاب اسمبلی فیاض احمد وڑائچ کا دورہ منہاج ویلفیئر فائونڈیشن
ہم دھوپ میں بادل کی، درختوں کی طرح ہیں!!!!!!!
پکچرگیلری
Advertisement
ایم کیو ایم سے باقاعدہ اتحاد نہیں ہوا.. عمران خان شرمندگی مٹانے کیلئے بے سروپا باتیں کر رہے ہیں
لاہور...صوبائی وزیرقانون و بلدیات رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ ایم کیو ایم سے باقاعدہ اتحاد ہوا ہے اور نہ ہی ان کو وفاقی کابینہ میں شامل کیا جا رہا ہے، صرف صدارتی انتخاب کے لئے ووٹ مانگا ہے، پنجاب میں سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق بلدیاتی نظام کی منظوری اور بلدیاتی انتخابات کرائے جائیں گے، پیپلزپارٹی کو صدارتی انتخاب میں واضح شکست نظر آئی جس کے بعد بہانہ بنا کر وہ صدارتی انتخاب کا بائیکاٹ کر گئے، عمران خان اپنے سیاسی مستقبل کو مخدوش دیکھ کر منفی سیاست کررہے ہیں اور انتخابات میں شکست کے بعد اپنی شرمندگی مٹانے کیلئے ایسی بے سروپا باتیں کر رہے ہیں جن کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں- ممنون حسین کے صدر بننے سے وفاق مزید مضبوط ہوگا۔ عمران خان کو خیبرپی کے، کے انتخابی نتائج قابل قبول ہیں ‘سندھ میں بھی انہیں انتخابی نتائج کے حوالے سے کوئی بڑی شکایت نہیں۔ بلوچستان کے انتخابی نتائج کی وہ بات ہی نہیں کرتے جبکہ پنجاب میں اپنی عبرتناک شکست کو وہ دھاندلی کے شور میں چھپانا چاہتے ہیں۔ رانا ثناءاللہ نے کہا عمران خان کو اب اس بات کا خوف کھائے جا رہا ہے کہیں انکے پارٹی کارکن انہیں چھوڑ کر بھاگ نہ جائیں اسلئے یہ اپنے کارکنوں کو طفل تسلیاں دینے کیلئے ایسی باتیں کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا عمران خان الیکشن سے پہلے خوابوں کی دنیا میں رہتے تھے لیکن انتخابات کے نتائج کے بعد ان کی آنکھیں کھل گئی ہیں اور اب وہ اپنی خفت مٹانے کے لئے دھاندلی کے الزامات عائد کر رہے ہیں۔انہوں نے عمران کو مشورہ دیا انہیں اپنی جماعت کے اندر ان سوداگروں کی نشاندہی کرنی چاہیے جنہوں نے تحریک انصاف میں پارٹی ٹکٹ دینے اور تبدیل کرنے کیلئے کرپشن کا جمعہ بازار لگایا ہوا تھا۔ انہوں نے کہا عمران خان کو اس ضمن میں ثبوت حاصل کرنے میں مشکل پیش آئے تو میں یہ ثبوت فراہم کرنے کو تیار ہوں۔